ہمیں بلوچستان کی پسماندگی کا احساس ہے، اسد عمر خان

اسلام آباد(خ ن) وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان سے وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی وترقیات اسد عمر نے بلوچستان ہا¶س میں ملاقات کی، وفاقی وزیر برائے دفاعی پیداوار محترمہ زبیدہ جلال، سینیٹر انوارالحق کاکڑ اور رکن قومی اسمبلی نوابزادہ خالد خان مگسی بھی اس موقع پر موجود تھے، ملاقات میں بلوچستان کے لئے وفاقی منصوبوں پرعملدرآمد اور ان کی پیشرفت کے علاوہ جنوبی بلوچستان اور ملحقہ اضلاع کے لئے خصوصی ترقیاتی پیکج سمیت صوبے کے دیگر ترقیاتی امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا، وزیراعلیٰ نے بلوچستان کی ترقی کے لئے وزیراعظم اور وفاقی وزیر منصوبہ بندی کی خصوصی دلچسپی اور عملی اقدامات کو سراہتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت کا بلوچستان کی ترقی کے لئے مثبت رویہ اور عملی اقدامات ہمارے لئے باعث تقویت ہیں، انہوں نے کہا کہ جنوبی بلوچستان کے لئے ترقیاتی پیکج اور پاک ایران اور پاک افغان سرحدی علاقوں کی ترقی کے منصوبے اور بارڈر مارکیٹوں کے قیام سے ترقی کے ایک نئے دور کا آغاز ہوگا جس کا فائدہ بلوچستان کے ساتھ ساتھ پورے ملک کو پہنچے گا، وفاقی وزیر نے کہاکہ وفاقی حکومت ملک کی معاشی واقتصادی ترقی کے لئے بلوچستان کی اہمیت سے بخوبی آگاہ ہے جبکہ ہمیں بلوچستان کی پسماندگی کا بھی احساس ہے یہی وجہ ہے کہ وزیراعظم بلوچستان کی ترقی کو خصوصی اہمیت دیتے ہوئے صوبے کی پسماندگی کے خاتمے کے لئے اقدامات یقینی بنارہے ہیں اور جنوبی بلوچستان کی ترقی کے لئے خصوصی پیکج اس سمت میں ایک اہم پیشرفت ہے جس سے مکران ، قلات اور رخشاں ڈویژنوں کے پسماندہ علاقوں کی ترقی ممکن ہوسکے گی، ملاقات کے دوران وفاقی پی ایس ڈی پی میں شامل بیلہ، جھل جھا¶روڈ کے منصوبے کی ایکنک سے منظوری، نولنگ ڈیم کے پی سی ون میں ترمیم کی منظوری، بلوچستان کے وفاقی منصوبوں کے لئے فنڈز کے تیز رفتا راجرائ، کراچی کوئٹہ چمن دورویہ شاہراہ کی فزیبیلیٹی رپورٹ کی تیاری، بلوچستان میں فائبر آپٹک کی توسیع ، پاک افغان اور پاک ایران سرحد پر بارڈر ٹریڈ کی سہولتوں کی فراہمی جیسے اہم منصوبوں پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا، وفاقی وزیر نے وزیراعلیٰ کے موقف سے اتفاق کرتے ہوئے اس ضمن میں مکمل اور بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*