تازہ ترین

عوام کو مہنگائی سے بچانےکی پوری کوشش کر رہے ہیں،عمران خان

اٹک(آئی این پی ) وزیراعظم عمران خان نے کورونا کو مہنگائی کی بڑی وجہ قرار د یتے ہوئے کہا ہے کہ تین ماہ میں تیل کی قیمتیں دگنی ہوگئیں، عوام کو مہنگائی سے بچانے کی پوری کوشش کر رہے ہیں، پانچ سال بعد فیصلہ ہوگا، کیا ملک میں غربت کم ہوئی، حکومتی پالیسیوں کی بدولت برآمدات میں اضافہ ہوا، دس سال میں دس ڈیم بنائیں گے، زچہ و بچہ اسپتالوں کی دور افتادہ علاقوں میں بہت ضرورت ہے، وزیراعلی پنجاب، وزیر صحت کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، حکومت اگر علاج کی سہولت نہ دے سکے تو یہ شرمناک ہے ، 2 خاندانوں کی وجہ سے ہمارا ملک بنگلادیش سے بھی پیچھے چلا گیا، 2 خاندانوں نے ملک کو معاشی طور پر بے حد کمزور کر دیا، سندھ میں چلنے والی 3 شوگر ملز کو بند کر دیا گیا، سندھ میں شوگر ملز بند ہونے کی وجہ سے قیمتیں بڑھ گئیں، پتا چلا جولائی سے شوگر ملز نے اسٹے آرڈر لیا ہوا ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے دورہ اٹک کے دوران عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور صوبائی وزیر صحت یاسمین راشد کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، دور دراز علاقوں کو زچہ بچہ ہسپتالوں کی ضرورت ہوتی ہے،ہم دور دراز علاقوں میں زچہ بچہ ہسپتال بنا رہے ہیں جو ایک سے دو سال میں مکمل ہو جائیں گی، غریب، کمزور طبقے اور پسماندہ علاقوں کو اوپر لانا حکومت کی اولین ترجیح ہے، پانچ سالوں میں اگر کمزور طبقے اور پسماندہ علاقے خوشحال ہو گئے تو میں سمجھوں گا کہ ہم کامیاب ہو گئے، پاکستان پہلے ترقی کر رہا تھا جب سے یہ دو خاندان اقتدار میں آئے ملک غریب ہو گیا اور یہ امیر ہو گئے، پاکستان ہندوستان اور بنگلہ دیش سے بھی پیچھے چلا گیا۔ انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا کی عوام نے ہم پر اعتماد کیا پہلے ہم نے مخلوط حکومت بنائی تھی دوبارہ ہم دو تہائی اکثریت سے آئے، تحریک انصاف کو کارکردگی کی وجہ سے ووٹ ملے۔ انہوں نے کہا کہ پانچ سال پورے ہونے کے بعد عوام کارکردگی پر فیصلہ کرے گی کہ پچھلے تیس سالوں میں پاکستان بنگلہ دیش سے بھی پیچھے چلا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم صوبوں کے پسماندہ علاقوں میں ہیلتھ انشورنس دے رہے ہیں، پہلے کبھی کسی نے یہ نہیں سوچا تھا، میں انگلینڈ اور یورپ میں رہا وہاں یہ سہولتیں پیسے دے کر لینی پڑتی ہیں، یہاں ہم ہیلتھ انشورنس مفت فراہم کر رہے ہیں، پنجاب تین سو ارب روپے ہیلتھ انشورنس پر خرچ کر رہا ہے،پنجاب میں ہر شہری کو ہیلتھ انشورنس دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ صحت کارڈکی بدولت نجی ہسپتال بھی اپنا دائرہ کاردیہی علاقوں تک وسیع کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وباءکے باعث دنیا میںمعاشی سرگرمیاں بری طرح متاثر ہوئیں، عالمی سطح پر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بے حد اضافہ ہوا،خوردنی تیل اور دیگر اشیائے خوردونوش کی قیمتیں بھی کورونا وباءکے باعث بڑھیں، تیل درآمد کرنے والے ممالک میں سے پاکستان میں تیل سب سے سستا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت معاشی طور پر کمزور طبقے کےلئے راشن پروگرام لا رہی ہے، چینی کی قیمتوں میں اضافے کا سبب شوگر ملوں کی جانب سے کی جانے والی ذخیرہ اندوزی ہے۔ ۔ قبل ازیں وزیر اعظم سے ضلع اٹک کی پی ٹی آئی قیادت نے ملاقات کی۔ وزیر اعلی پنجاب عثمان بزداد، صوبائی وزیر صحت یاسمین راشد، ممبر قومی اسمبلی میجر(ر)طاہر صادق، اراکین پنجاب اسمبلی سید یاور بخاری، ملک محمد انور، ملک جمشید الطاف اور پی ٹی آئی اٹک کی پارٹی قیادت بھی ملاقات میں شریک تھی۔ وزیر اعظم نے ملاقات کے دوران گفتگو میں کہا کہ ہماری حکومت جب آئی تو اس وقت مجموعی معاشی خسارہ 20 ارب ڈالر تھا، جس کی وجہ سے معاشی صورتحال مشکل تھی، چونکہ ہمارا انحصار دارمدات پر ہے، اس لیے جب باہر قیمتیں بڑھتی ہی تو یہاں بھی قیمتیں بڑھتی ہیں، ہم نے محنت کر کے ایک سال میں خسارہ 20 ارب سے کم کر کے ایک ارب ڈالر پر لے آئے۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ پھر کورونا وبا نے پوری دنیا کو لپیٹ میں لے لیا، پوری دنیا کی معیشت خسارے میں چلی گئی اور بین الاقوامی سطح پر بحران آیا، تاہم ہماری کامیاب پالیسیوں کی بدولت کورونا وبا کا مقابلہ کیا اور اس چیلینج سے نمٹنے میں کامیاب رہے، بین الاقوامی سطح پر ہماری کامیاب پالیسیوں کی پذیرائی کی گئی۔ وزیراعظم نے کہا کہ احساس سبسڈی پروگرام وفاق اور صوبائی حکومت مل کر مستحق گھرانوں کو آٹا، دالوں اور گھی پر 30 فیصد سبسڈی فراہم ہوگی، کامیاب پاکستان پروگرام 20 لاکھ گھرانوں کے لیے سود کے بغیر قرضے فراہم کرے گا، گھر تعمیر کر نے، چھوٹا کاروبار شروع کرنے، اسکلز ٹریننگ پروگرام اور چھوٹے کسان کے لیے قرضہ دیئے جائیں گے، کامیاب جوان پروگرام پہلے سے ہی ملک بھر میں نوجوانوں کو قرضے فراہم کر رہا ہے۔ عمران خان نے مزید کہا کہ ہر گھر میں جا کر احساس سروے کیا گیا تاکہ کوئی مستحق پروگرام سے باہر نہ رہ جائے، کبھی بھی کسی حکومت نے غریبوں کے لیے اتنا کام نہں کیا، ہر سطح پر آپ ان تمام پروگرامز کا فائدہ اپنے اپنے علاقوں میں غربا تک پہنچائیں، صحت کارڈ کا پورے صوبہ پنجاب میں آغاز کرنے لگے ہیں، جس کی بدولت غریب گھرانے معیاری علاج کی سہولیات سے مستفید ہو سکیں گے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*