پیٹرولیم کی قیمتوں میں اضافے کا اعلان

حکومت نے یوم مئی کے موقع پر ایک بار پھر پیٹرولیم کی قیمتوں میں اضافہ کردیا اس طرح پیٹرول ایک روپے 70پیسے ہائی سپیڈ ڈیزل 2روپے 31پیسے لائٹ ڈیزل 3روپے 55پیسے جبکہ مٹی کا تیل 3روپے 41پیسے فی لیٹر مہنگا کردیا گیا ۔
حکومت کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے نے ایک بار پھر غریب عوام کو مہنگائی کے دلدل میں پھنسا دیا ہے کیونکہ اس سے قبل بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ہوتا رہا ہے لیکن یہ اضافہ رکنے کا نام نہیں لے رہا جس کی وجہ سے مہنگائی کا جن بوتل سے باہر نکل آیا ہے حکومت کی جانب سے یوم مزدور کےموقع پر غریب عوام کو یہ تحفہ دینا قابل مذمت اقدام ہے جیسا کہ یہ حقیقت ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات مہنگی ہونے سے تمام اشیاءخوردونوش مہنگی ہوجاتی ہےں لیکن حکومت اس جانب کوئی توجہ نہیں دے رہی اس نے ہر ماہ منی بجٹ پیش کرنے کا سلسلہ جاری کررکھا ہے حکومت کے اس نئے طریقہ کار سے عوام اب وفاقی بجٹ پر کوئی توجہ نہیں دیتے کیونکہ ان پر ہرماہ منی بجٹ مسلط کیا جاتا ہے جو پیٹرول بم کی صورت میں ہوتا ہے موجودہ حکومت اس سے پہلے مسلسل تین بار پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرچکی ہے صرف پچھلے ماہ قیمتوں میں معمول کمی کی گئی جو اونٹ کے منہ میں زیر ے کے مترادف ہے ۔
اس لئے یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت کو ہرماہ بجٹ پیش کرنے سے اجتناب کرنا چاہےے کیونکہ یہ اقدام غریب عوام کیساتھ بہت بڑی زیادتی کے مترادف اقدام ہے ۔جس کی وجہ سے غریب عوام مہنگائی میں اضافے کے باعث دو وقت کی روٹی کےلئے پریشان ہیں ان کے چولہے ٹھنڈے پڑ گئے ہیں جوکہ حکومت کےلئے بلاشبہ ایک بڑالمحہ فکریہ ہے کیونکہ عوام کو ریلیف فراہم کرنا حکومت کا کام ہے لیکن وہ اس میں ناکام نظر آرہی ہے جوکہ بہت ہی افسوسناک بات ہے جس پر حکومت کو غور کرنے کی اشد ضرور ت ہے کیونکہ یہ عوام کے ذاتی مفاد کا مسئلہ ہے ۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*