ایران کی پرامن جوہری سرگرمیاں بدستور جاری ہیں , علی اکبر صالحی

تہران (این این آئی)ایران کے ایٹمی توانائی کے ادارے کے سربراہ علی اکبر صالحی نے کہا ہے کہ ایران جب چاہے 300کلو تک افزودگی کی بندش کو نظر انداز کر کے ہر سطح پر یورینیئم کی افزودگی شروع کر سکتا ہے ۔میڈیا رپورٹ کےم طابق فردو ایٹمی تنصیبات کا معائنہ کرنے کے موقع پرانہوںنے کہا کہ ایران کی پرامن جوہری سرگرمیاں بدستور جاری ہیں اور اس سلسلے میں ترقی کا عمل نہیں رکا ۔علی اکبر صالحی نے ایٹمی معاہدے پر عملدرآمد میں ہر طرح کی غفلت پر مغرب کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ فردو کی ایٹمی تنصیبات میں اس وقت ایک ہزار چواّلیس سینٹری فیوج مشینیں موجود ہیں اور ایران جب بھی ارادہ کرے گا فردو میں یورینیئم کی بیس فیصد افزودگی کا عمل دوبارہ شروع کر سکے گا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*