پاکستان کی ترقی میں بد عنوانی سب سے بڑی رکاوٹ ہے،صدر مملکت

اسلام آباد(نیوز ایجنسیاں )صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی نے کہا ہے کہ پاکستان کی ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ بد عنوانی ہے، میرے نزدیک بد عنوانی پوری انسانیت پر حملہ ہے۔، میری ساری زندگی کوشش رہی کہ کرپشن کے خلاف متحرک رہوں، مشرقی پاکستان کے علیحدہ ہونے میں استحصال کم بدعنوانی زیادہ تھی، ایک وقت تھا لوگوں میں آگاہی نہیں تھی کہ کرپشن کا سیاست میں کیا نقصان ہے، پاکستان کی ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ بد عنوانی ہے، مجھے اسپتال میں کرپشن روکنے کمیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تھا۔وہ اتوار کو تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ قائد اعظم نے کہا کہ اپنا کام ہمیشہ ایمانداری اور مخلص ہو کر کرو۔ ضمیر کے علاوہ دنیا میں کوئی بڑی چیز نہیں ہے میری کوشش ہے کہ کرپشن کے خلاف متحرک رہوں۔ زندگی بھر قوم میں کرپشن کے خلاف شعور اجاگر کرنے میں حصہ ڈالا۔ مشرقی پاکستان کے علیحدہ ہونے میں استحصال کم بدعنوانی زیادہ تھی۔ کوئی معاشرہ بدعنوانی سے پاک ہونے کا دعویٰ نہیں کرسکتا۔ نبی کریم کی صداقت پر اس دور میں بھی لوگ یقین رکھتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ معاشرے میں خوف خدا ہو تو کسی قانون یا عدالت کی ضرورت ہی نہیں رہے۔ قانون پر عمل نہ ہونے سے معاشرے پر منفی اثرات مرتب ہوئے۔ رسول کے دور میں بھی کرپشن پر سزائیں ہوتی تھیں۔ کرپشن عام آدمی کی زندگی پر اثر انداز ہوتی ہے۔ کرپٹ انسان اپنا ثبوت نہیں چھوڑتا لیکن اثاثہ جات سے پکڑا جاتا ہے ۔ ملک میں تجاوزات قانون پر عمل درآمد کی کمزوری کی وجہ سے ہوئیں۔ قیادت کی بنیاد امانت اور سچائی ہے بدعنوان عناصر کے اثاثوں کے حوالے سے پوچھا جانا چاہئے۔ غیر جانبداری‘ اہلیت اور حکمت بدعنوانی کے خاتمے میں اہم ہیں۔ صدر مملکت نے کہا کہ کرپشن کے معاملات کو روکنا ہوگا۔ آنے والی نسلوں کے لئے بدعنوانی سے پاک معاشرہ کا ایجنڈا بہت اہم ہے۔ پاکستان میں جب زلزلہ آیا تو قوم نے ملک کر سب کی مدد کی پاکستان کی قوم میں احساس ہے۔ پاکستان میں کرپشن کو ختم کرنا ہوگا نئے پاکستان اور حکومت سے بہت امیدیں ہیں۔ نیا پاکستان وہ ہے جس میں تعلیم کا حصول‘ صحت اور میرٹ سب کے لئے ممکن ہو۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*