ہندوستان اور اسرائیل نوازشریف کےساتھ ہیں،عمران خان

PM Imran Khan

اسلام آباد(آئی این پی)وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ پوری کوشش ہے نوازشریف کو واپس لا کر جیل میں ڈالیں ، اقتدار میں نہ بھی ہوں یہ واپس آئے تو قوم کو سڑکوں پر نکالوں گا ،ان چوروں کو واپس اقتدارمیں نہیں آنے دوں گا، کیپٹن(ر) صفدر کی گرفتاری اور آئی جی کا معاملہ کامیڈی ہے ، چھوٹے موٹے مقدمے کر کے ان لوگوں کو ہیرو بنایا جا رہا ہے ،بھارت اور اسرائیل نوازشریف کے ساتھ ہیں ،اسرائیل اور بھارت کی لابیاں امریکہ میں ایک ساتھ کام کرتی ہیں ، بھارتی میڈیا پروپیگنڈا کر رہا ہے کہ پاکستان میں خانہ جنگی شروع ہو گئی ہے ، عمران خان کو نکالا جا رہا ہے، بھارتی میڈیا چوہے نوازشریف کو ہیرو بنا کر پیش کر رہا ہے، بھارتی میڈیا پاک فوج کی برائیاں اور نوازشریف کی تعریفیں کر رہا ہے ، حسین حقانی جیسا گھٹیا آدمی باہر بیٹھ کر ان لوگوں کےلئے کام کر رہا ہے ، اپوزیشن سڑکوں پر دباﺅ ڈالے یا استعفے دے میں تیار ہوں ، دوبارہ الیکشن کرانا چاہتے ہیں تو اس کےلئے بھی تیار ہوں ،یہ بات کچھ اور کر رہے ہوتے ہیں اور اندر سے این آر او مانگ رہے ہوتے ہیں، عام انتخابات دوبارہ ہوئے تو واضح اکثریت لے کر رہوں گا ،سینیٹ انتخابات کےلئے تیاری کر رہے ہیں ،راوی سٹی اور بنڈل آئی لینڈ، یہ پاکستان کےلئے گیم چینجر ثابت ہوں گے،،میرا اور آرمی چیف کا ایک ہی مقصد ہے کہ پاکستان بہتر ہو ، پہلی مرتبہ سول عسکری تعلقات اچھے ہیں ۔جمعہ کو نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہمارے ملک میں یہ ہورہا ہے کہ لوگ عوام سے کئے گئے وعدوں کےلئے نہیں بلکہ فیکٹریاں ،لندن میں فلیٹ اور پیسے بنانے کےلئے آتے ہیں ،افریقہ ،ایشیا کے ترقی پذیر ممالک کی بدقسمتی رہی ہے کہ صاحب اقتدار لوگوں کے نام پر آئے اور مال بنانا شروع کیا ، اپنے بچے بھی تیار کئے ، انہوں نے بھی مال بنانا شروع کردیا ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے لئے چیلنج ہے کہ اس ملک کی اصلاح کر کے تمام وسائل استعمال کریں اور اس کو وہ ملک بنائیں جو لوگوں نے امداد مانگنے کی بجائے لوگوں کو امداد اور قرضے دیے ۔وزیراعظم نے کہا کہ حضور پاک نے مدینہ کی ریاست میں غریب طبقے کو اوپر لانے کو ترجیح دی ، مدینہ کی ریاست میں قانون کی بالادستی تھی ۔انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے جو لوگ دوسرے شہروں سے آتے ہیں ان کےلئے پناہ گاہیں بنائیں ، ہم یہ پناہ گاہیں ہر جگہ بنائیں گے ،ہم ہیلتھ کارڈ لائے ۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ خیبرپختونخوا حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ سب کو ہیلتھ کارڈ فراہم کریں گے ، پنجاب کے بھی سارے غریبوںکو ہیلتھ کارڈ کی فراہمی کےلئے سفارش کروں گا ، پہلی بار تنخواہ دار طبقے کےلئے گھر بنا رہے