تازہ ترین

پشتون افغان ملت تاریخ میں کبھی بھی دہشتگرد نہیں رہی ہے، محمود خان اچکزئی

Mehmood_Khan_Achakzai

پشےن (پ ر) پشتونخواملی عوامی پارٹی کے سربراہ اور پاکستان ڈےموکرےٹک موومنٹ کے نائب صدر محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ پاکستان بہترےن ملک ہے لےکن اسے حقےقی جمہورےت کے ذرےعے ہی چلاےا جاسکتا ہے ،پشتون افغان ملت تارےخ مےں کبھی بھی دہشتگردنہےں رہے ان پر ان کے مدارس پر الزامات غلط ہےں، ظالم اور مظلوم کی جنگ مےں ہمےشہ مظلوم کا ساتھ دےتے رہےنگے، ملک مےں ہر قوم کا اپنے نام کا صوبہ ہے لےکن ہمےں اپنا قومی صوبہ نہےں دےا جارہا بلکہ اےک دوسرے سے مربوط پشتون وطن کو منقسم رکھا گےا ہے ، افغانستان کی جنگ اےک بڑا زلزلہ تھا جس نے ہمارے بنےادوں تک کو ہلا کر رکھ دےا اس جنگ کے باعث روس اور امرےکہ سمےت تمام دنےا پشتون افغان ملت کے مقروض ہے، پاکستان کے پشتونوں کا اےک نمائندہ جرگے کا انعقاد ضروری ہے اور اسی طرح پاکستا ن اور افغانستان کے پشتون افغان ملت کے بےن الاقوامی جرگہ بھی ضروری ہے ، افغان غےور ملت نے مسلسل اپنے وطن کا دفاع کےا ہے ، سےاسی پارٹےاں قومےں اپنی ضرورت کے تحت ہی بناتی ہے ، پی ٹی اےم کا قےام فاٹا مےں بدترےن ظلم وجبر کا حقےقی رد عمل ہے، پشےن کے ضمنی انتخابات پی ڈی اےم ہی جےتے گی ، ضلع پشےن مےں موجود پشےن قومی جرگہ ےا کمےٹی اچھا اقدام ہے اسے مزےد وسےع کرنے کی ضرورت ہے، پشتونخوامےپ کے عہدےداروں اور کارکنوں نے ےہ وعدہ کرنا ہوگا کہ وہ ہر قسم کے حالات مےں صرف اور صرف سچ اور سچائی کا ساتھ دےنگے ۔ ان خےالات کا اظہار انہو ںنے کلی ملےزئی مےں پارٹی ضلع پشےن کے عہدےداروں اور کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کےا۔ جس سے پارٹی کے مرکزی وصوبائی سےکرٹری عبدالرحےم زےارتوال، صوبائی سےکرٹری اطلاعات ضلع سےکرٹری پشےن محمد عےسیٰ روشان ، صوبائی ڈپٹی سےکرٹری وسےنئر معاون سےکرٹری سےد شراف آغا اور سردار زادہ امجد خان ترےن نے خطاب کےا۔ تلاوت کلام پاک علاقائی معاون سےکرٹری سےد سلےم آغا نے کی اور سٹےج سےکرٹری کے فرائض پارٹی کے مرکزی کمےٹی کے رکن وضلعی اےگزےکٹو حاجی عبدالحق نے سرانجام دےئے۔ اس موقع پر علاقائی سےکرٹری موسیٰ خان نے پارٹی چےئرمےن محمود خان اچکزئی کو رواےتی پگڑی پہنائی ۔