ساحلی مقامات پر تاریخ ساز منصوبوں کا اجراءکیا جارہا ہے، جام کمال

Chief Minister Balochistan, Mir Jam Kamal

کوئٹہ(این این آئی) بلوچستان عوامی پارٹی کے صدر و وزیراعلی بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ اپوزیشن ترقیاتی منصوبے رکوانے کے لئے مختلف حربے استعمال کر رہی ہے، جو بلوچستان کو ترقی سے محروم رکھنے کے مترادف ہے،بلوچستان عوامی پارٹی اپنے منشور کے مطابق لسبیلہ سمیت پورے صوبے میں یکساں ں ترقیاتی کاموں پر عمل درآمد کررہی ہے اپوزیشن کو یہی ڈر ہے کہ عوام ان سے کام کے متعلق پوچھیں گے۔ یہ بات انہوں نے اتوار کو کنڈملیر میں عوامی اجتما ع سے خطاب، سڑکوں کے افتتاح اور سیاحتی مقامات کے دورے کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے ہوئے کہی۔ کنڈ ملیر پہنچنے پر سیکرٹری مواصلات و تعمیرات نورالامین مینگل، کمشنر قلات مدثر وحید ملک،ڈی آئی جی قلات جاوید عالم اوڈھو،ڈپٹی کمشنر لسبیلہ ڈاکٹر حسن وقار چیمہ، ایس ایس پی لسبیلہ پرویز عمرانی و دیگر حکام نے وزیراعلیٰ استقبال کیا اس موقع پر صوبائی وزراءمیر ضیاءلانگو میر عارف جان محمد حسنی، نور محمد ڈمڑ،پارلیمانی سیکرٹری برائے اطلاعات بشریٰ رند، حکومت بلوچستان کے ترجمان لیاقت شاہوانی سمیت دیگر اعلی حکام بھی انکے ساتھ تھے۔وزیراعلیٰ جام کمال خان نے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اپوزیشن ترقیاتی منصوبوں کو رکوانے کے لئے مختلف حربے استعمال کررہی ہے. جس کا مطلب یہی ہے کہ بلوچستان کو ترقی سے محروم رکھا جائے انہوں نے کہا کہ لسبیلہ سمیت بلوچستان کے تمام علاقوں کی ترقی ہماری ترجیحات میں شامل ہے حکومت سے صحت تعلیم اور دور دراز علاقوں میں سڑکوں کی تعمیر میں خصوصی توجہ دے رہی ہے انہوں نے کہا کہ لسبیلہ کے لوگ بردبار، امن پسند،مہمان نواز ہیں یہی ہمارے ضلع اور صوبے کی روایات اور یہاں کے لوگوں کی پہچان ہے وزیراعلی بلوچستان جام کمال خان نے کنڈ ملیر یوسی لیاری میں 42.542 ملین روپے کی لاگت سے چھ مختلف بلیک ٹاپ لنک روڈز کا افتتاح کیا جو کہ چھ کلو میٹر کے فاصلے پر ہیں ان سڑکوں کی تعمیر سے کنڈ ملیر یو سی لیاری مین کوسٹل ہائی وے سے منسلک ہوگئی ہے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت عوام کو بہترین انفراسٹرکچر کی سہولیات فراہم کرنے کے لئے کام کر رہی ہے صوبے میں جامع حکمت عملی کے تحت انفراسٹرکچر کی سہولیات فراہم کر رہے ہیں ساحلی مقامات پر تاریخ ساز منصوبوں کا اجزا کیا جارہا ہے ساحلی علاقوں میں سرمایہ کاری اور سیاحت کے فروغ کے لئے ساحلی پٹی کے تعمیر و ترقی کے لئے ایک سو پچاس ملین جبکہ صوبے کے سات سیاحتی مقامات بنانے کے لئے ایک ارب روپے مختص کی گئی ہیں ساحلی مقامات سیاحت پرکشش مقامات کاروبار کے مراکز میں تبدیل ہونگے انہوں نے کہا کہ بلوچستان سیاحت کے شعبے کو منافع بخش صنعت کے طور پر متعارف کیا جارہا ہے ماضی میں سیاحتی علاقوں پر توجہ نہیں دے دی گئی ہے یہی وجہ ہے کہ یہاں پر سیاحت کی صنعت میں ترقی نہ ہونے کے برابر ہے۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے سیاحتی مقامات کو ترقی دے کر نہ صرف عمومی ترقی کے عمل کو تیز کیا جاسکتا ہے بلکہ صوبے کی معیشت میں بہتری لانے کے ساتھ ساتھ عام آدمی اور خاص طور سے مقامی آبادی کیلئے روزگار اور آمدن کے نئے ذرائع پیدا کئے جائیں گے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*