گزشتہ ایک ہفتے میں پاکستان اسٹاک مارکیٹس میں تیزی کا رجحان رہا

کراچی (کامرس ڈیسک) پاکستان اسٹاک مارکیٹ میںگذشتہ ہفتے اتار چڑھاﺅ کے بعد تیزی کا رجحان رہا اور کے ایس ای100انڈیکس 800پوائنٹس بڑھ گیا جس کی وجہ سے انڈیکس 40ہزار پوائنٹس کی نفسیاتی حد عبور کر گیا اور40700پوائنٹس کی بلند سطح پر بند ہوا ،تیزی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں 185ارب روپے کا اضافہ بھی ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم 75کھرب روپے سے تجاوز کر گیا ،کاروباری تیزی کے سبب 51فیصد حصص کی قیمتیں بھی بڑھ گئیں ۔کاروبار کے لحا ظ سے حیسکول پیٹرول ،یونٹی فوڈز لمیٹڈ ،پاک انٹر نیشنل بلک ،آغا اسٹیل انڈسٹریز ،پاک ریفائنری ،پاور سیمنٹ ،میپل لیف ،کے الیکٹرک لمیٹڈ ،ٹی آر جی پاک لمیٹڈ ،فوجی فوڈز لمیٹڈ ،حب پاور کمپنی ،فوجی سیمنٹ ،ٹی پی ایل کارپوریشن لمیٹڈ ،کوٹ ادو پاور ،لوٹے کیمیکل ،فوجی فرٹیلائزر بن قاسم ،جہانگیر صدیق کمپنی اورفرسٹ نیشنل ایکویٹیز سر فہرست رہے ۔ ماہرین اسٹا ک کے مطابق پاکستان میں کورونا وائرس کی دوسری لہر نے اسٹاک ایکس چینج کی کاروباری سرگرمیوں کو متاثر کیا جس کی وجہ سے مارکیٹ تین دن بدترین مندی کی زیر اثر رہی ،5اگست کے بعد انفلیشن کا تناسب 4.8فیصد تک پہنچ جانے اور دوبارہ لاک ڈاﺅن کے خدشات نے سرمایہ کارو ں کو اضطراب سے دوچار رکھا جس کی وجہ سے سرمائے کے انخلاءبڑھنے سے مارکیٹ تنزلی کا شکار ہوئی جس کے نتیجے میں انڈیکس 2158.04پوائنٹس بڑھ گیا تاہم3دن کی مندی میں انڈیکس 1314.43پوائنٹس لوز کر گیا تاہم امریکی صدارتی انتخابات میں جوبائیڈن کی متوقع کامیابی سے امریکہ سمیت دنیا بھر کی اسٹاک مارکیٹوں میں رونما ہونیوالی تیزی، حکومت کی جانب سے صنعتی شعبوںکے لئے بعض اقدامات اور ملکی برآمدات کا حجم 2ارب ڈالر سے تجاوز کر جانے جیسے عوامل نے مارکیٹ کو سہار ا دیا

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*