بلا سود قرضوں کا اجراءکرکے گریس پیریڈ کی مدت ایک سال کی جائے ‘پیففا

کراچی /سیالکوٹ( کامرس ڈیسک)پاکستان فریٹ فارورڈرز ایسوسی ایشن نے کورونا وائرس کی دوسری لہر شروع ہونے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر حکومت نے سرپرستی نہ کی تو یہ شعبہ تباہ ہو جائے گا ، حکومت ٹیکس اور روزگار مہیا کرنے والے تمام شعبوں کی کسی تفریق کے بغیر مدد کرے ، اسٹیٹ بینک نے ریلیف کے لئے اقدامات کئے ہیںلیکن ان کی مدت انتہائی کم ہے ۔ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد الیاس چودھری کی زیرصدارت ہنگامہ اجلاس ہوا جس میں عہدیداروں اور ممبران نے ویڈیو لنک کے ذریعے بھی شرکت کی۔اجلاس میں، سینئر وائس چیئرمین اسد احمد، وائس چیئرمین عاشق علی باجوہ ،سابق صدورجمیل احمد، اظہار الحق قمر ،ممبر ایگزیکٹو کمیٹی اصغر ملک ، صہیب زیدی ، علی عدنان، شکیل احمد سمیت دیگر شریک ہوئے۔ چیئرمین الیاس چوہدری نے کہا کہ فریٹ فارورڈز سالانہ6ارب روپے سے زائد کی ادائیگی کرتے ہیں لیکن جب آج ہم مشکلات کا شکار ہوئے ہیں تو کوئی پوچھنا والا نہیں ، کورونا سے فریٹ کارگو کا شعبہ سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے ، ابھی ہم پہلی لہر کی مشکلات سے مکمل سنبھل نہیں سکے اوردوسری لہر آ گئی ہے جس سے فریٹ فارورڈز میں شدید تشویش پائی جاتی ہے۔ حکومت سے مطالبہ ہے کہ ہمارے لئے بلا سود قرضوںکااجراءکیاجائے اور گریس پیریڈ کم ازکم ایک سال ہونا چاہیے ۔پاکستان فریٹ فارورڈرز ایسوسی ایشن نے کورونا وائرس کی دوسری لہر شروع ہونے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر حکومت نے سرپرستی نہ کی تو یہ شعبہ تباہ ہو جائے گا ، حکومت ٹیکس اور روزگار مہیا کرنے والے تمام شعبوں کی کسی تفریق کے بغیر مدد کرے ، اسٹیٹ بینک نے ریلیف کے لئے اقدامات کئے ہیںلیکن ان کی مدت انتہائی کم ہے ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*