تازہ ترین

کشمیر پریمیئرلیگ کومنی سپرلیگ سمجھا جائے گا، پی ایس ایل فرنچائززکا احسان مانی کو خط

لاہور(سپورٹس ڈیسک)کشمیر پریمیئرلیگ(کے پی ایل)کے حوالے سے پی ایس ایل فرنچائزز نے چیئرمین پی سی بی احسان مانی کو خط لکھ دیا۔کشمیر پریمیئر لیگ کا انعقاد اگست میں مظفرآباد میں ہو رہا ہے،گذشتہ روز پی ایس ایل کی تمام 6 فرنچائزز نے مشترکہ طور پر چیئرمین پی سی بی احسان مانی کو ای میل میں کے پی ایل کے انعقاد اور بورڈ کی جانب سے اجازت پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ٹیم مالکان کے مطابق ہم نے ایونٹ کے حوالے سے کئی بار اپنی تشویش سے آگاہ کیا اب آپ کے سامنے مشترکہ احتجاج ریکارڈ کرا رہے ہیں، جب پی ایس ایل کے قیام کیلیے ہم پی سی بی سے ملے تو ہمیں یقین دلایا گیا تھا کہ یہ ملک کا واحد ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ ہوگا، مگر اب ایک اور لیگ کے انعقاد اور ملکی و غیرملکی کرکٹرز کو شمولیت کی اجازت دے دی، بالکل پی ایس ایل کے انداز میں ڈرافٹ کا انعقاد کیا گیا، کے پی ایل کو منی پی ایس ایل سمجھا جائے گا، قومی ٹی 20 کپ پہلے ہی ڈومیسٹک کیلنڈر کا حصہ ہے، اب کے پی ایل کا انعقاد پی ایس ایل کی قدر کو کم کردے گا،اس سے ہمیں بھی اسپانسرز وغیرہ کے حصول میں مشکلات ہوں گی۔مالکان نے کہا کہ یقینا پی سی بی بھی اس ایونٹ سے پی ایس ایل کو پہنچنے والے متوقع نقصان سے آگاہ ہوگا، پاکستان کرکٹ بورڈ پی ایس ایل کا نگراں ادارہ ہے، اپنے پریمیئر ایونٹ کا تحفظ اسی کی ذمہ داری ہے۔فرنچائز مالکان نے احسان مانی سے درخواست کی کہ وہ ذاتی طور پرمعاملے کو دیکھیں اور کے پی ایل کیلیے جاری کردہ اجازت ناموں پر ازسرنو غور کیا جائے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*