تازہ ترین

نائن الیون کے20سال مکمل ہونے پرتقریب، بائیڈن کا پھر فوجی انخلا کا دفاع

واشنگٹن (م ڈ)امریکا میں نائن الیون حملوں کے 20 سال مکمل ہونے پر گرانڈ زیرو پر تعزیتی تقریب منعقد کی گئی۔تعزیتی تقریب میں صدر جو بائیڈن، سابق صدور باراک اوباما اور بل کلنٹن بھی شریک ہوئے۔امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون میں صدر جو بائیڈن اور خاتون اول نے یاد گار پر پھول چڑھائے۔میڈیارپورٹس کے مطابق امریکا کی سرزمین پر دہشت گردی کے مہلک ترین حملوں کے ٹھیک 20 سال بعد نیویارک میں گرانڈ زیرو پر گیارہ ستمبر کی برسی کی تقریب منعقد ہوئی ۔اس تقریب کا آغاز ایک گھنٹی ساتھ ہوا اور اس موقع پر حملوں میں مرنے والوں کی یاد میں ایک لمحے کی خاموشی اختیار کی گئی ۔اس تقریب میں صدرجو بائیڈن، سابق صدور براک اوباما اور بل کلنٹن، کانگریس کے ارکان اور دیگر معززین نیویارک میں گیارہ ستمبر کے حملوں کی جگہ پر تعمیر کردہ یادگاری پلازا پر مہلوکین کے رشتہ داروں کے ساتھ شریک ہوئے ۔11ستمبر 2001 کو نیویارک میں ورلڈ ٹریڈ سینٹر کے جڑواں ٹاوروں کو اغوا شدہ طیاروں سے ٹکرا کر تباہ کردیا گیاتھا۔اس حملے میں کم سے کم تین ہزار افراد ہلاک ہوگئے تھے۔امریکی انتظامیہ نے بعد میں ٹریڈ سینٹر کی جگہ پر یادگارتعمیر کردی تھی۔امریکا میں اس کے علاوہ دو اور مقامات پر بھی گیارہ ستمبر کوحملہ آوروں نےاپنے اغوا شدہ طیارے ٹکرائے تھے،انھوں نے امریکی محکمہ دفاع پینٹاگان کی عمارت اور پنسلوینیا میں واقع شانکسویل کے نزدیک ایک میدان پر حملہ کیا تھا۔ان دونوں مقامات پر بھی تقاریب منعقد کی گئیں۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے امریکی صدر صدر جو بائیڈن نے افغانستان سے فوجی انخلا کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ امریکا ہر اس ملک میں نہیں گھس سکتا جہاں القاعدہ موجود ہے۔امریکی صدر نے کہا کہ امریکی افواج نے اسامہ بن لادن کو ہلاک کر کے اپنا مرکزی مشن مکمل کر لیا تھا اس لیے اب ہمارا افغانستان میں رہنے کا کوئی جواز نہیں تھا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*