ہیں جو ایک لاکھ نئے گھر بنیں گے ، ہر گھر پر تین لاکھ روپے حکومت دے گی، بینکوں کو پابند کریں گے 5 فیصد شرح سود پر گھروں کے لیے قرض دیں، شرح سود بہت زیادہ بڑھی تو 7 فیصد پر گھروں کے لیے قرض دیں گے، شرح سود نیچے گئی تو گھروں کے لیے قرض میں بھی شرح سود کم کریں گے یہ انقلاب ہے،فار انکلوژر لاءابھی پاس ہوا ہے ، بنک اب گھر کی تعمیر کےلئے قرضہ دیں گے ، اب غریب طبقہ اپنا گھر بنا سکے گا ۔انہوں نے کہا کہ جنگ چل رہی ہے کہ جو لوگ صاحب اقتدار رہے وہ کہتے ہیں ہم قانون سے بالاتر ہیں ، ہم جتنی مرضی چوری کریں ہمیں ایک کوئی ہاتھ نہیں لگا سکتا، پانچ رکنی بنچ کی جے آئی ٹی بھی فیصلہ دے تو یہ نہیں مانتے ، ان لوگوں نے ملک کو اس حال میں پہنچایا ، ان کا ایک ہی ایجنڈا ہے کہ اتنا دباﺅ ڈالو کہ یہ ہماری جان چھوڑ دیں ، یہ سارا شور این آر او کےلئے ہے ، لوگوں کو ملکی معیشت کی کوئی فکر نہیں ،اسحاق ڈار ،شہبازشریف کا بیٹا باہر بھاگے ہوئے ہیں ، نوازشریف کے دونوں بیٹے باہر ہیں اور نوازشریف بھی باہر بھاگ گئے ہیں ،لندن کی سب سے مہنگی جگہ پر ان کے محلات ہیں ، انہیں پتہ ہے یہ جواب نہیں دے سکتے اس لئے بھاگے ہوئے ہیں،ان سے پوچھو بیٹے کیوں بھاگے تو کہتے ہیں وہ برطانوی شہری ہیں ،پانامہ لیکس میں آیا لندن جائیداد کی بینیفشری مریم نواز ہیںاور مریم نواز ٹی وی پر کہتی تھی لندن چھوڑو میری تو پاکستان میں بھی کوئی جائیداد نہیں ۔انہوں نے کہا کہ جب ان لوگوں سے جواب دینے کا کہیں تو کہتے ہیں ہمارے خلاف سازش ہے ، ورجن آئی لینڈ اتھارٹی نے لیٹر بطور ثبوت دیا کہ مریم نواز لندن فلیٹ کی مالکہ ہیں ، یہ چاہتے ہیں کہ عمران خان پر دباﺅ ڈالیں گے تو یہ چلا جائے گا انہیں پتہ نہیں میں نے ساری عمر پریشر لینا ہی سیکھا ہے ،کنٹینر پر چڑھا سارا ٹولہ میری تعریف کرے تو توہین سمجھوں گا ، ان کا میری تعریف کا مطلب جیسے میں نے بھی کوئی جرم کیا ہو، ان سب کو جانتا ہوں یہ کیا تھے اور اب کیا بن گئے ، ان کا ون پوائنٹ ایجنڈا ہے کہ عمران خان پر دباﺅ ڈالو کہ ہماری جان چھوڑ دے ، دس سال پہلے کہا تھا یہ سب اکٹھے ہوں گے ، قوم سے پہلے خطاب میں بھی کہا تھا یہ سب اکٹھے ہوں گے ۔وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن کی ساری کوشش صرف بلیک میل کرنے کےلئے ہے ،ان کی کوشش تھی ملک ڈیفالٹ کریں تا کہ عمران خان چلا جائے ،شہبازشریف نے نہیں آنا تھا لیکن کورونا کی وجہ سے بھاگا بھاگا پاکستان آیا ، شہبازشریف کے خلاف ایسے شواہد مل گئے ہیں کہ وہ اب بچ نہیں سکے گا ، ان کے خلاف دستاویزی ثبوت موجود ہیں ۔انہوں نے کہا کہ فیٹف کے معاملے پر اپوزیشن نے این آراو لینے کےلئے بلیک میلنگ کی لیکن یہ بلیک میلنگ میں ناکام ہوئے تو باپ بیٹی باہر نکلے ہیں ،جب نوازشریف بیمار تھا اچانک باہر نکل آیا ، بیٹی بھی اس کی طرح شروع ہوگئی ، اپوزیشن کے جلسے سے میری پارٹی کے لوگ بھی گھبرا جاتے ہیں ، میرے نادان دوست بھی گھبرا گئے میں نے کہا کہ جلسے کرنے دو، پی پی پی اور نون لیگ کو اڑھائی ارب ڈالر قرض کی قسط ادا کرنا ہوتی تھی ہم دس ارب ڈالر کی قسط ادا کر رہے ہیں ۔ وزیراعظم نے کیپٹن(ر) صفدر کی گرفتاری اور آئی جی کے معاملے کو کامیڈی قراردیتے ہوئے کہا کہ چھوٹے موٹے مقدمے کر کے ان لوگوں کو ہیرو بنایا جا رہا ہے ،بھارت اور اسرائیل نوازشریف کے ساتھ ہیں ،اسرائیل اور بھارت کی لابیاں امریکہ میں ایک ساتھ کام کرتی ہیں ، بھارتی میڈیا پروپیگنڈا کر رہا ہے کہ پاکستان میں خانہ جنگی شروع ہو گئی ہے ، عمران خان کو نکالا جا رہا ہے، بھارتی میڈیا اس چوہے نوازشریف کو ہیرو بنا کر پیش کر رہا ہے، بھارتی میڈیا پاک فوج کی برائیاں اور نوازشریف کی تعریفیں کر رہا ہے ، حسین حقانی جیسا گھٹیا آدمی باہر بیٹھ کر ان لوگوں کےلئے کام کر رہا ہے ۔ عمران خان نے کہا کہ جنرل باجوہ مجھے بتاتے رہتے تھے کہ یہ لوگ مجھ سے ملنے آتے رہتے ہیں ، میرے خیال میں جنرل باجوہ کی ان سے ملاقاتیں غلطی تھی ، نوازشریف کی واپسی کےلئے برطانیہ جانا پڑا تو خود جاﺅں گا ، ضرورت پڑی تو برطانوی وزیراعظم بورس جانسن سے ملاقات کروں گا ،یہ پچھلے دروازے سے کن کن سے ملتے ہیں سب رپورٹیں آتی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مقروض گھر کو ٹھیک کریں گے تو گھر والے تکلیف سے گزریں گے ، مدینہ کی ریاست کے پہلے پانچ سال دیکھ لیں کتنی مشکل سے گزرے تھے ، تیس سال سے جو بیوروکریسی نے گند ڈالا کیا بٹن دبا کر ٹھیک ہوجائے گا؟قوم کو کہتا ہوں میرا ساتھ دیں تا کہ ان مسائل کو حل کر سکوں ۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ نون لیگ ،پیپلزپارٹی نے پی آئی اے میں بندے بھرتی کر کے تباہ کردیا ، ہماری بجلی بھارت سے 25فیصد مہنگی ہے ، پاکستان میں بجلی مہنگی بن رہی ہے اور سستی فروخت کی جا رہی ہے ، مہنگی بجلی کے کنٹریکٹ پر ہم نے دستخط نہیں کئے ،مہنگے کنٹریکٹ انہوں نے کئے اور بوجھ ہم پر ڈال دیا ، بجلی کے مہنگے کنٹریکٹ کر کے انہوں نے پیسہ بنایا ، آج گیس چالیس فیصد سستی مل رہی ہے لیکن ہم نہیں لے سکتے ،انہوں نے کہاکہ ماضی کی حکومت نے ہمیں گیس کے کنٹریکٹ میں پھنسایا ہوا ہے ، کوئی نہیں کہہ سکتا کہ کتنی دیر اقتدار میں ہوں سب اللہ کے ہاتھ میں ہے ، اقتدار میں نہ بھی ہوں یہ واپس آئے تو قوم کو سڑکوں پر نکالوں گا ،ان چوروں کو واپس نہیں آنے دوں گا۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہمارے ملک کی معیشت بہتر ہو رہی ہے ،29فیصد ایکسپورٹ بڑھی ہے دو بڑے شہر بنا رہے ہیں ،راوی سٹی اور بنڈل آئی لینڈ، یہ پاکستان کےلئے گیم چینجر ثابت ہوں گے ، ملک میں چالیس ارب ڈالر کا فارن ایکسچینج آئے گا ، یہ سارا پاکستان کا فائدہ ہے ،سندھ حکومت کو ہمارا شکریہ ادا کرنا چاہیے ،آفر ہے مل کر کام کر لیں ، بیرون ملک پاکستانی