صوبے میں کورونا کے کیسز میں کمی آنا خوش آئند ہے،ترجمان حکومت بلوچستان

کوئٹہ(سٹاف رپورٹر) حکومت بلوچستان کے ترجمان لیاقت شاہوانی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں کورونا وائرس کے کیسز میں کمی آنا خوش آئند ہے وائرس کے پھےلاو کی شرح32 فیصد سے کم ہوکر16 فیصد ہوگئی حکومت تعلیمی اداروں کو کھولنے کی حکمت عملی بنارہی ہے چمن سرحد پر سخت حالات میں کام کرنے والوں کو ریلےف دینے کیلئے بیس ہزار ماہانہ دیا جائے گا وزیر اعلیٰ بلوچستا کی ہدایت پر جعلی ڈومیسائل اور لوکل کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے ‘ان خےالات کا اظہار انہوں نے سول سےکرٹرےٹ مےں مےڈےا کو برےفنگ دےتے ہوئے کہی‘ انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں سمارٹ لاک ڈاو¿ن کا 37 واں دن ہے ٹیسٹ اس دوران کم ہوئے ہیں ایس او پیز میں شامل تھا کہ جن علاقوں میں کیسسز زیادہ ہوں سیل ہونگے کوئٹہ میں چند مقامات کی نشان دہی ہوئی تھی حکومت نے اب تک کسی علاقے کو سیل نہیں کیا عید کے دنوں میں کورونا کے بڑھنے کے خدشات ہیں ایس او پیز پر عمل جاری رہا تو سمارٹ لاک ڈاو¿ن میں توسیع ہوگی انہوں نے کہاکہ دس ہزار آٹھ سو سولہ اس وقت کورونا وائرس کے کیسسز بہتر ہورہی ہے جون میں شرح 32 فیصد تھی اس وقت کورونا کے پھیلاو¿ کی شرح سولہ فیصد ہے جو خوش آئند یے 123 کورونا کی وجہ سے اموات ہوئی چار ہزار سات سوپچپن افراد صحت یاب ہوئے ہیں تعلیمی ادارے پندرہ جولائی تک بند ہیں کورونا کی شرح نہ بڑھی تو تعلیمی اداروں سے متعلق فیصلہ ہوگا عید کے بعد تعلیمی ادارے کھولنے میں مشکل نہ ہوگی وزیر اعلیٰ کی ہدایت پر جعلی ڈومیسائل اور لوکل کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے ڈی سی مستونگ نے چار سو سے زائد لوکل سرٹیفکیٹ منسوخ کئے ہیں وزیر اعلیٰ نے بلوچستان کے چھ فیصد کوٹے پر عمل درآمد کا مطالبہ کیا ہے انہوں نے کہاکہ میٹروپولیٹن کارپوریشن کو اسپرے کیلئے جدید مشین فراہم کردی گئی ہے چمن سرحدی سے متعلق اعلی سطحی کیمٹی نے مذاکرات کئے ہیں سرحد پر محنت کرنے والے مشکلات کا شکار ہیں چمن سرحد پہ سخت حالات میں کام کرنے والوں کو ریلف دینے کیلئے بیس ہزار ماہانہ دیا جائے گا انہوں نے کہاکہ چمن میں جلد بارڈر مارکیٹ اور ٹرمینل کھلے گا حکومت دس مقامات پر باڈر مارکیٹ کھولنے کا عزم رکھتی ہے وزیر اعلی سی پیک پر فوکس کیا ہے سی پیک کا دل گوادر ہے ماضی میں سی پیک میں بلوچستان نظر انداز رہا سی پیک اتھارٹی کے چیرمین بلوچستان میں خصوصی دلچسپی لے رہے ہیں ہوشاب خوشاب روڈ ترجیح بنیادوں پر بن رہا یے مکران اور آواران میں ترقی ہوگی ٹڈی دل نے بلوچستان کی زراعت کو نقصان پہنچایا ہے حکومت ایک کروڑ ایکٹر علاقے کا سروے کیا جاچکا ہے ساٹھے تین لاکھ ایکڑ پر اسپرے کیا جاچکا ہے کوئٹہ میں کورونا کیسسز کا تیزی سے کم ہونا خوش آئند ہے انہوں نے کہاکہ عوام نے ایس او پیز کا خیال نہ رکھا کو دوبارہ سخت لاک ڈاو¿ن ہوگا بلوچستان حکومت نے ایران سرحد پر ٹسٹنگ لیب اور کورنٹائن سینٹر بنانے ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*