سیف واٹر پروجیکٹ کے 8ارب روپے ناقص پالیسی کی وجہ سے ضائع

سینیٹ سٹینڈنگ کمیٹی برائے ورکس اینڈ ہاﺅسنگ کے چیئرمین سینیٹر کبیر احمد محمد شہی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں غربت ،بےروزگاری ،امن وامان سے بڑھ کر زیادہ بڑامسئلہ خشک سالی اور پینے کے پانی کی عدم دستیابی ہے جہاں بلوچستان پہلے سے کم ترقی یافتہ اور مسائل سے دوچار ہے اب بارشیں نہ ہونے سے زیر زمین پانی کی سطح خطرناک حد تک نیچے گرنا مستقبل میں کافی مشکلات پیدا کرے گا ۔انہوں نے کہا کہ ماضی میں کوئٹہ میں سیف واٹر پروجیکٹ کے 8ارب روپے ناقص پالیسی کی وجہ سے ضائع ہوگئے اور خطیر رقم خرچ ہونے کے باوجود عوام کو ثمرات نہیں ملے ہیں آئندہ ایسا نہیں ہونے دینگے ۔
چیئرمین سینٹ سٹینڈنگ کمیٹی برائے ورکس اینڈ ہاﺅسنگ سینیٹر کبیرا حمد محمد شہی کا مذکورہ بیان بلاشبہ خوش آئند ہے کہ انہوں نے سیف واٹر پروجیکٹ کے 8ارب روپے ناقص پالیسی کی وجہ سے ضائع ہونے کی بات کرکے سابق حکومتوں کی پوزیشن واضح کردی ہے جنہوں نے اتنے بڑے پروجیکٹ کو ضائع کرکے بلاشبہ صوبائی دارالحکومت کے عوام کےساتھ بہت بڑی نا انصافی کی ہے جس کا خمیازہ اب عوام پانی کی شدید قلت کی صورت میں بھگت رہے ہیں یہ بلاشبہ قابل مذمت اقدام ہے ۔
ہم سمجھتے ہیں کہ چیئرمین سینیٹ سٹینڈنگ کمیٹی برائے ورکس اینڈ ہاﺅسنگ کا اپنے مذکورہ بیان میں آئند ایسا کوئی اقدام نہ کرنے کی بات کرکے بلوچستان سے اپنی والہانہ محبت کا برملا اظہار کیا ہے کیونکہ ان ناروا اقدامات کی وجہ سے بلوچستان کو پسماندگی میں ہی رکھا گیا ۔
اس میں کوئی شک نہیں کہ بلوچستان میں اس وقت خشک سالی اور پینے کے پانی کی عدم دستیابی ہے کیونکہ بارشیں نہ ہونے کے باعث یہ صورتحال پیدا ہوئی ہے جس کیو جہ سے پانی کی سطح خطرناک حد تک گر گئی ہے اور جو مستقبل میں مزید مشکلات پیدا کرسکتی ہے ۔
اس لئے یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ صوبے کے علماءکرام اور عوام کو صوبے میں بارشوں کے لئے اللہ تعالیٰ سے گڑ گڑا کر دعائیں مانگنی چاہئیں تاکہ صوبے میں پایا جانے والی شدید خشک سالی کا خاتمہ ہوسکے ۔اس کےساتھ ساتھ وفاقی حکومت کو بھی صوبے میں ڈیمز بنانے کےلئے فنڈز دینے چاہئیں تاکہ ان میں بارشوں کا پانی ذخیرہ کرکے اس کو زراعت کےلئے استعمال کیا جاسکے کیونکہ جب تک ایسا نہیں ہوگا پانی کا بحران مزید شدت اختیار کر جائے گا جس سے لوگوں کو صوبے سے نقل مکانی کرنے پر مجبور ہونا پڑے گا جوکہ بلاشبہ بہت ہی خطرناک صورت ہوگی ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*