لو گوں کو غر بت سے نکالنا اولین تر جیح

وزیر اعظم عمر ان خان نے یو این ڈی پی پاکستان کی انسانی تر قی با رے رپورٹ کے اجر اءکے مو قع پر منعقد ہونیو الی تقر یب سے خطا ب کر تے ہوئے ایک با ر وا ضح کیا ہے کہ لو گوں کو غر بت سے نکا لنا حکومت کی تر جیح ہے حکومت چا ہتی ہے کہ غر یب افر اد کو اوپر لایا جائے اس طرح غر یب عو ام تک بر اہ راست سبسڈی پہنچا نے کے لیے سبسڈی لا رہے ہیں شو گر ملز نے سٹے با زی کے ذ ر یعے آپس میں ملکر چینی کی قیمتوں میں اضا فہ کیا ملکی تا ر یخ میں پہلی با ر شو گر ما فیا ز کے خلا ف کا روائی ہو رہی ہے میں یو این ڈی پی رپورٹ کی سفا ر شا ت کا خو د جا ئز ہ لوں گا اس سے غر بت کاخاتمہ بھی ممکن ہو سکے گا۔
وز یر اعظم عمر ان خان کا مو جو دہ بیان ان کے اس سلسلے میں دیئے گئے گذشتہ بیانا ت کا تسلسل لگتا ہے کیو نکہ جب سے وہ بر سر اقتدا ر آئے ہیں انہوں نے ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی کا متعد د با ر نو ٹس لیا ہے لیکن اب تک یہ سب کچھ بے سو د ثا بت ہو ا ہے اس کے علا وہ یہ عو ام کو ریلیف دینے کے بھی کئی با ر وعد ے کر چکے ہیں مگر ان پر گذشتہ ڈھائی سا لوں سے عمل در آمد ہونے کی بجا ئے مہنگائی میں مز ید اضا فہ ہو رہا ہے جو کہ تشو یش کی با ت ہے مو جو دہ حکومت کے بر سر اقتدار آنے کے بعد مہنگائی میں تا ریخی اضا فہ ہو ا ہے جس کی وجہ سے عو ام کی معا شی حا لت رو ز بر و ز ابتر ہو تی جا رہی ہے جو کہ بلا شبہ حکومت کے لیے ایک لمحہ فکر یہ سے کم نہیں ہے۔
اب رمضان المبا رک کے مقد س ما ہ کی آمد آمد ہے لیکن تا جر وں اور زخیر ہ اند و زوں نے اب سے مہنگائی میں مز ید اضا فہ کرنے کے لیے کمر کس لی ہے وہ حکومتی احکا ما ت اور ان کے مقر رہ کر دہ نرخوں کی دھجیاں اڑ اتے ہوئے اپنی من مانے ریٹ پر اشیا ءخو ر د و نو ش فر وخت کرر رہے ہیں عا م ضرورت کی اشیا ءکی قیمتیں مسلسل بڑھ رہی ہیں مگر ان پر چیک اینڈ بیلنس کا کوئی نظام رائج نہیں ہے جس کی وجہ سے تا جر اور ذخیر ہ اند و ز دونوں ہاتھوں سے عو ام کو لوٹتے ہیں۔
ہم سمجھتے ہیں کہ اب تک حکومت کی جا نب سے مہنگائی میں کمی کے وعدوں کو پو ر ا نہیں کیا گیا بلکہ ان میں اضافہ تسلسل سے ہو رہا ہے افسو س کی با ت یہ ہے گذشتہ کا فی عر صے سے چینی کا معا ملہ حل نہیں ہو پا رہا جس سے اند ا زہ لگا یا جا سکتا ہے کہ یہ ما فیا بہت ہی مضبو ط ہے جوکسی کی گر فت میں نہیں آرہا اس معا ملے پر پہلے کمیشن بنا یا گیا اس کی رپورٹ پبلک بھی ہوئی لیکن اس کے با وجو د کوئی خاطر خواہ نتیجہ بر آمد نہ ہو سکا۔
اب ایک با ر پھر وزیر اعظم عمر ان خان نے اپنے مذکو رہ بیان میں یہ با ت کی ہے کہ ملکی تا ریخ میں پہلی مر تبہ شو گر مافیا کے خلا ف کا روائی ہو رہی ہے اس بیان کے تنا ظر میں دیکھا جائے تو بظا ہر تو ایسا کچھ ہو تا نظر نہیں جس سے عو ام شد ید پر یشانی سے دو چا ر ہے۔
اس لیے یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت کو غر یب سے نکا لنے کے بیانا ت کو عملی جامہ پہنا نے چا ہئیں کیو نکہ ان کا صر ف بیانا ت کی حد تک محد ودہونا کسی بھی طرح ٹھیک نہیں ہے ان پر عملی طو ر پر عمل درآمد کرنا چا ہیئے جوکہ نہا یت ہی نا گزیر ہے حکومت کو یہ اقد اما ت فو ری طو ر پر کرنے چاہئیں کیو نکہ رمضان المبا رک کے مقد س ما ہ میں مہنگائی میں مز ید اضا فہ کئے جانے کا امکان ہے جس کو روکنے کے اقد اما ت کرنے چاہئیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*