گرینڈ الائنس کا دھرنا جاری، حکومت اور ملازمین کے درمیان ڈیڈلاک برقرار

Districts_of_Balochistan,_Pakistan_with_district_names

کوئٹہ( این این آئی) گرینڈ الائنس کے زیر اہتمام بلو چستان کی تاریخ میں پہلی بار ملازمین کی سب سے بڑی ریلی نکا لی گئی ملازمین اور حکومت کے درمیان ڈیڈ لاک بر قرار ۔ تفصیلات کے مطابق جمعہ کو گر ینڈ الائنس کے زیر اہتمام تنخوا ﺅں میں 25فیصد اضا فہ اور دیگر مطا لبا ت کے حق میں ملا زمین نے ریلی نکا لی یہ ریلی بلو چستان کی تاریخ میں ملازمین کی سب سے بڑی تھی گرینڈ الائنس کے احتجاجی ریلی کی قیادت کنوینر عبدالمالک کاکڑ، داد محمد بلوچ، عبدالسلام زہری، حاجی حبیب الرحمان مردانزئی ، پروفیسر حمید خان، ماما سلام بلوچ اور دیگر نے کی گر ینڈ الائنس کے زیر اہتمام ریلی عبدالستار ایدھی چوک سے شروع ہوکر پرنس روڈ، جناح روڈ، سرکلر روڈ اور انسکمب روڈ سے ہوتی ہوئی واپس عبدالستار ایدھی چوک پر اختتام پذیر ہو ئی ریلی میں ہزاروں ملازمین شریک تھے جوکہ اپنے مطالبات کے حق میں حکومت کے خلاف نعرے بازی کر رہے تھے ریلی کے دوران شہر میں ٹریفک کا نظام بری طرح متاثرہو گیا سڑکوں پر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں شہر میں ٹریفک مکمل طور پر جام ہو کر رہ گیا واضح رہے کہ گر ینڈ الائنس کے زیر اہتمام ملازمین کے احتجاج کو آج پانچواں روز ہے اور ابھی تک ملازمین اور حکو مت کے درمیان ڈیڈ لاک بر قرار ہے پا نچویں روز گرینڈ الائنس کے احتجاجی دھرنے سے پشتون خواہ ملی عوامی پارٹی کے مرکزی رہنماءنواب ایاز جوگیزئی نے ملازمین سے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ بلوچستان بھر کے ملازمین اپنے جائز مطالبات کےلئے سراپا احتجاج ہیں یہ حکمران بے حس ہیں یہاں لوگ لاشیں رکھ کر ان سے توقع رکھتے ہیں بعد میں ایک ڈی سی مذاکرات کےلئے آتا ہے میں تو کہتا ہوں خدارا ان بے حس حکمرانوں کے سامنے اپنے لاشوں کی تذلیل مت کرو انہوں نے کہاکہ مہنگائی آسمان کو چھو رہی ہے ہر طبقہ مہنگائی کی چکی میں پھس کر رہ گیا ہے نہ جام صاحب کے پاس اور نہ ہی گورنر کے پاس اختیارات ہیں پتہ نہیں کہاں سے انکو فون آئے گا کہ ملازمین کے مطالبات حل کرومیں حکمرانوں سے مطالبہ کرتا ہوں خدارا ان ملازمین کے مطالبات حل کرو فیڈرل گورنمنٹ نے تنخواﺅں میں اضا فے کا علان کر دیا ہے اس غریب صوبے کے غریب ملازمین کا کیا قصور ہے میں ساڑھے چار سال وزیر رہا ہوں میں نے اندر سے سب دیکھا ہے مجھے تو افسوس ہوتا ہے میں اور میری پارٹی دن ہو یا رات آپ کے ساتھ ہے جام کمال صاحب رمضان کا مبارک مہینہ آرہا ہے خدارا ان کے مسائل آج شام یا کل صبح تک حل کرو اس کے بعد ہم مجبور ہو کر پارٹی اجلاس بلا کر پورا بلوچستان جام کرینگے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*