تازہ ترین

پی ٹی آئی،اے این پی،جے ڈبلیو پی و دیگر کا میر عبدالقدوس بزنجو کی حمایت کا اعلان

کوئٹہ(این این آئی)پاکستان تحریک انصاف نے بلوچستان میں وزیراعلیٰ اور اسپیکر بلوچستا ن اسمبلی کے عہدوں کے لئے بلوچستان عوامی پارٹی کے نامزد امیدواروں کا اعلان کردیا، یہ اعلان پی ٹی آئی کے رہنماءوزیر دفاع پرویز خٹک ، پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈر سردار یار محمد رند نے بدھ کو سردار یار محمد رند کی رہائشگاہ پر چےئر مین سینیٹ محمد صادق سنجرانی ،اسپیکر بلوچستان اسمبلی اور وزیراعلیٰ کے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو، بلوچستان عوامی پارٹی کے قائم مقام صدر میر ظہور بلیدی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر بی اے پی کے بانی سینیٹر سعید احمد ہاشمی، جنرل سیکرٹری سینیٹر منظور خان کاکڑ، چیف آرگنائزر میر جان محمد جمالی سمیت دیگر بھی موجود تھے ۔ وزیردفاع پرویز خٹک نے کہا کہ پی ٹی آئی نے پہلے بھی بی اے پی کا ساتھ دیا ہے ہم نے باپ کے اندرونی معاملے میں مداخلت نہیں کی ہم آگے بھی اکھٹے چلیں گے انہوں نے کہا کہ نئی حکومت سے توقع ہے کہ یہ پی ٹی آئی کا خیال رکھے گی اور عزت دیگی ہم نہیں چاہتے کہ پی ٹی آئی کو بائی پاس کیا جائے انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نے باپ کو دوسری دفعہ سپورٹ کیا لیکن انہوں نے ہمیں وہ حیثیت نہیں دی جو ایک اتحادی کے طور پر ملنی چاہیے تھی امید ہے کہ نئی حکومت پی ٹی آئی کو اہمیت اور حیثیت دیگی ہم بلوچستان کے وسیع مفاد، ترقی کے لئے حکومت کے قیام بی اے پی کا ساتھ دے رہے ہیں انہوں نے کہا کہ اتحادیوں کی شمولیت کے بعد کمیاں ختم ہونگی امید ہے سردار یار محمد رند کو وہی عزت ملے گی جو انہوں نے ہمیں دی ہے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے پارلیمانی اراکین سے ملاقاتیں کی تھیں سردار رند ملک سے باہر تھے اس لئے ان ملاقات نہیں ہوئی ہم اپنی پارٹی کو کسی بھی صورت بھول نہیں سکتے انہوں نے کہا کہ نئی حکومت میں پی ٹی آئی کے تحفظات دور کرنے کے لئے خود رابطے میں رہونگا انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں گزشتہ حکومت کا نتیجہ سب نے دیکھ لیا ہے ساتھیوں کا کوئی خیال نہیں کرتا تو ساتھ بھی اسے چھوڑ دیتے ہیں تمام ارکان نے اپنے علاقوں میں کام کرنا ہوتا ہے انہوں نے کہا کہ جام کمال خان کے پاس گئے انہوں نے باعزت طریقے سے استعفیٰ دیاہم انکے پاس بھی جائیں گے سب کو اکھٹا کر کے چلانے کی کوشش کریں گے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وفاق اور پنجاب میں کچھ نہیں ہوسکتا صرف باتوں اور پریس کانفرنس سے حکومت نہیں گرتی لوگ جب میدان میں نکلیں تو پتا چلتا ہے اخبارات میں بیانات دینے سے کچھ نہیں ہوگا ۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈر سردار یار محمد رند نے کہا کہ پی ٹی آئی کے پارلیمانی ارکان نے اجلاس میں اس بات کا اظہار کیا کہ انہیں یکسر طور پر نظر انداز کیا جارہا ہے جس پر اراکین نے فیصلہ کیا کہ ہم وزیراعلیٰ اور اسپیکر کے لئے اپنے امیدوار لائیں گے وزیراعظم عمران خان نے پرویز خٹک کو بھیجا ہے انہوں نے کہا کہ بلوچستان عوامی پارٹی سے توقعات تھیں جو پوری نہیں ہوئیں وہ آپس میں سب کچھ بیٹھ کر بانٹ لیتے ہیں اور بعد میں اتحادیوں کے پاس جاتے ہیں کہ آپ ہمارے اتحادی ہیں ہمارا ساتھ دیں بی