تازہ ترین

عو ام کی مشکلا ت میں مز ید اضافہ

مو جو دہ حکومت گذشتہ 3 سا لو ں سے ملک میں عو ام کے لیے پید ا ہو نے مشکلا ت کا سا را ملبہ سا بقہ حکومتو ں پرڈال کر عو ام سے جان چھڑ انا چا ہتی ہے ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی سمیت جتنے بھی دیگر مسائل ہیں ان کو حل کر نے کی بجا ئے ان کا قصو ر وا ر سا بقہ حکومتو ں کو ٹھہر ا کر خو د بر ی الذمہ ہونا چا ہتی ہے۔
گذشتہ رو ز وزیر مملکت اطلا عا ت و نشر یا ت فر خ حبیب نے میڈ یا سے گفتگو کر تے ہوئے ایک با ر پھر نو از شر یف کی حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ نو از شر یف حکومت نے 45 فیصد مہنگے بجلی گھر لگا کر قومی جر م کیاہے اور اس طرح ما ضی کی حکومت کے غلط فیصلو ں کی وجہ سے 2030 ء تک ٹیک اویے کی مد میں 3 ہز ار روپے ادا کر نے میں پڑ رہے ہیں۔
دوسر ی جا نب وفا قی وزیر تو انائی نے عو ام کو ایک اور خبر سنا تے ہوئے بتا یا ہے کہ وفا قی حکومت نے ملک میں نئے گیس پر پا بند ی لگا دی ہے ما ضی کے مہنگے سو دو ں کی وجہ سے ٹیر ف بڑ ھا نا پڑ رہا ہے بجلی کا ٹیر ف صر ف ایک روپے 39 پیسے بڑ ھا رہے ہیں 200 یونٹ استعما ل کرنے والے گھر یلو صا ر فین پر نیا ٹیر ف لانگو نہیں ہو گا۔
ادھر وفا قی وزیر خزانہ شو کت تر ین نے بھی آئی ایم ایف سے مذاکر ات کر کے قر ضے کی قسط تو منظو ر کر والی لیکن اس کے بد لے میں آئی ایم ایف نے مز یدسخت شرائط رکھتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں جن اشیا ء پر ٹیکس نہیں ہے ان پر بھی 17 فیصد ٹیکس لگا یا جا ئے اور اس پر عمل در آمد کرنے کے لیے حکومت نے عو ام کو مز ید ٹیکس لگانے کی تیا ریا ں شروع کر دیں۔
اس تما م صو ر تحال کے پیش نظر عو ام ایک با ر پھر مہنگائی کے طو فان تلے دبنے والی ہے۔
ہم سمجھتے ہیں کہ وفا قی وزراء کے مذکو رہ بیا نا ت عو ام کو مز ید پستی کی جا نب لے جا نے میں اہم کردا ر ادا کر یں گے کیونکہ انہوں نے ان بیا نا ت میں اپنے اور اپنی حکومت کو پو ری طرح بر ی الذمہ قر ار دے کر سا رے ملبہ سا بق حکومتو ں پر گر ا کر مطمئن ہو گئے ہیں جوکہ بالکل بھی صحیح اقد ام نہیں ہے کیونکہ ایسے بیا نا ت گذشتہ تین سا لو ں سے دیئے جارہے ہیں جن کو سنکر عو ام کے کان پک گئے ہیں یہاں سوال یہ پید اہو تا ہے کہ اگر سا بقہ حکومتو ں کی پا لیسیا ں خراب یا عوام دشمن تھیں توان کو ان تین سا لو ں میں کتنا اور کہاں تک ٹھیک کیاگیا ان وفا قی وزراء کو اپنی کا ر کر د گی بھی بتانی چا ہیئے یہ نہیں ہوتا کہ اپنی کا کر د گی بتا نے کے بجا ئے سا بقہ حکومتو ں کومسائل کا ذمہ دا ر ٹھہر ا یا جائے۔
اس لیے یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ مو جو دہ حکومت کو ان تما م مسائل کو حل کر نے اقد اما ت کرنے چاہئیں جوکہ انتہائی نا گز یر ہیں حکومت کو سب سے بڑ ا اور اہم کام آئی ایم ایف سے جان چھڑ ا نی چا ہیئے اس نے اقتدار میں آنے سے پہلے اور بعد میں ملک کو لو ٹی ہوئی رقم کی وا پسی کے جو دعو ے کئے تھے ان پر عمل در آمد کر کے یہ رقم وا پس لانے کے لیے اقد اما ت کرنے چاہئیں اگر یہ رقم وا پس آ جا ئے تو پاکستان آئی ایم ایف سے جا ن چھڑ ا سکتی ہے کیونکہ اس کے شر ائط پر ملک میں مہنگائی بہت زیا دہ ہو رہی ہے جو کہ عو ام کے لیے ایک بہت بڑااور گھمبیر مسئلہ ہے جس کی فکر حکومت کو کرنی چا ہیئے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*