بنڈل آئی لینڈ میں سرمایہ کریں گے ، افسوس ہے سندھ حکومت نے بنڈل آئی لینڈ کی این او سی دے کر واپس لی،بنڈل آئی لینڈ کا فائدہ سندھ کو اور راوی سٹی کا فائدہ پنجاب ہوگا ،میرا اور آرمی چیف کا ایک ہی مقصد ہے کہ پاکستان بہتر ہو ، پہلی مرتبہ سول عسکری تعلقات اچھے ہیں ،اپوزیشن کا مقصد عمران خان کو گرانا ہے یہ بھی کوئی نظریہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ کورونا وباءسے متعلق دنیا پاکستان کے اقدامات کی تعریف کر رہی ہے ، امریکہ ، ڈبلیو ایچ او سمیت عالمی ادارے پاکستان کی تعریف کر رہے ہیں ، سب کہتے ہیں پاکستان نے معیشت کو بچا لیا ، وباءپر کنٹرول حاصل کیا ، ہماری تعریفیں سن کر اپوزیشن کو خطرہ ہوگیا کہ صورتحال بہتری کی طرف جا رہی ہے ، برآمدات بڑھنے ، معیشت بہتر ہونے سے اپوزیشن کو تکلیف ہے ،اپوزیشن جانتی نہیں اس کا واسطہ اس شخص سے پڑ گیا ہے جس نے زندگی میں صرف مقابلہ کیا ہے ، کوئی جائیداد نہیں بنائی اور نہ ہی کرپشن یا چوری کی ہے ، نوازشریف کی واپسی سے متعلق برطانوی حکومت سے بات کر رہے ہیں ، نوازشریف جھوٹ بول کر گئے ، بیمار ہوں ، لندن جا کر علاج نہیں کرایا، ہماری پوری کوشش ہے کہ نوازشریف کو ڈی پورٹ کرائیں ،مجھے پتہ ہونا چاہےے تھا کہ نوازشریف نے ساری زندگی جھوٹ بولا ہے ۔انہوں نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ کو کہا سات ارب روپے کا ضمانتی بانڈ مانگیں ،عدلیہ نے ہماری بات نہیں مانی اور شہبازشریف کی گارنٹی لے لی ، شہبازشریف کی گارنٹی سے کیا ہوگا اس کا مطلب کیا ہے ؟ ، ہماری پوری کوشش ہے نوازشریف کو واپس لا کر جیل میں ڈالیں ، ہم کیوں ملک لوٹنے والوں کو بیرون ملک جانے دیں ۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن سمیت ہر چیز کےلئے تیار ہوں ، این آر او نہیں دوں گا ، ہمیں پتہ ہے نوازشریف نے کس کس صحافی کو پیسے دیے ، غلط عادتیں پڑی ہیں اسی لئے کچھ میڈیا ہاو¿سز غلط اینگلنگ کرتے ہیں ، ایسٹ ریکوری یونٹ نے شریف فیملی کی کچھ جائیدادیں نکالیں باقی کیسز تو سارے پرانے ہیں ، اپوزیشن کی کوشش ہے عمران خان پر دباﺅ ڈالو تا کہ نیب کو ختم کردے ، کرپشن کے خاتمے کےلئے پورا زور لگا رہا ہوں ، ملک میں پچاس سال بعد بڑے ڈیمز پر کام شروع ہوگیا ہے ،اپوزیشن نے کن لوگوں کو پیسہ کھلایا ہمیں سب معلوم ہے ، اپوزیشن جو بھی کرنا چاہتی ہے کرے ہر چیز کےلئے تیار ہوں ، اپوزیشن سڑکوں پر دباﺅ ڈالے یا استعفے دے میں تیار ہوں ، دوبارہ الیکشن کرانا چاہتے ہیں تو اس کےلئے بھی تیار ہوں ،یہ بات کچھ اور کر رہے ہوتے ہیں اور اندر سے این آر او مانگ رہے ہوتے ہیں ، میرا ایک ہی مقصد ہے پاکستان کے معاشی حالات بہتر کرنا ۔انہوں نے کہا کہ الیکشن دوبارہ ہوئے تو واضح اکثریت لے کر رہوں گا ،سینیٹ انتخابات کےلئے تیاری کر رہے ہیں ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*