اے پی اور پی ٹی آئی صوبے اور مرکزمیں اتحادی ہیں جس کے لئے ہمیشہ ہم نے تعاون کیا ہے انہوں نے کہا کہ بلوچستان عوامی پارٹی کے اندر مسئلہ ہوا میں مستعفیٰ بھی ہوا لیکن کوئی ایسا اقدام نہیں اٹھایا جس سے حکومت غیر مستحکم ہوتی انہوں نے کہا کہ ہم ایک بار پھر اس امید کے ساتھ بلوچستان عوامی پارٹی کی حمایت کر رہے ہیں کہ وہ ہمارے ساتھ وہ کچھ نہیں کریگی جو پچھلے تین سال میں ہمارے ساتھ کیا گیا ہے انہوں نے کہا کہ باپ کی اپنی لڑائی کی وجہ سے بلوچستان رکا ہوا ہے ہم چاہتے ہیں کہ نظام چلے ہم نہیں چاہتے کہ مزید وقت ضائع کریں جو ہماری پارٹی فیصلہ کریگی ہم اسکے پابند ہونگے ۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے اسپیکر بلوچستان اسمبلی اور وزیراعلیٰ کے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو نے کہاکہ جام کمال خان محترم ہیں وہ پارٹی صدر، وزیراعلی اور وفاقی وزیر رہے ہیں ان سے معذرت کرتے ہیں اور انکے تجربے سے فائدہ اٹھائیں گے انہوں نے کہا کہ سردار یار محمد رند ہمارے بڑے ہیں ان کے تجربے فائدہ اٹھاتے ہوئے ملکر بلوچستان میں ایک اچھی حکومت قائم کریں گے انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد اتحادیوں کو ناراض کرنا نہیں تھا ان سے معافی مانگتے ہیں اتحادیوں کو اکھٹا کرنے میں کردار ادا کریں گے جو غلط فہیماں پیدا ہوئیں انہیں ختم کریں گے انہوں نے کہا کہ سردار یار محمد رند کے مشورے سے اچھی حکومت بنانے میں کامیاب ہونگے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے معاملات کو باقی صوبوں اور وفاق سے نہ جوڑا جائے وزیراعظم عمر ان خان مضبوط ہیں ۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے بلوچستان عوامی پارٹی کے قائم مقام صدر میر ظہور بلیدی نے کہا کہ سردار یار محمد رند نے ہمیشہ بڑاپن کا مظاہرہ کیا ہے انکی بات درست ہے کہ انہیں بہت سے معاملات میں اس طرح نہیں پوچھا گیا جس طرح انکی قبائلی سیاسی اہمیت ہے انہوں نے کہا کہ سردار یار محمد رند کو وہ عزت ضرور دیں گے جو انہیں دی جانی چاہےے پی ٹی آئی وزیراعلیٰ اور اسپیکر کے انتخاب میں ہماری غیر مشروط حمایت کریگی انہوں نے کہا کہ حکومت کے قیام کے بعد اتحادیوں کے مشاورے سے نظام چلائیں گے ۔در یں اثنا ءبلوچستان عوامی پارٹی کے وزرات اعلیٰ کے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو نے پاکستان نیشنل ( عوامی) کے سربراہ رکن صوبائی اسمبلی سید احسان سے ملا قات کی ۔ بد ھ کو بلوچستان عوامی پارٹی کے وزرات اعلیٰ کے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو رکن صوبائی اسمبلی سید احسان کی رہائشگاہ گئے جہاں انہوں نے اس سے ملا قات کی ۔ اس موقع پر گفتگو کر تے ہوئے سید احسان شاہ نے کہاکہ ہم میر عبدالقدوس بزنجو کے ساتھ ہیںامید کرتے ہیں ایک نئی حکومت ایک مثالی حکومت ہوگی صوبے کے عوام کے مسائل کو حل کرنا نئی حکومت کی ترجیحات ہونی چاہیے۔ دریں اثنا ءبی این پی (عوامی )کے پارلیمانی لیڈر اسد بلوچ نے بلوچستان عوامی پارٹی سے وزرات اعلیٰ کے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو کی حمایت کا اعلان کر دیا ۔ بد ھ کو بلو چستان عوامی پارٹی کے وزارت اعلیٰ کے نامزد امید وار میر عبد القدوس بزنجو ، سیکرٹری جنرل و سینیٹر منظور کاکڑ اورسینیٹر عبدالقادر نے بی این پی عوامی کے پارلیمانی لیڈر اسد بلوچ سے ملا قات کی اور ان سے با قاعدہ طورپر وزیر اعلیٰ کے انتخاب میں حمایت کی درخواست دی اس موقع پر گفتگو کر تے ہوئے میر اسداللہ بلوچ نے کہاکہ ہم ایک ٹیم کی طرح کام کریں گے عوام کے مسائل حل کریں تو دعائیں بھی ساتھ ہونگی انہوں نے کہاکہ سرکار کی مشینری کو عوام کی فلاح کے لئے استعمال کریں۔اس موقع پر گفتگو کر تے ہوئے میر عبد القدو س بزنجو نے کہاکہ نئی حکومت ایک بہترین گلدستہ ثابت ہوگی تمام اتحادیوں کی جدو جہد ناقابل فراموش ہیں انہوں نے کہاکہ ترجیحات بلوچستان کے پسے ہوئے عوام کی مشکلات کم کرنا ہے ۔دریں اثنا ءجمہوری وطن پارٹی کے رکن صوبائی اسمبلی نوابزادہ گہرام بگٹی نے بلوچستان عوامی پارٹی سے وزرات اعلیٰ کے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو کی حما یت کا اعلان کر دیا ۔ تفصیلات کے مطابق چیئرمین سینٹ محمد صادق سنجرانی ،ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری اوربلوچستان عوامی پارٹی سے وزرات اعلیٰ کے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو نے جمہوری وطن پارٹی کے رکن صوبائی اسمبلی نوابزادہ گہرام بگٹی سے انکی رہائشگاہ جا کر ملا قات کی اور ان سے نامزد وزیر اعلیٰ میر عبد القدوس بزنجو کی حمایت کی درخواست کی اس موقع پر نوابزادہ گہرام بگٹی نے میر عبد القدوس بزنجوکی حمایت کا اعلان کردیا۔دریں اثنا ءچیئرمین سینٹ صادق سنجرانی وفاقی وزیر پرویز خٹک، اسپیکر بلوچستان اسمبلی میر عبدالقدوس بزنجو کی پی ٹی آئی کے ارکان ڈپٹی اسپیکر بلوچستان اسمبلی سردار بابر موسی خیل اور میر نعمت اللہ زہری سے ملاقات وزیر اعلی بلوچستان کے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو کی حمایت کی درخواست کی جس پر میر نعمت اللہ زہری نے کہا کہ پی ٹی آئی کی قیادت کا جو فیصلہ ہے اسے قبول کرتے ہیں اس موقع پر ڈپٹی اسپیکر بابر موسی خیل اور میر نعمت اللہ زہری نے عبدالقدوس بزنجو کی حمایت کا ا علان کردیاہے۔دریں اثنا ءبلوچستان عوامی پارٹی کے وفد نے میر عبدالقدوس بزنجو اور قائم مقام صدر ظہور بلدی کی قیادت میں اے این پی کے رہنما رکن صوبائی اسمبلی انجینئر زمرک خان اچکزئی رہائش گاہ جاکر عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماوں سے ملاقات کی۔ ملاقات میں اے این پی کے پارلیمانی لیڈر اصغر خان اچکزئی سینٹر نوابزادہ عمرفاروق کاسی ، رشید ناصر اوردیگر بھی موجودتھے۔ اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے میرعبدالقدوس بزنجو نے کہا کہ ہم ایک دوسرے کے بازو بن کر صوبے کے عوام کی خدمت کریںجو اتحاد ٹوٹا اس کو دوبارہ جوڑنے آیا ہوںتمام اتحادیوں کو ساتھ لیکر چلنا چاہتے ہیں۔بی اے پی کے قائم مقام صدر ظہوربلیدی نے کہاکہ جمہوری اور قبائلی روایات ہمارے کلچر کا حصہ ہے صوبے کی روایات کو مدنظر رکھ اے این پی کے پاس آئے ہیںہمیں ہر قدم پر تمام جماعتوں کی ضرورت ہے۔رکن صوبائی اسمبلی انجینئر زمرک خان اچکزئی نے کہا کہ میں اپنے گھر پر بی اے پی کے وفد کو خوش آمدید کہتاہوں۔اے این پی کے پارلیمانی لیڈر اصغر خان اچکزئی نے کہا کہ ہم نہیں چاہتے بی اے پی کے تین سال تک اتحادی رہنے کے بعد ساتھ چھوڑیںہم اپنی کمٹمنٹ پر کھڑے تھے اور جمہوری فیصلوں کے پابند ہیں۔اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی کے بی اے پی کے وزیراعلیٰ کے امیدوار میرعبدالقدوس بزنجو کی حمایت کااعلان کیا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*