خطے میں امن کشمیریوں کے حقوق کے بغیر ممکن نہیں ہوسکتا، شہریار آفریدی

minister of state for interior

اسلام آباد (آئی این پی)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف ورلڈ کشمیر فورم کی جانب سے اسلام آباد میں انٹرنیشنل کشمیر کنونشن منعقد کیا گیا، سیرینا ہوٹل اسلام آباد میں منعقد ہونے والی تقریب میں صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان، چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار آفریدی،چیئرمین ورلڈ کشمیر فورم حاجی محمد رفیق پردیسی، جنرل سیکریٹری انور منصور خان، وائس چیئرمین کنور محمد دلشاد، شوکت بسرا، سابق وزیردفاع لیفٹننٹ جنرل ریٹائرڈ نعیم خالد لودھی، سابق ہائی کمشنر عبدالباسط، سابق سفیر و تجزیہ کار جاوید حفیظ، چیئرپرسن جموں کشمیر سالیڈیرٹی موومنٹ و پاک کشمیر ویمن الائنس عظمی گل، وائس چیئرمین ورلڈ کشمیر فورم کنور محمد دلشاد، جوائنٹ سیکریٹری شیخ راشد عالم، سیکریٹری فنانس رفیق سلیمان، رکن گورننگ باڈی فاروق اعوان، چیئرمین امریکہ پاکستان بزنس ڈویلپمنٹ فورم و ذی انٹرنیشنل ذیشان الطاف لوہیا، چانسلر سر سید یو نیورسٹی جاوید انوار کے علاوہ ترکی، جنوبی افریقہ، فلسطین، جرمنی کے سفارتی عہدیداران نے شرکت کی۔ کنونشن کا موضوع بھارت کے زیرقبضہ کشمیر کی خودمختاری اور امن کی بحالی کو درپیش چیلنجز تھا۔ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بچوں، خواتین اور بزرگوں تک کو حقوق نہیں مل رہے، بھارت مقبوضہ کشمیر میں روزانہ انسانی حقوق کی دھجیاں بکھیر رہا ہے، بھارت کے 5 اگست کے لاک ڈاون کے بعد عالمی رائے عامہ بھارت کے مخالف ہے، سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت چین کا خوف دلا کر اسلحہ خریدتا ہے، بھارت کے سارے اسلحہ کا رخ پاکستان کی طرف ہے، بھارتی فوج کا بڑا حصہ مقبوضہ کشمیر میں لگا ہوا ہے، سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں وہ کچھ کر رہا ہے جو تاریخ انسانیت میں کبھی نہیں ہوا، بھارت بلوچستان کو پاکستان سے توڑنا چاہتا ہے، تنگ نظر اور نفرت آمیز رویے کے بھارتی ہندووں کو مقبوضہ کشمیر میں شہریت دی جارہی ہے، سردار مسعود خان نے کہا کہ دنیا بھارتی اشیا پر پابندیاں لگائے ، تمام مسلمانوں اور مسلم ممالک کو بھارتی اشیا کا بائیکاٹ کرنا چاہئے، کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار خان آفریدی نے کہا کہ عالمی دنیا کو خطے کے امن کا احساس کرنا ہوگا، خطے میں امن کشمیریوں کے حقوق کے بغیر ممکن نہیں ہوسکتا، مقبوضہ کشمیر میں بسنے والے بھی مساوی حقوق کے حق دار ہیں، کشمیر کے حوالے سے تمام پاکستانی قائد اعظم کے وژن سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے، بھارت فوج نے کشمیری بچیوں کےساتھ ریپ کیے، کشمیریوں کے بٹھائے بغیر اس مسئلے کا حل نہیں ہوگا، کشمیر کے مسئلہ پر تمام جماعتیں یکجا ہیں، کوئی بھی کشمیر پر سمجھوتے کا سوچ بھی نہیں سکتا۔ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے۔ چیئرمین ورلڈ کشمیر فورم حاجی محمد رفیق پردیسی نے کہا کہ تمام کشمیری دھڑے اب ایک ہوجائیں، ورلڈ کشمیر فورم بھارتی مظالم دنیا کو دکھاتا رہے گا، یورپ انسانی حقوق کے لیے سرگرم رہتا ہے تو بھارتی مظالم کے خلاف بھی آگے آئے، کشمیر موومنٹ کو آخری حد تک لے کر جائیں گے۔ جنرل سیکریٹری ورلڈ کشمیر فورم جسٹس ریٹائرڈ انور منصور خان نے کہا کہ اقوام متحدہ بھارتی فوج کو مقبوضہ کشمیر سے نکالنے کے لیے فوری اقدامات کرے، بھارت شملہ معاہدے پر عمل درآمد کا پابند ہے، شملہ معاہدے کے تحت بھارت مقبوضہ کشمیر میں کوئی اقدام اپنی مرضی سے نہیں کرسکتا، یہ حقیقت ہے کہ کشمیر کسی طرح بھارت کا حصہ نہیں، سابق سفارت کار عبدالباسط خان نے کہا کہ پوری دنیا کی انسانیت کے لیے مقبوضہ کشمیر کا لاک ڈاون لمحہ فکریہ ہے، بھارت پر عالمی دباو بڑھانے کے لیے کوششیں تیز کرنا ہوں گی۔ دفاعی تجزیہ کار لیفٹننٹ جنرل ریٹائرڈ نعیم خالد لودھی نے کہا کہ کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم ہر فورم پر اٹھانے کی ضرورت ہے، پاکستان نے مقبوضہ کشمیر کے عوام کا ساتھ کبھی نہیں چھوڑا، عظمی گل نے کہا کہ کشمیریوں کو حقوق دینے کا وقت اور کب آنا ہے، کب تک بھارتی مظالم پہ روتے رہیں گے۔اب وقت ہے کہ مقبوضہ کشمیر بھارت کا اصل چہرہ دنیا کو دکھایا جائے، سابق سفیر جاوید حفیظ نے کہا کہ کشمیر کاز کے لیے پارلیمنٹ کو آگے آنا ہوگا، دنیا بھر کی مختلف زبانوں میں بھارتی مظالم بتانے ہوں گے۔ کنونشن کے اختتام پر سربراہ سیلانی ویلفیئر ٹرسٹ مولانا بشیر فاروقی نے خصوصی دعا کرائی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*