کوئٹہ سمیت ملک بھر میں مہنگائی کا بڑ ا طو فا ن برپا

صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ سمیت ملک بھر میں مہنگائی اپنے عر و ج پر ہے اشیا ءخو ر د و نو ش کی ہر چیز اتنی مہنگی ہو رہی ہے جو ایک غر یب آدمی خر ید نہیں سکتا صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ میں تو تیز ی سے بڑ ھتی ہوئی مہنگائی نے حد کر دی ہے تند و ر کی رو ٹی سے لے کر تما م اشیا ءخو ر د نی کے نر خ رو ز بر و ز تیز ی سے بڑ ھ رہے ہیں جن کو روکنے والا کوئی نہیں۔
پچھلے دنو ں نا نبا ئیو ں نے رو ٹی کا نر خ بڑ ھانے کے لیے ہڑ تا ل کی جو کئی دنو ں تک جاری رہی با لا خر حکومت بلوچستان نے ان کو 250 گر ام کی رو ٹی 20 رو پے میں فر وخت کرنے کی اجا ز ت دی اور اس کا با قا عد ہ نو ٹیفکیشن بھی جا ری ہو گیا لیکن دیکھنے میں آرہا ہے کہ اکثر نا نبائی اس نر خ کی پا بند ی نہیں کر رہے ہر ایک نے اپنا نر خ رکھا ہو ا ہے رو ٹی 30 رو پے اور 40 رو پے تک فر و خت ہو رہی ہے اس کا وز ن کتنا ہے یہ کو ن جا نے عو ام کے سا تھ ایک اور زیا د تی یہ ہو رہی ہے کہ شہر میں تا جران کی بھی کئی تنظیمیں ہیں جن کا آپس میں را بطہ نہیں ہے ایک تنظیم نا نبا ئیو ں کو سپو رٹ کر رہی ہے جبکہ دوسر ی اس کی مخا لفت کر رہی ہے ایسے میں نقصا ن غر یب عو ام کا ہو رہا ہے یہا ں سو ال یہ اٹھتا ہے کہ نا نبا ئیو ں کو یہ اختیا ر کس نے دیا کہ وہ اپنی مر ضی کا وز ن اور نر خ والی رو ٹی فر و خت کریں اس سے یہ ظا ہر ہو تا ہے کہ وہ خو د مختیا ر جبکہ انتظا میہ اور عو ام دو نو ں بے بس ہیں انتظا میہ ان پر چیک اینڈ بیلنس رکھنے میں نا کا م اور عو ام ان سے مہنگی رو ٹی خر ید نے پر مجبو ر ہیں یہ ایک نا نبائی طبقہ کی زیا د تیو ں کا از ا لہ نہیں ہو رہا تو پھر اور کیا ہو گا دوسر ی جا نب انڈ و ں ،سبز یو ں ،گو شت ،دو دھ ،دہی اور فر و ٹس سمیت تما م اشیا ءجن میں چینی آٹا ،گھی ،کو کنگ آئل اوردا لیں بھی شا مل ہیں رو ز انہ کی بنیا د پر مہنگی ہو رہی ہیں عو ام کے سا تھ ایک اور بڑ ی زیا د تی چینی ما فیا کر رہی ہے جو اس وقت ڈبل قیمت پر فرو خت ہو رہی ہے مگر ان سے کو ن پو چھے؟
تا جر و ں نے سر کا ری نر خنامے کی دھجیا ں اڑ ا کر رکھ دی ہیں وہ اپنے من مانے نر خو ں پر اشیا ءفر و خت کر کے غر یب عو ام کو دونو ں ہا تھو ں سے بڑی بے در دی سے لوٹ رہے ہیں اور عو ام لٹ رہی ہے۔
اس لیے یہا ں ضرورت اس امر کی ہے کہ انتظا میہ کو یہ سب کچھ خا موش تما شا ئی بن کر دیکھنے کی بجا ئے حر کت میں آنا چا ہیئے اور ان ظا لم تا جر وں سے غر یب عو ام کو چھٹکا ڑ ا دینے کے لیے احسن اقد ا ما ت کرنے چا ہئیں انتظامیہ کو خا نہ پر ی کرنے کی بجا ئے ایسے افر اد کو جو حکومت کی رٹ کو چیلنج کر تے ہیں کو چندہز ا ر رو پے جر ما نے کرنے کی بجا ئے کٹر ی سز ا ئیں دینی چا ہئیں تا کہ آئندہ کوئی اور ایسی حر کت نہ کر سکے ہما رے ہا ں انتظا میہ چھا پے ما ر کر چند ہز ا ر رو پے جرما نہ کر دیتی ہے اس سے تا جر و ں کو کچھ اثر نہیں پڑ تا وہ اشیا ءکو مز ید مہنگی کر کے اپنا نقصا ن ڈ بل عو ام سے وصو ل کر لیتے ہیں یہ ایک بہت بڑ ا لمیہ ہے جس کا مستقل حل نا گزیر ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*