پاکستان کا یوم آزادی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے طو رپر منایا گیا

14 August 2018

اسلام آباد/لاہور/کراچی/پشاور/کوئٹہ /پشاور/مظفر آباد ( این این آئی)ملک بھر میں پاکستانیوں نے 72وا ں یوم آزادی کشمیریوں سے بھرپور اظہار یکجہتی کے طور پر منایا ،آج 15اگست کو بھارتی یوم آزادی کے دن کو یوم سیاہ کے طو رپر منایا جائے گا ، یوم آزادی کے سلسلہ میں ملک بھر میں تقریبات کا انعقاد کیا گیا جبکہ پرچم کشائی کی تقریبات میں پاکستان اور کشمیر کے پرچم اکٹھے لہرائے گئے ۔ پاکستان کے دارالخلافہ اسلام آباد میں اکتیس جبکہ صوبائی دارلحکومتوں لاہور،کراچی، کوئٹہ اور پشاور میں یوم آزادی کے دن کا آغاز اکیس توپوں کی سلامی سے ہوا۔ مساجد میں نماز فجر کے بعد ملک و قوم کی سلامتی ، امت مسلمہ کے اتحاد اور کشمیرکی آزادی کے لئے خصوصی دعائیں مانگی گئیں ۔پرچم کشائی کی مرکزی تقریب اسلام آباد کے کنونشن سینٹر میں منعقد ہوئی جس میں صدر مملکت عارف علوی نے پرچم لہرایا جبکہ تقریب میں سینیٹ کے چیئرمین صادق سنجرانی اور قومی اسمبلی کے اسپیکر اسد قیصر سمیت پارلیمنٹ کے اراکین، ملک کی سول اور اعلی فوجی قیادت جبکہ غیر ملکی سفیر اور شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔یوم آزادی کی مناسبت سے کراچی میں مزار قائد جبکہ لاہور میں مفکر پاکستان علامہ اقبال کے مزار پر گارڈز تبدیلی کی پروقار تقریب کا انعقاد ہوا۔ مزار قائد پر اعزازی گارڈ کی تبدیلی کی پروقار تقریب ہوئی، پاک بحریہ کے کیڈٹس نے گارڈز کے فرائض سنبھال لئے ، کیڈٹس نے مارچ پاسٹ کیا، پریڈ کمانڈر کے فرائض لیفٹیننٹکمانڈر محمد فیضان نے انجام دیئے۔ مہمان خصوصی نے گارڈ کا معائنہ کیا۔ بابائے قوم محمد علی جناح کو سلام پیش کیا گیا۔ کیڈٹس قدم سے قدم ملاتے ہوئے گارڈ سپاٹ پر پہنچے، مہمان خصوصی کموڈور عرفان تاج نے مزار پر پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی۔ کموڈور عرفان تاج نے مہمانوں کی کتاب میں اپنے تاثرات بھی قلمبند کئے۔مزار اقبال پر پاک فوج کے چاک و چوبند دستے نے رینجرز کے گارڈز کو تبدیل کر کے اعزازی گارڈز کے فرائض سنبھال لیے۔جنرل آفیسر کمانڈنگ میجر جنرل یوسف نے بطورمہمان خصوصی شرکت کی۔ انہوں نے مزار پر پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی، مہمانوں کی کتاب میں اپنے تاثرات بھی قلم بند کیے۔گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور اور وزیراعلی عثمان بزدار نے مزار اقبال پر حاضری دی، انہوں نے مزار پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانی کی۔ یوم آزادی کے سلسلہ میں دن بھر تقریبات کا سلسلہ جاری رہا ۔ مختلف مقامات پر ریلیاں نکالی گئیں جس میں شرکاءکشمیریوں سے اظہار یکجہتی کےلئے نعرے لگاتے رہے ۔ سیاسی و مذہبی جماعتوں کی جانب سے پرچم کشائی کی تقریبات کا انعقاد کیا گیا جس میں پاکستان کے ساتھ کشمیر کے پرچم بھی لہرائے گئے ۔مختلف سرکاری محکموں میں بھی یوم آزادی کے سلسلہ میں تقریبات منعقد کی گئیں اور محکموں کے سربراہان کی جانب سے قومی اور کشمیر کے پرچم لہرائے گئے ۔ یوم آزادی کی تقریبات میں کیک بھی کاٹے گئے ۔ لاہور ہائی کورٹ میں یوم آزادی کی تقریب منعقد ہوئی جس میں چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ سردار محمد شمیم خان نے دیگر ججز کے ہمراہ عدالت عالیہ کی عمارت پر پرچم لہرایا۔لاہور ہائیکورٹ میں پاکستان کی آزادی کے 72 سال مکمل ہونے پر پروقار تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ سردار محمد شمیم خان نے پرچم کشائی کی ۔ا نہوں نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم سب یہ بات جانتے ہیں کہ آزادی ایک نعمت ہے اور ہم اس نعمت کیلئے اپنے رب ذوالجلال کے سامنے سربسجود ہیں اور اس آزاد ریاست کیلئے جدوجہد کرنے پر ہم بابائے قوم قائد اعظم محمد علی جناح، شاعر مشرق ڈاکٹر علامہ محمد اقبال، ان کے ہم عصروں اور اس ساری جدوجہد میں قربانیاں دینے والے اپنے بزرگوں کو سلام پیش کر تے ہیں۔پاکستان کی جانب سے کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لئے آج بھارت کے یوم آزادی کے دن کو یوم سیاہ کے طو رپر منایا جائے گا۔ اس سلسلہ میں لاہور میں گورنر ہاﺅس کے مرکزی دروازے سے پنجاب اسمبلی تک ریلی نکالی جائے گی جس میں گورنر پنجاب چوہدری محمد سروراور وزیر اعلی پنجاب سمیت صوبائی وزرائ، اراکین اسمبلی ، مختلف سیاسی جماعتوں، سول سوسائٹی کے افراد شریک ہوں گے ۔ یوم آزادی کے سلسلہ میں وفاقی دارالحکومت ،چاروں صوبائی دارالحکومتوں ، ملک کے مختلف شہروںاور آزاد کشمیر میں بھی یوم آزادی کی تقریبات کا انعقاد کیا گیا جس میں کشمیریوں سے بھرپور یکجہتی کا اظہار کیا گیا ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*