تازہ ترین

کینیڈا میں پاکستانی خا ندان کو کچلنے کا قا بل مذمت وا قعہ

گذشتہ رو زکینڈ ا میں ایک ٹر ک ڈر ا ئیو ر نے ایک پاکستانی خاندا ن کو کچل ڈالا جس کے نتیجے میں 4 افر اد جاں بحق اور ایک بچہ زخمی ہو گیا کینڈ ین وزیر اعظم جسٹن ٹر و ڈو نے وا قعے پر افسو س کا اظہا ر کیا ہے انہوں نے اپنے ٹو یٹ میں کہا ہے کہ لند ن میں پاکستانی کمیو نٹی اور پو رے ملک کے مسلما نو ں کے لیے جان لو ہم آپ کے سا تھ کھڑ ے ہیں پو لیس ذر ائع کے مطا بق با قا عد ہ منصو بہ بند ی سے مسلم فیملی کو ٹا ر گٹ کیا گیا ان افر اد کو مسلما ن ہونے کی وجہ سے نشانہ بنا یا گیا۔
کینڈ ا میں ایک پاکستانی خاندان کو کچلنے کے واقعے کی جتنی مذمت کی جا ئے کم ہے کیونکہ یہ واقعہ خا لصتاً اسلام دشمنی ہے جس کی تصد یق کینڈ ین پو لیس کر چکی ہے کہ یہ وا قعہ با قا عد ہ ایک منصو بہ بند ی کے تحت کیا گیا اس واقعے سے یہ اند از ہ لگایا جا سکتا ہے کہ مغر ب میں اسلا مو فو بیا میں اضا فہ ہو رہا ہے جس کا تدا رک کرنا ضروری ہے اس کے لیے او آئی سی اور اقوام متحدہ کے ادا رو ں کو ان واقعا ت کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ان ممالک کے خلا ف سخت کا روائی کریں جو اسلا مو فو بیا میں ملو ث ہیں۔
افسو س کی با ت یہ ہے کہ اس وقت پو ری دنیا میں مسلما نو ں کو نشانہ بنا یا جارہا ہے فلسطین ،کشمیر ،شام اور دیگر مسلما ن ممالک میں اس وقت مظالم ڈھا ئے جا رہے ہیں اس سلسلے میں مظالم کی انتہا کر دی گئی ان پر زند گی گذ ر انا ناممکن کر دیا گیا ہے اس کے سا تھ سا تھ اب مذکو رہ وا قعے بھی ہونا شر وع ہو گئے ہیں جو کہ انتہائی تشو یشنا ک با ت ہے اگر ان وا قعا ت کی رو ک تھام نہ کی گئی تو دنیا بھر کے مسلما ن اس پر سر اپا احتجا ج ہوں گے اور جس کے اثر ات مغر بی ممالک پر پڑ یں گے۔
پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمو د قر یشی نے بھی گذشتہ رو ز اپنے ایک بیان میں کینڈ ا میں مسلما نو ں کے قتل ہو نے کی شدید مذمت کر تے ہوئے کہاہے کہ جاں بحق ہو نے والو ں کا قصور صر ف مسلما ن ہونا تھا انہوں نے کینڈ ین وزیر اعظم کو وہاں مقیم مسلما نو ں کے تحفظ کو یقینی بنا نے کیلئے اپنا کر دا ر ادا کر نے کے لیے کہا ہے انہوں نے خد شہ ظا ہر کیا گیا ہے کہ اگر اس ٹر ینڈ کو نہ روکا گیا تو اسی طرح بے گنا ہ لو گ نشا نہ بنتے رہیں گے ۔
ہم سمجھتے ہیں کہ جس طر ح پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمو د قر یشی نے مذکو رہ واقعہ کی شد ید مذمت کی ہے با قی تما م مسلما ن ممالک کو بھی ان کی تقلید کر نی چاہیئے اور مغر ب پر یہ وا ضح کر دینا چا ہیئے کہ وہ اسلام دشمن کا رو ائیوں سے با ز رہے اگر وہ ایسا نہیں کر تے تو تما م مسلما ن ممالک کو متحد ہو کر اس کا مقا بلہ کرنا چا ہیئے جوکہ اس وقت انتہائی نا گز یر ہو چکا ہے اگر ان ممالک کو لگا م نہ دی گئی تو یہ اپنی مذمو م کا رو ائیوں میں مز ید اضا فہ کر دیں گے جوکہ مسلما نوں کے مفا د میں نہیں ہے۔
جیسا کہ اوپر درج کیا گیا ہے کہ اس وقت مسلما ن زیر عقا ب ہیں اس لیے ان کو کفا ر کا مقا بلہ کرنے کے لیے ایک پلیٹ فا رم پر اکٹھا ہونا چا ہیئے جو او آئی سی کی شکل میں مو جو د ہے لیکن اس کو فو ری طو ر پر فعال کرنے کی شد ید ضرورت ہے اس لیے تما م مسلما ن ممالک کو سر جو ڑ کو بیٹھنا ہو گا ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*