پی ڈی ایم نے میثاق پاکستان کی تشکیل کےلئے5 رکنی کمیٹی تشکیل دےدی

اسلام آباد(آئی این پی)پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم )کے سربراہی اجلاس نے چارٹر آف پاکستان کی تشکیل کے لیے پانچ رکنی کمیٹی تشکیل دے دی، بارہ نکاتی روڈ میپ طے پا گیا، پی ڈی ایم کی تحریک کو تیز کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ،پی ڈی ایم نے گلگت بلتستان کے نتائج کو مسترد کردیا جبکہ پاکستان ڈیموکریٹ موومنٹ (پی ڈی ایم)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ پی ڈی ایم جلسے شیڈول کے مطابق ہوں گے،کوروناکی آڑمیں جلسوں پرپابندی کومستردکرتے ہیں،حکومت مخالف تحریک کی رفتارکوتیزکیاجائےگا،انتقامی احتساب کومستردکرتے ہیں،گلگت بلتستان الیکشن میں ریاستی مشینری کااستعمال کیاگیا،انتخابات میں دھاندلی سے پی ڈی ایم بیانیے کوتقویت ملی،اجلاس میں گلگت بلتستان انتخابات کے نتائج کومستردکیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کی سربراہی اجلاس چارٹر آف پاکستان کی تشکیل کے لئے پانچ رکنی کمیٹی تشکیل دے دی ،بارہ نکاتی روڈ میپ طے پا گیا، پی ڈی ایم کی تحریک کو تیز کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ،پی ڈی ایم نے گلگت بلتستان کے نتائج کو مسترد کردیا ۔مولانا فضل الرحمان کی سربراہی میں پی ڈی ایم کے طویل اجلاس میں بلاول بھٹو زرداری اختر مینگل ویڈیو لنک کے زریعے شریک ہوئے اجلاس میں میثاق پاکستان پر مشاورت کی گئی اجلاس کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ پی ڈی ایم کا تنظیمی ڈھانچہ مکمل کر لیا گیا ہے کرونا سے ڈرنے والے نہیں جلسے اپنے وقت پر ہو گے کرونا کی آڑ میں جلسوں پر پابندی لگائی جارہی ہے ..سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا وفاقی جمہوری پارلیمانی اور آئین کی بالادستی پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے سیاست میں خفیہ اداروں کے کردار کے خاتمے پر اتفاق ہوا ہے گلگت بلتستان انتخابات 2018 کے انتخابات کا ریپلے ہے .حکومت کے ساتھ کسی قسم کی قانون سازی کے لیے قائل نہیں یہ حکومت دھاندلی کی پیداوارہے ۔ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ حکومت کے ساتھ بات چیت کےلئے تیار نہیں، کوروناکی آڑمیں جلسوں پرپابندی کومستردکرتے ہیں ہمارے جلسے شیڈول کے مطابق ہوں گے۔پی ڈی ایم سربراہ فضل الرحمان نے کہا کہ پی ڈی ایم نے گلگت بلتستان میں الیکشن نتائج کومستردکیاہے، طے کیا سلیکٹڈ حکومت کو گھر بھجوانے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے، شوگرمافیاکو400ارب کی سہولت دی گئی، افسر نے چور پکڑا اسے نکال دیاگیا۔انہوں نے کہا کہ نیب اور دیگر ادارےسیاسی لوگوں پرجھوٹے مقدمات بنارہے ہیں یہ دھاندلی کے عادی ہیں، ارکان کو پریشرائز کرنا چاہتے ہیں،حکومت کیساتھ مذاکرات کیلئے تیار نہیں،یہ عوامی حکومت نہیں۔مولانافضل الرحمان نے کہا کہ پارلیمنٹ کی بالادستی چاہتے ہیں،تحریک کے بنیادی اصول اورمقاصدوضع کردیئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ فارن فنڈنگ کیس میں تاخیری حربے استعمال کیے جارہے ہیں، شبرزیدی کا اعتراف حکومت کے خلاف ایف آئی آر ہے، شبرزیدی نے بدعنوان لوگوں کی فہرست پیش کی تو عمران خان نے کہا چھوڑدو۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*