کراچی چیمبر شرح سود میں معمولی کمی سے غیر مطمئن

کراچی(کامرس ڈیسک)چیئرمین بزنس مین گروپ و سابق صدر کے سی سی آئی سراج قاسم تیلی اور کراچی چیمبر کے صدر آغا شہاب احمد خان نے اسٹیٹ بنک کی جانب سے شرح سود میں ایک فیصد کی معمولی کمی پرعدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ انتہائی کم اوربے حد تاخیر سے کی گئی ہے۔عرصہ دراز سے بلکہ وبا پھوٹنے سے بھی قبل کراچی چیمبر مسلسل شرح سود میں قسطوں میں کمی کرنے کے بجائے ایک ہی بار 4فیصد تک کم کردینے کا مطالبہ کرتا چلا آرہا ہے کیونکہ شرح سودکو ٹکروں میں کم کرنے سے معیشت میں بہتری لانے کے لئے جو دھکا درکار ہے وہ نہیں دیا جا سکے گا۔ ایک ہی بار نمایاں کمی کرکے شرح سود 4فیصد پر لانے سے نمو کو متحرک کرنے اور معاشی سرگرمیوں کو تیز تر کرنے میںمددملے گی ۔ایک بیان میں سراج تیلی اور آغا شہاب نے کہا کہ شرح سود کو ٹکڑوں میں کم کرنا معیشت میںجان ڈالنے کے لئے ناکافی ہے لہذا یہ ضروری ہے کہ ایک ہی بارکمی کر دی جائے تاکہ کاروبار و صنعت کو بچایا جاسکے جو پہلے ہی شدید غیر معمولی بحرانوں سے دوچار ہے۔ پالیسی ریٹ میں نظرثانی کرکے 7 فیصد پر لانے کا مطلب یہ ہے کہ بڑے پیمانے کے قرض لینے والوں کو بینکوں کا اسپریڈ شامل ہونے کے بعد8فیصد سے9فیصد جبکہ چھوٹے اداروں کو 10سے 12فیصد شرح سود پر قرضے میسر ہوں گے۔انھوں نے کہا کہ تاجر و صنعتکار برادری پہلے ہی مشکل ترین وقت سے گزر رہی ہے اور یہ عین ممکن ہے کہ جاری معاشی بحران میں کئی کاروبار اپنی بقا ہمیشہ کے لئے کہو دیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*