تازہ ترین

چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ کا ینگ ڈاکٹرز کے احتجاج اور ریلی نکالنے پر اظہار برہمی

Districts_of_Balochistan,_Pakistan_with_district_names

کوئٹہ( این این آئی)چیف جسٹس بلوچستان ہائی کورٹ جسٹس نعیم اختر افغان نے کوئٹہ میں ینگ ڈاکٹرز کے احتجاج اور ریلی نکالنے پر شدید اظہاربرہمی کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے آپ کو احتجاج کرنے سے منع کیاتھا،آپ پھر ایساکیوں کررہے ہیں، یہ طریقہ نہیں چلے گا،ہمیں آپ کی کوئی ضرورت نہیں،ہم نے آپ کو بہت موقع دیا،لیکن آپ بات تسلیم نہیں کررہے، آپ ڈاکٹری چھوڑ کر،جوتوں کی دوکان کھول لیں، چیف جسٹس نے حکومت کو حکم دیا کہ وہ دھرنادینے والوں کےساتھ قانون کے مطابق نمٹے یہ ریمارکس اور حکم چیف جسٹس ہائی کورٹ نے سرکاری اسپتالوں میں طبی سہولیات کی فراہمی سےمتعلق درخواست کی سماعت کے دوران دیا،درخواست کی سماعت چیف جسٹس ہائی کورٹ جسٹس نعیم اختر افغان اورجسٹس عبداللہ بلوچ پر مشتمل بنچ نے کی،عدالت میں محکمہ صحت کے حکام اور ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے نمائندے موجود تھے عدالت نے ینگ ڈاکٹرزایسوسی ایشن کے احتجاج اور ریلی نکالنے پر شدید برہمی کااظہارکیااور کہا کہ آپ بھلے آئندہ سماعت پرعدالت نہ آئیں،جسٹس نعیم اختر افغان نے ینگ ڈاکٹرزسے استفسار کیا کہ کیا یہ دھرنا آپ نے دیا ہوا ہے،جس کی وجہ سے شہر بھرکے لوگوں کو تکلیف کاسامناہے؟اس پر وائی ڈی اے کے نمائندے نے کہا کہ یہ دھرنا وائی ڈی اے نے نہیں دیا،تاہم اس میں ڈاکٹرز ہیں،اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اگر یہ دھرنا آپ کا ہے تومیں ابھی آپ کےخلاف توہین عدالت کی کارروائی کرتاہوں،ان کا یہ بھی کہناتھا کہ ہم نے آپ کو بہت موقع دیا،لیکن آپ بات تسلیم نہیں کررہے آپ ڈاکٹری چھوڑ کر،جوتوں کی دوکان کھول لیںآپ لوگوں کا یہ رویہ کسی صورت قابل قبول نہیں، تاہم انہوں نے کہا کہ ہم آپ کی تجاویز کے حوالے سے حکومت سے پوچھیں گے کہ وہ کیاکررہی ہے۔

 

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*