محترم محمود خان اچکزئی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پشتون قوم اس وقت اےک اےسی حالت مےں زندگی گزار رہے ہےں کہ اردگرد کے حالات پچھلے چالےس سال سے ہم پر جنگ مسلط ہے (ناورےن) اس جنگ نے تقرےباً دنےا کے ہر ملک کو نقصان پہنچاےا ہے پھر جنگےں اپنے اثرات چھوڑ جاتی ہے پشتونخوا وطن کی تارےخی سرزمےن اےک چار سو پر واقعہ ہے جب بھی کوئی استعمار آتا تو اس راستے پر آتا اور وہ چڑھائی شروع کردےتا ،پشتون قوم پر ہر دور مےں بدترےن جنگ مسلط کی گئی لےکن ان جنگوں کا اےک فائدہ ےہ ہوا کہ ہمارے قوم کا ہر جوان جنگ کے مےدان کا اےک بہترےن سپاہی بن گےالےکن اس کا اےک نقصان ےہ ہوا کہ ہم اےک زنجےر نہ بن سکے اور آج جو جنگ جاری ہے ےہ اس پر جاری ہے کہ دنےا کو پشتون ملت کی خودداری ،اونچی پگڑی اور غےرت گوارہ نہےںہے ۔ دنےا آج اس نتےجے پر پہنچ چکی ہے اس پشتون قوم کو شکست دےنا نا ممکن ہے لےکن اےک بات جو انتہائی خطرناک ہے ہماری نسل کشی کےلئے وہ اےک بات کررہے ہےں کہ پشتون قوم دہشتگرد ہے ان کا اور کوئی کام نہےں ہے داڑھی چھوڑ کر مونچےں منڈواکر کسی کو بھی ذبح کردےتے ہےں اور ےہ بہت خطرناک الزام ہے اور ےہ غلط ہے اسی طرح ہمارے مدرسوں پر الزام لگاےا جاتا ہے کہ ےہ مدرسےں قاتلوں کی پناہ گاہےں ہےں ےہ بھی غلط ہے ۔ اب ان الزامات کا مقابلہ ہمےں شعور ، عقل و دلےل کے ساتھ کرنا ہوگا دنےا ےہ مان چکی ہے کہ ہر انسان کو ےہ حق حاصل ہے کہ وہ کس مذہب کو اختےار کرنا چاہتا ہے ، کس ثقافت اور زبان کو اپنانا چاہتا ہے ےہ اس انسان کا حق ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دنےا جدےد ہوچکی ہے آج ہم ےہاں کلی ملےزئی پشےن کے اس پنڈال مےں بےٹھے ہےں اور دنےا بھر مےں لوگ ہمےں دےکھ اور سن سکتے ہےں ہم مےں سے بہت سے لوگ کاروبار کی غرض سے کوئی چےن تو کوئی جاپان مےں ہےں حالات بدل چکے ہےں اور ےہ حالات بہتری کی نشانی ہے اور ےہ خدا کا شکر ہے لےکن پھر بھی ہمےں مشکلات درپےش ہےں ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹےاں لوگ مستی کےلئے نہےں بناتے جب پارٹی آپ کی حکومت مےں ہوگی تو وہ آپ کی انسانی زندگی کی تمام تر بنےادی ضرورےات کا بندوبست کرنا ان کی ذمہ داری ہوتی ہے آپ کے سکول ، ہسپتال، روزگار کا بندوبست کرےنگے ،جو قومےں اقتدار نہےں رکھتی وہ اپنی سےاسی جماعت بناتی ہے ےہ سےاسی پارٹی ان کی قوت ہوتی ہے ۔ پشتونخواملی عوامی پارٹی کاہر کارکن جو چاہتے ہےں کہ ہم اپنے قوم کو موجودہ صورتحال سے نجات دلائےں تو انہےں پاکےزگی ، مخلصی ، اےمانداری دکھانی ہوگی تاکہ اس پر عوام بھروسہ کرے اور ےہ گواہی دے کہ پشتونخوامےپ کے کارکن مےں واقعی اتنی خوبےاں موجود ہےں۔ پشتونخوامےپ بھی اس محکوم قوم کےلئے بنی ہے اور وہ اپنی جدوجہد کی راہ پر گامزن ہے پارٹی اپنی قوم کو سےال قوموں کی صفوں مےں لانا چاہتی ہے، ہمےں اپنے کارکنوں کی اےسی تربےت کرنی ہوگی کہ ےہ قوم خود کہے کہ پشتونخوامےپ کے کارکن ظالم اور مظلوم کی جنگ مےں مظلوم کے ساتھی ہےں۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ بھی انسان سے غےر شعوری پر ہونےوالے غلطی پر پردہ ڈالتا ہے لےکن مسلسل بدکاری غلطےوں پر اللہ تعالیٰ بھی پردہ نہےں ڈالتا، اس قوم کو معلوم ہے کہ فلاں کےا کرتا ہے فلاں کونسی راہ پر چل رہا ہے اچھا ہے برا ہے چوری کون کرتا ہے ، ڈکےتیاں کون کرتا ہے ، جرگوں مےں پےسے کون لےتا ہے،نشہ کون کرتا ہے ،منشےات فروشی کون کرتا ہے ےہ سب معلوم ہے اور ےہ کسی سے چھپ نہےں سکتا ۔ ہمےںاپنی بساط کے مطابق ےہ کوشش کرنی ہوگی کہ وہ خوبےاں جو اللہ تعالیٰ کو پسند ہو جس سے عوام خوش ہو ان خوبےوں کو خود مےں لانا ہوگا۔ اےسے لوگ بھی ہےں جو کلمہ پڑھتے ہےں قسمےں لےتے ہےں پھر بھی عوام ان پر بھروسہ نہےں کرتے ہےں اور کچھ اےسے ہےں جو قسم نہےں لےتے ہےں پر جو بات کرتے ہےں ان مےں اتنی سچائی ہوتی ہے کہ لوگ ان پر آنکھ بند کرکے بھروسہ کرتے ہےں اور ان کی باتےں سنتے ہےںہمےں بھی اپنے قول اور فعل اےک طرح کے رکھنے ہونگے ان مےں کسی قسم کا کوئی بھی تضاد نہےں رکھنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ دنےا مےں مختلف مذاہب ہےں وہ دن دور ہے کہ تمام انسانےت اےک جگہ ہوگی ا±س وقت تک ہر مذہب کے لوگوں کو اےک دوسرے کے مذاہب ، عبادت گاہوں،زبان، ثقافت کا احترام کرنا ہوگا ۔ قرآن پاک مےں اللہ تعالیٰ کہتا ہے کہ ” جہاں مےرا نام لےا جاتا ہو اس جگہ کا احترام کرو” ۔ انہوں نے کہا کہ ہم آدم علےہ اسلام اور بی بی حوا انا کے بچے ہےں پشتون قوم دنےا بھر مےں آباد ہےں ہمےں لوگوںکو ےہ باور کرانا ہوگا کہ وہ ہمارے مذہب، زبان ،ثقافت کا احترام کرےں اور ہم بھی ان کی عبادت گاہوں کا احترام کرےنگے اور ہمےں اپنا کاروبار مےں بھی اےمانداری سے کرنی ہوگی ۔ پشتونخواملی عوامی پارٹی تمام دنےا پر ےہ واضح کرتی ہے کہ پشتون تارےخ مےں نہ کبھی دہشتگرد رہا ہے اور نہ دہشتگرد ہے تارےخ اور مختلف اقوام ومذاہب کے لوگ اس بات کے گواہ ہے کہ پشتون قوم اےک سےال اور مہمان نواز قوم ہے ےہاں Boarding and Lodging مفت ہے اور آپ پشتون وطن مےں کئی بھی جائے تو آپ کو د و وقت کا کھانا اور رات کو سونے کےلئے بستر دےا جائےگا ۔ لےکن ہمارے وطن مےں ہمےشہ سے جنگ جاری رہی ہے سکندر اعظم سے لےکر چنگےز خان اور پھر دےگر ، افغانستان مےں جنگ اےک بڑازلزلہ تھا جب روسی فوج ےہاں داخل ہوئی ۔ پھر اس جنگ مےں چےنی ، جرمنی ، فرانسےسی، ےہود ، امرےکن تقرےباً ہر نسل کے لوگ مرے ےہاں گولےاں ، راکٹےں ، مےزائلوں سے اس وطن کو برباد کےا گےا پھر جب امرےکی فوج آئے کہ ہم اس ملت کی آزادی کےلئے لڑےنگے اور روس نے افغانستان پر قبضہ کر رکھا ہے۔ پشتونخوامےپ ےہ کہتی ہے کہ تمام دنےا افغانستان کی مقروض ہےں روس اور اس کے اتحادی اور امرےکہ اور ا±س کے اتحادی سب کو ےہ تسلےم کرنا ہوگا انہوں نے ےہاں جنگےں لڑی پھر افغانستان کو زخمی حالت مےں تنہا چھوڑ دےا گےا۔ سکندر اعظم جب آےا ا±س وقت سے لےکر اب تک ےہ زخمی قوم اپنی سرزمےن ، زبان ،ثقافت کا دفاع کررہی ہےں اورپچھلے چالےس سال کے جنگ مےں ےہ واحد قوم ہے جس نے سب سے زےادہ قربانےاں دےں ۔ اب بھی ےہ جنگ جاری ہے اور دہشتگرد ی کے الزامات بھی اس قوم پرلگائے جارہے ہےں اس قوم نے ہمےشہ اپنے سرزمےن کی دفاع کی ہے اور وہ وقت آئےگا کہ دنےااس قوم کو سلام کرےگی کہ اس قوم نے اپنی وطن ، سرزمےن ، زبان ،ثقافت کی تحفظ کےلئے بہادری کے ساتھ دفاع کےا۔ قرآن کرےم کا حکم ہے جب مسلمانوں کے دو گروہوں مےں جھگڑا ہو تو اےماندار لوگ جائے اور ان مےں صلح کرائےں اور اگر اےک فرق انکار کرے تو اسے صلح کرنے پر مجبور کرے اور پھر انصاف کے ساتھ فےصلہ کرو۔ انہوں نے کہا کہ55اسلامی ممالک ہے لےکن صلح کرانے کےلئے تےار نہےں اور اسی طرح دنےا بھی نہےں چاہتی کہ ےہاں امن ہو اسلامی ممالک بھی خاموش ہےں ، اقوام متحدہ کے سےکورٹی کونسل کے خصوصاً 5ممالک رکن کے بچے بھی اس جنگ مےں مرے ہےں ان کو چاہےے کہ افغانستان مےں امن کےلئے اپنا کردار ادا کرےں۔ اور ارگرد کے ہمساےوں کو کہہ دے کہ ےہاں مداخلت کا سلسلہ ختم کردےا جائے ورنہ اس جنگ سے بہت بڑی تباہی ہوگی۔ شاعر مشرق علامہ اقبال کا مشہور اور تارےخی شعر بھی ہے کہ ”آسےا ےک پےکر آب وگل است ۔ملت افغان دراےں پےکر دل است ۔ از فساد او فساد آسےا ۔ ازکشاد اوکشاد اےشےا۔ انہوں نے کہا کہ ےہاںآنےوالے لوگوں کو ےہ معلوم ہوا کہ ہمارا وطن معدنی وسائل سے مالا مال ہے اور وہ ہمارے وطن مےں قدرت نے جو نعمتےں ہمےں دی ان پر کسی طرح سے قبضہ کےا جائے لےکن ہم ےہ واضح کرنا چاہتے ہےں کہ ہم کسی کو ےہ اجازت نہےں دےنگے کہ وہ ہمارے وسائل کو لوٹ سکےں۔ انہوں نے کہا کہ مےں پہلے بھی کہہ چکا ہوں کہ پاکستان مےں آباد پشتونوں کا اےک نمائندہ جرگہ کا انعقاد ہو اور دوسرا پشتون افغان ملت کا پاکستان افغانستان بشمول تمام دنےا کے پشتون افغان کے جرگے کا انعقا د ہو اور اس مےں ہر مکتبہ فکر کے لوگوں کی شرکت ہو۔ اور جرگہ منعقد کرکے دنےا پر ےہ واضح کرے کہ وہ ہم سے آخر کےا چاہتے ہےں ہم کسی کی زبان ، مذہب ،ثقافت پر نہےں ہنستے اور نہ ہی کوئی ہمارے مذہب ، زبان، ثقافت پر ہنسے گا ہم آپ کی عبادت گاہوں کا احترام کرتے ہےں آپ کو ہماری عبادت گاہوں کا احترام کرنا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ہمارا ملک ہے ہم اسے توڑنا نہےں چاہتے لےکن جو حق دوسروں کی ماں ، بہن ، بھائی ، با پ ، بےٹے کا ہوگا وہی حق پشتون کا بھی ہوگا ۔ ےہاں پر ہر کسی کی شناخت قومی صوبہ ہے لےکن پشتونوں کو اپنا صوبہ نہےں دےا جارہا اور اسے تقسےم در تقسےم کر رکھا گےا ہے ہم بھی اپنا قومی صوبہ اپنا گورنر ، وزےراعلیٰ چاہتے ہےں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ڈےموکرےٹک موومنٹ مےں پشتونخوامےپ اور جمعےت کے کارکن اگر اےمانداری اور مخلصی کے ساتھ اےک دوسرے کا ساتھ دےں تو مےرا ےہ ےقےن ہے کہ پشےن مےں کوئی بھی چوری ، ڈکےتی ، اغواءکاریاں ،قتل وغارت نہےں کرپائےگا ۔ہمےں اپنی اتحاد واتفاق سے ان سماج دشمن عناصر کو اپنے ےہاں کا ماحول خراب کرنے ، منشےات فروشی سمےت تمام جرائم سے روکنا ہوگا اور ےہ عہد کرنا ہوگا کہ جو انسان برا ہوگا وہ خواہ اپنے گھر کا ہی کےوں نہ ہو اسے خود سے دور کرنا ہوگا اور اگر کوئی مخالف ہی اچھا انسان کےوں نہ ہو اس انسان کی اچھائی اور اس کی خوبےاں بےان کرنی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ جمعےت کے رہنماءاےم پی اے سےد فضل آغا مرحوم کی وفات سے حلقے کی نشست خالی ہوئی اور اس پر پہلے روز سے ہم نے جمعےت کے امےدوار کی حماےت اور اپنا امےدوار کھڑا نہ کرنے کا فےصلہ کےا تھا۔پشےن کے اس ضمنی انتخابات کی تےاری کرتے ہوئے پی ڈی اےم کے مشترکہ امےدوار کو کامےاب بنانا ہوگا اور اس کےلئے نہ کسی سے جھگڑے ، نہ کسی کو برا بلا کہنے کی ضرورت ہے بس اپنے عوام کو اعتماد مےں لےنا ہوگا اور عوام ہمارے ساتھ ہےں۔ انہوں نے کہا کہ وزےرستان ، وسطی پشتونخوا (فاٹا) مےں بدترےن مظالم ہونے کے باوجود وہاں کے عوام پر پر امن رہے وہاں پر تقرےباً1300جرگے کے ممبران کو چ±ن چ±ن کر ٹارگٹ کلنگ کے ذرےعے شہےد کےا گےا ، ان کی مارکےٹےں ، گھروں کو مسمار کےا گےا۔پشتونخوامےپ ےا پشتون تحفظ موومنٹ پر الزامات لگائے جاتے ہےں انہےں ہمساےہ ممالک کی خفےہ اےجنسےاں فنڈنگ کرتی ہے اےسے الزامات ناقابل برداشت اور قابل گرفت ہے ہم نے فرنگےوں سے ا±س وقت سودا نہےں کےا تو پھر ان اےجنسےوں ےا آپ کے ساتھ کےونکر اپنی سرزمےن اور اپنے عوام کے حقوق کا سودا کرےنگے۔ اےسے الزامات قابل مذمت ہےں اور ان سے گرےز کےا جائے۔ انہوں نے کہا کہ فوج سے ہماری درخواست ہے کہ سےاست آپ کا کام نہےں آپ اپنے آئےنی دائرہ کار مےں رہتے ہوئے اپنا فرائض پورے کرے اور ہم سےاسی لوگ آپ کی ہرجنگی ضرورےات پوری کرےنگے ۔ امرےکہ کے صدر نے گزشتہ روز حلف لےتے ہوئے کہا کہ مےں امرےکہ کےلئے کام کرونگا اور امرےکہ کی آئےن کا ہر صورت دفاع کرونگا ۔ ہمارے لوگ بھی حلف لےتے ہےں لےکن بعد مےں اپنے ہی حلف کی پاسداری نہےں رکھتے ۔ اگر کسی کو سےاست کا شوق ہے تو وہ اپنی وردی اتار کرسےاست مےں حصہ لے اور پھر آکر دےکھے کہ عوام سے ووٹ مانگناسےاست کرناکتنا آسان کام ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ڈےموکرےٹک موومنٹ کے پلےٹ فارم پر ملک کے جمہوری قوتوں کابہترےن اتحاد قائم ہے اورےہ جدوجہد کررہی ہے لہٰذا اس جدوجہد کو مزےد منظم اور تےز کرنے کی ضرورت ہے ۔ ہمےں اسلام آباد لانگ مارچ کےلئے بھی خود کو تےار رکھنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کارکن پارٹی کے منشور وآئےن کے دائرہ کار مےں اپنی سےاست کرے اور سوشل مےڈےامےں بلاجواز اور غلط بحث ومباحثوں سے گرےز کرےںورنہ اےسے لوگوں کے خلاف پارٹی کے آئےن کے مطابق کارروائی ہوگی ۔ انہوں نے کہاکہ ہم سب کو اےسی خوبےاں اپنانی ہوگی اور اپنی بساط کے مطابق ہر جگہ پر سچ کہنا ہوگا اور جھوٹ کہنے کی کوئی ضرورت نہےں ہمےں اپنی زبان مثالی بنانی ہوگی کہ ہماری عوام بالخصوص پارٹی کے کارکنوں پر بند آنکھوں کے ساتھ بھروسہ کرے اور ےہ گواہی دے کہ پشتونخوامےپ کے کارکنان سچے ، پرہےزگار ، اےماندار اور ظالم اور مظلوم کی جنگ مےں مظلوم کے ساتھی ہےں۔ انہوں نے کہا کہ جو عناصر قوم کے مابےن نفرتےں ، رنجشےں ، جھگڑے وفساد پےدا کرتی ہے سرکار ان سے خوش ہوتی ہے اور ہم سے اس لےئے ناراض ہے کہ ہم نے اس قوم کو متحد ومنظم کر رکھا ہے اور ےہی ہمارا گناہ ہے جبکہ وہ ان کوششوں اور سازشوں مےں مصروف ہے کہ کےسے اس قوم کو آپس مےں لڑا کر اتحاد واتفاق کا خاتمہ کےا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ ےہ غلط ہے کہ کسی کلی مےں اگرکسی کی اکثرےت ہو تو وہ اقلےت کو انسان نہ سمجھے اور اس پر اپنی ناروا طاقت کا استعمال کرتا رہے ہم صرف خدا سے ڈرتے ہےں اور اس کے بعد کسی کی ظلم نہےں مانتے ۔ انہوں نے کہا کہ دوسروں کے حق پر ڈاکہ ڈالنا ظلم ہے اور اپنے حق سے دستبردار ہونا بے غےرتی ہے ہمےں آپس مےں ملکر اتحاد واتفاق کو مزےد مضبوط کرنا ہوگا ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*