ہندوستا نی فو ج کی مقبو ضہ کشمیر میں بر بر یت

گذشتہ رو ز ہندوستانی فو ج نے ایک بزرگ کو گا ڑی سے اتا رکر اس کے نو اسے کے سا منے قتل کر دیا فا ئر نگ سے نو اسہ معجز ہ طور پر بچ گیا لیکن اس کے بعد فو جیو ں نے اس کو نا نا کی لا ش کے پا س بیٹھا کر اس کی نہ صر ف تصو یر یں بنا ئیںجبکہ اس کو گر فتا ر کر کے لے گئے بر بر یت کا یہ وا قعہ سو پور میں پیش آیا ڈرا ہو ا نو اسہ اپنے نا نا کی لا ش کے قر یب بیٹھا مسلسل رو تا رہا اور مد د ما نگتا رہا۔
ہندوستا نی قا بض فو ج کی مقبو ضہ کشمیر میں مسلسل بر بر یت کی جتنی مذمت کی جا ئے کم ہے اب تو اس میں اضا فہ ہو رہا ہے جس کا ثبو ت مذکو رہ وا قعہ ہے جس میں ایک ایسے بز ر گ کو نشا نہ بنا یا گیا جو اپنے گھر کا سو د ا سلف لینے جا رہا تھا اس نے فو ج کے سا تھ کسی قسم کی کوئی مز احمت یا کوئی اور ایسا اقد ام نہیں تھا کہ اس کو اس کی سز ا دی جا تی اور اس کی جا ن لے لی جا تی۔
ہم سمجھتے ہیں کہ یہ ایک ایسا بر بر یت کا وا قعہ ہے جو شا ہد اب تک کہیں بھی نہیں ہو ا ہو گا کہ ان در ند و ں کو نہ صر ف بز ر گو ں بلکہ معصو م بچو ں کا بھی ذ ر ا بھر خیا ل نہیں ہے وہ در ند گی میں اس حد تک جا چکے ہیں کہ وہ اب ایسی نا رو ا حر کت کرنے پر اتر آ ئے ہیں
ہندوستا ن کو مقبو ضہ کشمیر پر قبضہ کر نے کا خو اب چھو ڑ دینا چا ہیئے کیو نکہ مقبو ضہ کشمیر میں تحر یک آ زا دی رو ز بر و ز زو ر پکڑ تی جارہی ہے اس میں اب کمی نہیں آرہی اس کے علا وہ مقبو ضہ کشمیر میں ایک عر صے سے مسلسل کر فیو نافذ ہے اور اس طرح اس وا دی کو دنیا کی ایک بڑی جیل میں تبد یل کر دیا گیا ہے اس کے سا تھ سا تھ ہندوستا نی قابض فو ج نہ صر ف نو جو ا نو ں کو شہید کر دیا ہے بلکہ اکثر کو زند گی بھر کے لیے معذ ور بھی کیاجا رہا ہے لیکن یہ سب کچھ کرنے کے بعد اب مذکو رہ اند وہنا ک وا قعہ پیش آیا ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ ہندوستا ن جنگی جنو ن میں تما م حد یں عبو ر کر چکا ہے۔
لیکن ہندوستا ن کو یہ با ور کر لینا چا ہیئے کہ وہ مقبو ضہ کشمیر پر کبھی قبضہ نہیں کر سکے گا اس لیے اس کو وہا ں قا بض اپنی لا کھو ں فو ج کو فو ری طور پر وا پس بلا لینا چا ہیئے اور کشمیر یو ں کو اقو ام متحدہ کی قر ار دا دو ں پر عمل کر تے ہوئے ان کو حق خو د ار اد یت دینا چا ہیئے جس کا وہ پا بند ہے کیو نکہ یہ اقو ام متحدہ کی قر ار دا د ہے لیکن افسو س کی با ت یہ ہے کہ اقو ام متحدہ اس سلسلے میں کسی بھی قسم کی کوئی کا رو ائی کرنے سے گر یز ا ں ہے وہ ہندوستا ن کے سا منے شا ہد اتنا بے بس ہو چکا ہے کہ وہ اس سے اپنی قر ار دا دو ں پر عمل در آمد نہیں کر ا سکتا جو کہ اس کے لیے ایک بہت بڑ ا لمحہ فکر یہ ہے اس کو اپنے اختیا ر ات استعما ل کر تے ہوئے نہ صرف ہندوستا ن پر سفا ر تی پا بند یا ں لگا نی چا ہئیں اور اس با ت پر مجبو ر کرنا چا ہیئے کہ وہ فو ری طو ر پر مقبو ضہ کشمیر سے اپنی قا بض فو ج کو وا پس بلا ئے کیو نکہ یہی اس کے بہتر ین مفا د میں ہے وہ جتنا یہا ں رہے گا جا نی اور ما لی نقصا ن اٹھا تا رہے گا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*