جعلی ڈو میسا ئل کا مسئلہ سنگین

وزیر اعلیٰ بلوچستان جا م کما ل خان کا اپنے ایک ٹو یٹر بیان میں کہنا ہے کہ جعلی ڈو میسائل کا مسئلہ سنگین ہے ا س پر سمجھو تہ نہیں کر یں گے وفا قی ادا روں میں بلوچستا ن کے جعلی ڈومیسائل پر ملا ز مت کرنے والے افر اد کے ڈو میسائل منسو خ کر نے کا سلسلہ شر وع کر دیا گیا اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنر مستو نگ نے پہلے مر حلے میں 400 جعلی ڈومیسائل منسو خ کر دیئے ہیں اس طرح حکومت کا جعلی ڈو میسائل کی منسو خی کا فیصلہ اپنی نو عیت کا پہلا اقد ام ہے بہت جلد صو بے بھر میں ڈو میسائل منسو خ کر کے وفا ق کو ان افر اد کی فہر ستیں فر اہم کی جائیںگی اس کے سا تھ سا تھ جعلی ڈومیسائل کے ذر یعے ملا ز متیں حا صل کرنیو الو ں کیخلا ف تما م ڈپٹی کمشنر و ں کو جا ری ڈو میسائل کی سیکر و نٹی کی ہد ایت جا ری کر دی گئی ہے۔
جعلی ڈومیسائل سے متعلق وزیر اعلیٰ بلوچستا ن جا م کما ل خا ن کا مذکو رہ بیا ن قا بل تعر یف ہے انہو ں نے اس اہم معا ملے پر سمجھو تہ نہ کر نے کی با ت کر کے یہ ثا بت کر دیا ہے کہ صو بائی حکومت جعلی ڈو میسائل کے خلا ف بھر پو ر اقد اما ت کر ے گی انہو ں نے اس سلسلے میں تما م ڈپٹی کمشنر ز کو جا ری ڈو میسائل کی سیکر و نٹی کرنے کی جو ہد ایت دی ہے اس پر عملی طو ر پر اقد اما ت کر نے کی اشد ضرورت ہے جعلی ڈومیسائل پر ملا ز مت کر نے والے افر اد کی نو کر یو ں کو نہ صر ف ختم کیا جا ئے بلکہ ا ن کے خلا ف قا نو نی کا روائی بھی کر نی چا ہیئے کیو نکہ ان لو گو ں نے حق دا رو ں کا حق ما را ہے کیو نکہ ہما رے ہا ں یہ بد قسمتی رہی ہے کہ کئی عشر و ں سے یہا ں رہنے والے افر اد ڈو میسا ئل سے محر وم ہو تے ہیں جبکہ صر ف کچھ عر صے کے لیے آنے والے لو گ با آسا نی ڈو میسائل حا صل کر کے چلے جا تے ہیں اور پھر ان پر وفا ق کے محکمو ں میں اپنے بچوں کو بھر تی کر دیتے ہیں اور اس کے سا تھ سا تھ تعلیم کے شعبے میں بھی سیٹیں حا صل کر لیتے ہیں جو کہ یقینا یہا ں کے رہنے والے حقدارو ں کی حق تلفی کے متر ادف اقد ام ہے یہ بھی دیکھنے میں آیا ہے کہ ایسے لو گو ں نے بھی یہا ں سے ڈومیسائل بنو ائے ہیں جو سر ے سے یہا ں آئے ہی نہیں وہ یہا ں کے با ر ے میں کچھ بھی نہیں جا نتے۔
صو بے میں جعلی ڈومیسائل حا صل کرنے والوں کے خلا ف شر وع کی گئی کا رو ائی میں اب تک ڈی سی مستو نگ نے پہلے مر حلے میں 400جبکہ ڈی سی کوئٹہ نے 122 جعلی ڈومیسائل منسو خ کر دیئے ہیں جو کہ ایک اچھا اقد ام ہے۔
اس لیے یہا ں ضرورت اس امر کی ہے کہ وزیر اعلیٰ بلوچستا ن جا م کما ل خان کی ہد ایا ت پر عمل کر تے ہوئے تما م ڈپٹی کمشنر ز کو جا ری ڈومیسائل کی سیکر و نٹی شفا ف طر یقے سے کرنی چا ہیئے اس میں اس با ت کاخا ص خیا ل رکھنا چا ہیئے کہ اس میں اصل حقد ار کو اس کے حق سے محروم نہ کر دیا جائے کیو نکہ بد قسمتی سے ہما رے ہا ں سسٹم میں کچھ ایسی خا میا ں ہیں اس لیے اس جا نب خصو صی توجہ دیتے ہوئے کا روا ئی کی جا ئے تا کہ اصل حقد ا رو ں کو اس کا حق مل جا ئے اور وہ نو کر یا ں اور تعلیمی شعبے میں سیٹیں حا صل کرکے مز ید تعلیم حا صل کر کے صو بے کی خد مت کرسکیں کیو نکہ یہا ں پر رہنے والے اصل با سیو ں کا جینا مر نا اسی صو بے میں ہے وہ کئی عشر وں سے یہا ں مقیم ہیں اس لیے ان کی صو بے کے سا تھ ہمد ر دیا ں ہیں جن کو اس طرح چھین لینا ٹھیک نہیں ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*