تازہ ترین

چین کےساتھ تعلقات پاکستان کی خارجہ پالیسی کا اہم ترین جزو ہیں، عمران خان

اسلام آباد(آئی این پی) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں 35 دن سے جاری کرفیو سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں ہو رہی ہیں، مقبوضہ وادی میں جاری کرفیو اور دیگر پابندیاں فوری اٹھانے کی ضرورت ہے، چین کے ساتھ تعلقات پاکستان کی خارجہ پالیسی کا اہم ترین جزو ہیں، سی پیک پاکستانی معیشت کے استحکام کیلئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے ۔ اتوار کو وزیر اعظم عمران خان سے چینی وزیر خارجہ وانگ ژی نے وفد کے ہمراہ ملاقات کی، اس موقع پرگفتگو کرتے ہوئے و زیر اعظم نے کہا کہ چین کے ساتھ تعلقات پاکستان کی خارجہ پالیسی کا اہم ترین جزو ہیں۔ وزیر اعظم نے چینی وفد کو مقبوضہ جموں و کشمیر کی صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ 35 دن سے جاری کرفیو سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں ہو رہی ہیں۔ مقبوضہ وادی میں جاری کرفیو اور دیگر پابندیاں فوری اٹھانے کی ضرورت ہے۔ وزیر اعظم نے چین کے ساتھ خطے کے امن و استحکام کیلئے قریبی تعاون جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔وزیر اعظم نے کہا کہ سی پیک پاکستانی معیشت کے استحکام کیلئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے ، وزیر اعظم نے سی پیک کے تحت جاری منصوبوں کی بروقت تکمیل کے عزم کا اعادہ کیا۔ چینی وزیر خارجہ وانگ ژی نے چینی صدر اور وزیر اعظم کی جانب سے نیک خواہشات کا پیغام پہنچایا اور کہا کہ پاک چین تعلقات باہمی اعتماد پر مبنی دوستی کا مظہر ہیں۔ قومی ترقی کے مقاصد کے حصول کی جانب پاکستانی اقدامات قابل تحسین ہیں۔ چینی وزیر خارجہ نے مقبوضہ کشمیر میں یک طرفہ بھارتی اقدام کی مخالفت کا اعادہ کیا اور کہا کہ مقبوضہ کشمیر ایک تاریخی تنازعہ ہے اور چین کشمیر کی صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں، مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کے چارٹر کے مطابق حل کیا جائے، خطے کے فریقین کو باہمی عزت و برابری کی بنیاد پر تنازعات کا پرامن حل نکالنے کی ضرورت ہے، مقبوضہ کشمیر پر کسی بھی یک طرفہ اقدام سے صورتحال خراب ہو سکتی ہے، مقبوضہ کشمیر اقوام متحدہ کے چارٹر،سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے جب کہ چین کا پاکستان کی علاقائی خودمختاری، سالمیت اور قومی وقار کے تحفظ کے کیے حمایت جاری رکھنے کا اعلان بھی کیا۔ملاقات میں خطے کے امن و استحکام اور ترقی کیلئے دونوں ممالک کے اعلیٰ سطحی رابطے جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*