تازہ ترین

کشمیر کا مسئلہ ،حل کئے بغیر ،ہندوستان کےساتھ تجارت نہیں ہوگی،عمران خان

اسلام آباد (نیوز ایجنسیاں+ م ڈ)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت گلگت بلتستان کی ترقی کےلئے پرعزم ہے، گلگت بلتستان کی ترقی کے لئے تاریخی ترقیاتی پیکج کی منظوری دی جا چکی ہے جس سے علاقے میں تعمیرو ترقی کا نیا باب روشن ہوگا،مواصلاتی روابط کے ضمن میں مختص فنڈز کی تعداد میں موجودہ دور میں ڈھائی سو گنا اضافہ اس عزم اور توجہ کا منہ بولتا ثبوت ہے،گلگت میں مواصلاتی روابط کی بہتری کے حوالے سے بھرپور کوششیں جاری رکھی جائیں۔وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر گلگت بلتستان میں مواصلاتی روابط میں مزید بہتری لانے کے حوالے سے اجلاس ہواجس میں وفاقی وزیر برائے امورِ کشمیر و گلگت بلتستان علی امین گنڈا پور،وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی امین الحق، وزیرِ اعلیٰ گلگت بلتستان محمد خالد خورشید و دیگر سینئر شرکاءموجود تھے ۔شمالی علاقہ جات میں مواصلاتی روابط اور انٹرنیٹ کی سہولیات میں مزید بہتری لانے کے حوالے سے مختلف منصوبوں اور متعلقہ امور پر غور کیا گیا ۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیرِ اعظم عمران خان نے کہا کہ موجودہ حکومت گلگت بلتستان کی ترقی کےلئے پرعزم ہے۔انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کی ترقی کے لئے تاریخی ترقیاتی پیکج کی منظوری دی جا چکی ہے جس سے علاقے میں تعمیرو ترقی کا نیا باب روشن ہوگا۔وزیرِ اعظم نے کہا کہ ماضی کے مقابلے میں موجودہ حکومت نے گلگت بلتستان میں مواصلاتی روابط (کنیکٹیویٹی) کی بہتری کے حوالے سے خصوصی توجہ دی ہے۔انہوںنے کہاکہ مواصلاتی روابط کے ضمن میں مختص فنڈز کی تعداد میں موجودہ دور میں ڈھائی سو گنا اضافہ اس عزم اور توجہ کا منہ بولتا ثبوت ہے۔وزیرِ اعظم نے وزارتِ انفارمیشن ٹیکنالوجی ، ایس سی او اور پی ٹی اے کو ہدایت کی کہ گلگت میں مواصلاتی روابط کی بہتری کے حوالے سے بھرپور کوششیں جاری رکھی جائیںوزیرِ اعظم نے کہا کہ گلگت بلتستان کے نوجوانوں کے پوٹینشل اور علاقے میں سیاحت کے فروغ کے لئے ضروری ہے کہ اس علاقے میں تھری جی اور فور جی سروسز کی دستیابی ہو تاکہ جہاں نوجوانوں کو انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ذریعے آن لائن تعلیم حاصل کرنے اور اپنی صلاحیتیوں کو برو¿ے کار لانے میں مدد ملے وہاں سیاحت کے پوٹیشنل سے بھی استفادہ کیا جا سکے۔دریں اثناءحکومت کا ایک مرتبہ پھر مقبوضہ کشمیر کی آئینی صورتحال بحال ہونے تک بھارت کے ساتھ کسی قسم کی تجارت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کشمیر کو حق خود ارادیت دئیے بغیر بھارت کے ساتھ تعلقات نارمل نہیں ہوسکتے،کشمیر کا مسئلہ حل کئے بغیر بھارت کے ساتھ تجارت نہیں ہوگی۔جمعہ کو وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت بھارت کےساتھ تعلقات کے حوالے سے اہم اجلاس ہوا، جس میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اور وزارت خارجہ کے اعلی حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں وزارت خارجہ کی جانب سے بھارت کے ساتھ تجارت کے حوالے سے تجاویز پر بریفنگ دی گئی، اور اتفاق ہوا کہ مقبوضہ کشمیر کی آئینی صورتحال بحال ہونے تک بھارت کے ساتھ کسی قسم کی تجارت نہیں ہوسکتی۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمارا اصولی موقف ہے کہ کشمیر کا مسئلہ حل کئے بغیر بھارت کے ساتھ تجارت نہیں ہوگی، اس سے غلط تاثر جائے گا کہ ہم کشمیر کو نظر انداز کرکے بھارت سے تجارت شروع کریں، کشمیر کو حق خود ارادیت دئیے بغیر بھارت کے ساتھ تعلقات نارمل نہیں ہوسکتے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*