تازہ ترین

وفا قی حکومت کاپٹر ولیم مصنو عا ت کی قیمتوں میں کمی کا اعلان

وفا قی حکومت نے پٹر ول 1.79 روپے ،ڈیزل 2.32 روپے ،مٹی کا تیل 2.66 روپے اور لا ئٹ ڈیزل آئل 2.21 روپے فی لیٹر سستا کر نے کا اعلان کر دیا جس کا اطلا ق فو ری طو ر پر کر دیا گیا اس کا اعلان وفا قی وزیر خزانہ حما د اظہر نے اپنے ٹو یٹ پیغام پر کیا۔
وفا قی حکومت کی جا نب سے پٹر ولیم مصنو عا ت کی قیمتوں میں کمی کا اعلان بلا شبہ خوش آئند اور قا بل تعر یف اقد ام ہے کیو نکہ اس وقت ملک میں پٹرولیم مصنو عا ت کی قیمتیں بہت زیا دہ ہیں جس کے باعث مہنگائی بھی عر وج پر ہے اس وجہ سے عو ام شدید معا شی بحران سے دو چا ر ہے بد قسمتی سے مو جو دہ حکومت کے بر سر اقتدا رآنے کے بعد مہنگائی میں کئی گنا اضافہ ہو ا ہے جو اب بھی تیز ی سے ہو رہا ہے جس کے باعث غر یب عو ام شد ید متاثر ہورہی ہے اب حکومت نے پٹر ولیم مصنو عا ت کی قیمتوں میں مذکو رہ کمی کا اعلان کر کے بڑھتی ہوئی مہنگائی کی رو ک تھا م کے لیے ایک قد م ضرور بڑھا یا ہے اس سے مہنگائی میں کمی ہونی چا ہیئے مگر ہما رے ہاں یہ بد قسمتی ہے کہ یہاں جب کسی چیز کی قیمت میں ایک با ر اضا فہ ہو جائے تو وہ پھر بہت ہی مشکل سے کم ہو تی ہے کیو نکہ حکومت کی جا نب سے اگر ذر ا سی بھی مہنگائی کی جا تی ہے تو پھر اس کا فا ئدہ اٹھا تے ہوئے تا جر اور ذخیر ہ اند وز مز ید خو د سا ختہ مہنگائی میں اضا فہ کر دیتے ہیں چو نکہ ان پر چیک اینڈ بیلنس کا کوئی نظام را ئج نہیں ہے اس لیے ان کو ایسا کرنے کی کھلی چھٹی ملی ہوئی ہے۔
ہم سمجھتے ہیں کہ اگر حکومت کو عوام کو وا قعی صحیح معنو ں میں ریلیف دینا ہے تو وہ بڑھتی ہوئی مہنگائی کو کنٹر ول کرنے کے احسن اقد اما ت کر ے خصو صاً پٹر ولیم مصنو عا ت کی قیمتوں میں مز ید کمی کرنی چا ہیئے کیو نکہ یہ معمو لی کمی کرنے سے مہنگائی کم نہیں ہو گی اس کے علا وہ دیگراشیا ئے خو ر دنی کی قیمتوں کا بھی جا ئز ہ لے کر ان کو کم کرنے کے اقد اما ت کرنے چاہئیں خصو صاً رمضان المبا رک کے مقد س ما ہ میں اس کی بہت ہی ضرورت ہے کیو نکہ اس مقد س ماہ بھی ہما رے تا جر اور ذخیر ہ اند وز غر یب عو ام پر کوئی تر س نہیں کھا تے ان کا مقصد صر ف پیسہ بنانا ہو تا ہے جو وہ بنا تے ہیں ان کی یہ کو شش ہو تی ہے کہ اس مقد س ما ہ میں وہ پو رے سا ل کا منا فع کما لیں کیو نکہ وہ اس ما ہ مقد س کو ©”سیز ن“کانا م دیتے ہیں لیکن افسو س کی با ت یہ ہے کہ دوسر ی جا نب انتظا میہ اور متعلقہ ادا رے اس سلسلے میں اپنے فر ائض انجا م نہیں دیتے جس کی وجہ سے تا جر اور ذخیر ہ اند و ز بھر پو ر فا ئد ہ اٹھا تے ہیں۔
اس لیے یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت کو عو ام کو ریلیف دینے کے لیے بھر پو ر اقد اما ت کرنے چاہئیں جن کا وہ کئی با ر وعدہ بھی کر چکی ہے اس مقصد کے لیے متعلقہ ادا روں کو اپنے فر ائض سر انجا م دینے چاہئیں جو کہ ان کی ڈیو ٹی ہے لیکن اس سلسلے میں ان کی جا نب سے کوتاہی قا بل مذمت ہے جس کا حکومت کو مد ا وا ہ کرنا چا ہیئے جو کہ نہا یت ہی نا گز یر ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*