صوبے میں کورونا کے کیسز کی شرح میں کمی ریکارڈ کی گئی ،لیاقت شاہوانی

Liaquat Shahwani

کوئٹہ(این این آئی)ترجمان حکومت بلوچستان لیاقت شاہوانی نے کہا ہے کہ صوبے میں کوروناوائرس کے کیسزکی شرح میں مجموعی طور پر کمی رکارڈ کی گئی ہے،،جون کےاوائل اور وسط میں کورونا کےکیسز کی شرح 25سے35فیصد سے کم ہوکر گذشتہ دو روز قبل سات فیصد ہوگئی تھی۔۔تاہم ان کا یہ بھی کہناتھا کہ اندرون صوبہ اگر ٹیسٹ کی استعداد کو بڑھایاجائےگاتو کیسز میں اضافہ بھی ہوسکتاہے۔ یہ بات انہوں نے جمعرات کوسو ل سیکر ٹریٹ میں پر یس کا نفر نس کر تے ہو ئے کہی صوبائی ترجمان لیاقت شاہوانی نے بتایا کہ بلوچستان میں شروع میں کورونا کی ٹیسٹنگ استعداد 80تھی،اب یہ 1500روزانہ تک پہنچ گئی ہے اور پلان ہے کہ پانچ ہزار ٹیسٹ روزانہ کریں،صوبے میں اب تک نو ہزار 817کیسز پازیٹیو آئے ہیں ،انہوں نے کہا کہ صوبے میں مئی اور جون میں مارچ اور اپریل کی نسبت کیسز پڑھتے رہے ہیں مئی کے آخر میں کورونا کے کیسز بڑھنا شروع ہوئےتھے اور کیسز کی شرح جون کےاوائل اور وسط میں 25سے35فیصد تھی، رواں ہفتے کے دوران کورونا کےکیسز کی شرح میں کمی آئی ہے اور 819کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، جبکہ گذشتہ ہفتے کورونا کے 1325کیسز رپورٹ ہوئے تھے اور دو ہفتے قبل کورونا کے 2019کیسز رپورٹ ہوئے تھے، اسی طرح کوئٹہ میں کورونا کے کیسزکی شرح 84فیصد سے کم ہوکر 78اعشاریہ چھ فیصد ہوگئی ہے،کیسز کی شرح میں کمی کی وجہ میں عوام کا تعاون بھی شامل ہے،انہوں نے کہاکہ صوبے میں اس وقت کوروناسےمتاثرہ 98فیصد افراد گھروں پر آئسولیشن میں ہیں، صرف 75مریض مختلف اسپتالوں میں زیرعلاج ہیں،اسپتالوں میں زیرعلاج 18مریضوں کی حالت تشویشاک ہے،صوبے میں کے دیگر علاقوں میں کورونا ٹیسٹنگ کی شرح بڑھائیں گےتو کیسز سامنے آسکتے ہیں،لیاقت شاہوانی نے کہاکہ بلوچستان میں کورونا کےزیادہ کیسز والےہاٹ سپاٹ علاقوں کی نشاندہی کی جارہی ہے، کوشش ہے کہ کسی علاقے میں مکمل لاک ڈاون کی نوبت ہی نہ آئے،،کوئٹہ میں شہری کورونا کی روک تھام کےحوالے سے ایس اوپیز پر عملدرآمد کررہےہیں،صوبائی ترجمان نے کہاکہ تعلیمی اداروں کے کھولنے کےحوالے سے ایس او پیز پر کام ہورہاہے، ہماری کوشش ہے کہ تعلیمی ادارے کھولنے کےحوالے سے فیصلہ وفاقی حکومت کےساتھ ہی کیاجائے،انہوں نے کہاکہ گذشتہ روز طلبائ و طالبات کےآن کلاسز کےخلاف احتجاج کےدوران ہونےوالے واقعہ پر افسوس ہے،واقعہ کو صحیح طور پر ڈیل نہ کرنےوالے پولیس افسر اور اہلکاروں کےخلاف کارروائی کی گئی ہے، ہماری روایات اس طرح کے واقعہ کی قطعی اجازت نہیں دیتیں،ترجمان حکومت بلوچستان نے کہاکہ بلوچستان سےتعلق رکھنےوالے سمندر پار پاکستانیوں کی براہ راست کوئٹہ آمد کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے آنے والے تمام افراد کے کورونا کے ٹیسٹ کئے جارہے ہیں،بلوچستان سے تعلق رکھنےوالے 2000سے2500افراد بیرون ملک ہیں،وہ ہم سے رابطہ میں ہیں،ترجمان حکومت بلوچستان نے مزید کہاکہ بلوچستان میں ٹڈی دل کی روک تھام کے لئے این ڈی ایم سے مدد حاصل کی ہے،اسپرے کیاجارہاہے،اس وقت زیرکاشت والا 15سے20فیصد علاقہ متاثر ہواہے، اگر ٹڈی دل کی روک تھام کےلئے موثر اقدامات نہ کئے گئے تو نقصان زیادہ ہوسکتاہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*