تازہ ترین

یہودیوں کو قبلہ اول میں خاموش دعا کی اجازت دینا قابل مذمت ہے، ترکی

انقرہ (م ڈ)ترکی کی وزارت خارجہ نے اسرائیلی ریاست کے اس عدالتی فیصلے کی سخت مذمت کی ہے جس میں یہودیوں کو مقبوضہ شہر القدس میں مسجد اقصی میں خاموش دعا کی اجازت دی گئی ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ترکی کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ ہم اسرائیل کی ایک عدالت کے فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہیں جس میں یہ دعوی کیا گیا ہے کہ یہودیوں کو مسجد اقصی میں خاموشی سے عبادت کرنے کا حق ہے۔انہوں نے زور دیا کہ اس فیصلے کو مدنظر رکھنا چاہیے کہ اس سے جنونی حلقوں کی حوصلہ افزائی ہو گی جو مسجد اقصی کے تاریخی اسٹیس کوخراب کرنے کی کوشش کر رہے ہیں اور نئی کشیدگی کا راستہ کھولیں گے۔ترکی کی وزارت خارجہ نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ اسرئیل کے اس غلط اور غیر قانونی فیصلے اور مسجد اقصی کے خلاف تمام اشتعال انگیزی کو مسترد کریں۔ترکی کی وزارت خارجہ نے اسرائیلی ریاست کے اس عدالتی فیصلے کی سخت مذمت کی ہے جس میں یہودیوں کو مقبوضہ شہر القدس میں مسجد اقصی میں خاموش دعا کی اجازت دی گئی ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*