یوم آزادی آج کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے طور پر منایا جائےگا

14 August Independence Day of Pakistan

اسلام آباد( اے این این ) 72واں یوم آزادی آج کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے طور پر منایا جائے گا،وزیر اعظم عمران خان مظفر آباد کا دورہ ،آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کریں گے،وفاق میں دن کا آغاز31صوبوں میں21,21توپوں کی سلامی سے ہوگا،مساجد میں ملک کی ترقی ،خوشحالی اور مقبوضہ کشمیر کی آزادی کے لئے دعائیں کی جائیں گی،8بجکر58منٹ پر ایک منٹ کی خاموشی ہوگی ،ملک بھر میں سیمینارز ،ریلیوں اور پرچم کشائی کی تقریبات کا انعقاد ہوگا، پاکستان کے ساتھ کشمیر کا پرچم لہرایا جائے گا،کیک کاٹے جائیں گے،قائد اعظم اور شاعر مشرق کے مزارات پر گارڈز کی تبدیلی ہو گی۔تفصیلات کے مطابق ملک بھر اور آزاد کشمیر میں 72واں یوم آزادی ملی جوش و جذبے اور عقیدت و احترام کے ساتھ مقبوضہ کشمیر کے عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور پر منایا جائے گا۔دن کا آغاز شاہ فیصل مسجد سمیت ملک بھر کی مساجد میں ملک کی ترقی،استحکام اور خوشحالی سمیت مقبوضہ کشمیر کی آزادی کےلئے دعاو¿ں کے ساتھ ہوگا۔اذان فجر کے بعد وفاقی دارالحکومتوں میں 31اور صوبائی حکومتوں میں 21,21توپوں کی سلامی دی جائے گی۔صبح8بجکر 58منٹ پر سائرن بجائے جائیں گے اور ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے گی جس کے بعد قومی ترانہ پیش کیا جائے گا۔یوم پاکستان کی مناسبت سے ملک کے چھوٹے بڑے شہروں اور دیہی علاقوں ،سرکاری اور نجی سکولوں میں سیمینارز کے ساتھ ریلیوں اور مظاہروں کا انعقاد کیا جائے گا۔ مختلف سیاسی اور سماجی تنظیموں کی جانب سے سیمینارز اور کیک کاٹنے کی تقریبات کا اہتمام کیا گیا ہے ۔ملک بھر میں سرکاری اور نجی عمارتوں میں قومی پرچم لہرایا جائے گا۔اس بار مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے بھارت کی متنازعہ قانون سازی اور وادی میں مظالم کےخلاف احتجاج اور کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کےلئے قومی پرچم کے ساتھ کشمیر کا جھنڈا لہرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ملک میں سرکاری طور پر پرچم کشائی کی تقریبات ہوں گی۔مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کے باعث یوم آزادی سادگی کے ساتھ منانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ اسلام آباد میں تحریک انصاف کی یکجہتی کشمیر ریلی کی تیاریاں مکمل کرلی گئیں، ‘کشمیر بنے گا پاکستان’ کا نعرہ سب کی توجہ کا مرکز بن گیا۔یوم آزادی کے سلسلے میں اسلام آباد کی مرکزی شاہراہیں پاکستان اور کشمیر کے پرچموں سے سجائی جا رہی ہیں۔ شہریوں نے بھی چودہ اگست کو کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے منسوب کرنے کے حکومتی فیصلے کی تائید کی ہے۔تحریک انصاف کی جانب سے راولپنڈی کے لیاقت باغ سے ڈی چوک تک کشمیر ریلی نکالی جائے گی۔ جس میں وفاقی وزرا اور اہم سیاسی شخصیات شریک ہوں گی۔ ڈی چوک کو خصوصی طور پر سجایا گیا ہے ۔یوم آزادی پر دیگر جماعتوں اور تنظیموں کی جانب سے بھی ریلیوں اور تقاریب کا اہتمام کیا گیا ہے جن میں مظلوم کشمیریوں کے ساتھ بھرپور یکجہتی کا اظہار کیا جائے گا۔پاکستان تحریک انصاف پرامید ہے کہ اسلام آباد کے شہری بڑی تعداد میں یوم یکجہتی کشمیر ریلی میں حصہ لیں گے اور دنیا کو پیغام دیں گے کہ پاکستانی عوام مقبوضہ کشمیر کے مظلوم بھائیوں کے ساتھ ہیں۔ یوم آزادی کے موقع پر کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کےلئے وزیر اعظم عمران خان مظفر آباد کا دورہ کریں گے جہاں وہ آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کریں گے ۔حکومت پاکستان نے بھارتی اقدامات کے فیصلے کو یکسر مسترد کرتے ہوئے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے واقعے کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔اب حکومت پاکستان کی جانب سے سوشل میڈیا پر جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کل یوم آزادی کے موقع پر مظفرآباد جائیں گے اور آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کریں گے۔وزیراعظم ہاﺅس کے مطابق وزیراعظم عمران خان چودہ اگست کی صبح ہیلی کاپٹر کے ذریعے آزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفر آباد جائیں گے، اس موقع پر کئی وفاقی وزرا بھی ان کے ہمراہ ہوں گے۔وزیراعظم عمران خان آزادکشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کریں گے اور وہاں آل پارٹیز کانفرنس سمیت دیگر کشمیری رہنماو¿ں سے ملاقاتیں بھی کریں گے۔ مظفر آباد میں وزیر اعظم کو گارڈ آف آنر دیا جائے گا، وزیر اعظم اسپیکر چیمبر میں آل پارٹیز حریت کانفرنس اور کشمیری رہنماوں سے ملاقات کریں گے جس کے بعد وزیر اعظم قانون ساز اسمبلی آزاد جموں کشمیر میں جائیں گے جہاں وزیراعظم کی آمد پر پاکستان اور آزاد کشمیر کے ترانے بجائیں جائیں گے ۔وزیر اعظم آزاد جموں کشمیر اپوزیشن لیڈر اور اسپیکر اسمبلی بھی اجلاس میں خطاب کریں گے، وزیر اعظم خطاب کے بعد اسلام آباد روانہ ہو جائیں گے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*