حکومت کو معیشت کو چلانے کےلئے اپنی پالیسیوں میں توازن لانا ہوگا

لاہور( کامرس ڈیسک )پاکستان ٹیکس بار کے صدر آفتاب ناگرہ نے کہا ہے کہ حکومت کو معیشت کو چلانے کےلئے اپنی پالیسیوں میں توازن لانا ہوگا، مجموعی قومی آمدن میں اضافے کےلئے روایتی طریقوں کو نئے رجحانات کی طرف پیشرفت کرنا ہو گی ،آٹو میشن پر جائے بغیر ٹیکس کولیکشن میں ہونے والی لیکج کو نہیں روکا جا سکتا ،،آڈٹ اور اپیلوںکے زیر التوا کیسز کو حل کرنے اور مقدمہ بازی سے بچنے کیلئے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے پاکستان ٹیکس بار اور لاہور ٹیکس بار کے زیر اہتمام مشترکہ پوسٹ بجٹ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر پاکستان ٹیکس بار کے سینئر نائب صدر قاری حبیب الرحمن زبیری ،جنرل سیکرٹری فرحان شہزاد ،سیکرٹری اطلاعات شہباز صدیق ،لاہور ٹیکس بار کے صدر خرم شہباز بٹ ، نائب صدر عاشق علی رانا، سابق صدور پاکستان ٹیکس بار شہباز بٹ ، نعیم شاہ ، رانا منیر حسین اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ٹیکس بارز کے عہدیداروںنے کہا کہ حکومت نے سیکشن21ایل ،21ایم میں ترمیم اورودہولڈنگ ٹیکسز میںریلیف دینے کی کوشش کی ہے مگر اب بھی کئی قوانین پر نظر ثانی کی ضرورت ہے ،معیشت کے پہیے کو چلانے کے لیے و ہ اقدامات اٹھائے جائیں جن میں ریونیو کلیکشن کر کے اہداف پورے کئے جا سکیں اور عوام کا حکومت پر اعتماد بھی بحال ہو ۔انہوں نے کہا کہ 400کمپنیاں بجٹ کا 70فیصد ٹیکس ادا کرتی ہیں، پورے ملک میں ہلچل برپا کرنے کی بجائے ٹیکس نیٹ سے باہر کمپنیوںکو اعتماد میںلے کر ٹیکس اہداف باآسانی پورے کیے جا سکتے ہیں ۔پاکستان ٹیکس بار کے صدر آفتاب ناگرہ نے کہا ہے کہ حکومت کو معیشت کو چلانے کےلئے اپنی پالیسیوں میں توازن لانا ہوگا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*