ایرا ن اور افغانستان پاکستان کے اسلامی برادر مما لک ہےں،ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی

کوئٹہ(ہ ا) ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری نے کہا کہ پاکستان ہمسایہ ممالک کے ساتھ ساتھ پوری مسلم امہ کی اتحاد و اتفاق کے لئے کردار ادا کررہا ہے۔ ایران اور افغانستان پاکستان کے اسلامی برادر ممالک ہیں ان کے ساتھ تعلقات اور تجارت کی فروغ نہ صرف پاکستان بلکہ تینوں ممالک کے فائدے اور ترقی کا ذریعہ ثابت ہوسکتا ہے۔ وزیراعظم عمران خان کا وژن ہے کہ وہ مسلم امہ کو یکجا اور آپس کی رنجشوں کو ختم کرکے عوام کی بحالی، ترقی اور خوشحالی کو فروغ دیں۔ یہ بات انہوں نے کوئٹہ میں متعین ایران کے کونسل جنرل حسن درویش وند سے ملاقات کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ ایران ہمارا اسلامی برادر ملک ہے ہماری خواہش ہے کہ ایران کے ساتھ برادرانہ تعلقات ہمیشہ کی طرح قائم رہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے مسلم امہ کی یکجہتی کے لئے ک?ی مسلم ممالک کے دورے کئے اور سفارتی تعلقات کی مزید بہتری پر زور دیا اس سلسلے میں ایران اور سعودی عرب کے درمیان بھی ثالث کا کردار ادا کرنے کے لئے پیش کش کی تھی اور زور دیا تھا کہ دونوں ممالک عوام کی بہتری کے لئے آپس کی رنجشیں ختم کردیں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی وباءنے پوری دنیا میں تباہی پھیلائی بہت سے قیمتیں جانیں اس دنیا سے چلی گئی دنیا کےمعیشتوں کو کافی نقصان پہنچا، ایران بھی کورونا وائرس سے زیادہ متاثر ہونے والے ممالک میں شامل رہا اور ہزاروں لوگ جاں بحق ہوئے ایران پر پہلے سے عالمی پابندیوں کی وجہ سے بہت سارے مشکلات تھے جس پر پوری دنیا کو توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں پاکستان واحد ملک تھا جس کے وزیراعظم نے ایران کی مشکلات کی بات کی اور عالمی دنیا کا توجہ اس طرف مبذول کراتے ہوئے کہا کہ وباءکی وجہ سے ایران پر عائد پابندیاں ختم کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے مشکلات کو مدنظر رکھ کر تفتان بارڈر کو سات دن کے لئے کھول دیا گیا ہے۔ تاکہ تاجر برادری کا زیادہ نقصان نہ ہوہماری خواہش ہے کہ ہم ہمسایہ ممالک کے ساتھ تجارت کو فروغ دیں اور تجارتی سرگرمیوں کو زیادہ وسعت دیں۔ قاسم خان سوری نے کہا کہ پاکستان اور ایران دہشت گردی کے خلاف بھی مشترکہ جدوجہد جاری رکھیں تاکہ دونوں ممالک کو دہشت گردی کے واقعات سے چھٹکارہ مل سکیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ایران کو تعلقات کے فروغ کے لئے وفود کے سطح پر ایک دوسرے ممالک کا دورےکرنا چاہئے ایک دوسرے سے اچھے تعلقات استوار کرنے سے سیکھنے کے مواقع پیدا ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک پر تیزی سے کام جاری ہے روڈخیبرپختونخواہ سے ہوکر ژوب تا کچلاک روڈ کا ٹینڈر ہوچکا ہے توانائی کے بحران کو ختم کرنے کے لئے بہت سے پروجیکٹس پر کام جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک نہ صرف پاکستان بلکہ پورے خطے کے لئے گیم چینجر ثابت ہوگا۔ ڈپٹی اسپیکر نے ایرانی قونصل جنرل کے اقدامات کو سراہتے ہوئے کہا کہ ایران کے ساتھ سفارتی سطح پر کام کو ترجیح دیں گے اور جن مسائل کا سامنا ہے ان کو اعلیٰ قیادت کے ساتھ شیئر کردوں گا۔ ڈپٹی اسپیکر نے کہا کہ پاکستان میں غربت کے خاتمے پر کام کررہے ہیں کورونا کی وباءمیں نہایت شفاف طریقے سے غریب خاندانوں میں بارہ ارب روپے تقسیم کئے ایک ایسا صاف شفاف طریقہ لایا جس کی مثال پوری دنیا میں نہیں ملتی۔ وزیراعظم عمران خان کا وژن ہے کہ غریب کو اوپر لایا جائے سابقہ حکومتوں نے غربت کے خاتمے کے لئے خاص اقدامات نہیں اٹھائے تھے جس کی وجہ سے کافی مشکلات کا سامنا ہے۔ ہماری کوشش ہے کہ جو منصوبے مہنگے قیمتوں پر شروع کئے تھے ان کو سستے اور آسان قیمتوں پر چلائیں۔ انہوں نے کہا کہ پشاور ٹو کراچی ایم ایل ون پروجیکٹ پر کام جاری ہے اور ملک بھر تک وسعت دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہماری خواہش ہے کہ پاکستان ایران ترکی اور سینٹرل ایشیاء تک ریلوے کے نظام چلا?ی جائے تاکہ خطے کے سارے ممالک میں تجارت کا فروغ ہو اور ایران کے ساتھ التوا کا شکار تائی پی گیس منصوبہ بھی دوبارہ شروع کیا جائے تاکہ پاکستان میں گیس کے مسائل سے ہمیشہ کے چھٹکارہ حاصل ہوسکے انہوں نے کہا کہ ہم ایران کے مشکور ہیں جس نے گوادر میں بجلی کی فراہمی کو یقینی بنایا ہے۔ ہمسایوں کے ساتھ تعلقات کی بہتری کے یہی فائدے ہیں کہ وہ ایک دوسرے کے ریسورسز سے فائدہ اٹھائیں۔ اس موقع پر ایرانی کونسل جنرل حسن درویش نے حکومت پاکستان کا شکریہ ادا کیا کہ پاکستان نے ہمیشہ ایران کے ساتھ وباءاور مشکل حالات میں ہمسایے کا کردار اچھے طریقے سے ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایران پاکستان بارڈر پر تفتان بارڈر کے علاوہ اور مقامات پر بھی تجارتی راستے کھولنے چاہئے اس سلسلے میں حکومت پاکستان اقدامات اٹھائیں ایران ہر قسم کی مدد کے لئے تیار ہے اس کے ساتھ ساتھ ٹرین منصوبے کو بھی شامل کیا جائے تاکہ ایران پاکستان ترکی تک ٹرین کا نظام ہو۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی اور ایران کےتاجر کو بینکنگ ٹرانزکشن کے مسائل ہے حکومت پاکستان ایران کے ساتھ دیگر ممالک کی طرح بینکنگ کا نظام متعارف کرائیں تاکہ دونوں ممالک کے تاجر برادری آسانی سے تجارت کرسکیں اور پاکستان تائی پی گیس پائپ لائن کا منصوبہ بھی دوبارہ شروع کرے۔ انہوں نے کہا کہ ہم وزیراعظم پاکستان عمران خان کے مشکور ہیں جس نے ایران سعودی تنازع پر کردار ادا کیا اور اس سلسلے میں ایران کا دورہ کیا۔ آخر میں گزشتہ روز کراچی سٹاک ایکسچینج پر دہشت گردی کے واقع کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور شہداءکے لئے فاتحہ خوانی کی اور ٹرین حادثے میں سکھ برادری کے جاں بحق افراد پر ڈپٹی سپیکر کیساتھ افسوس کا اظہار کیا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*