تازہ ترین

عوام نے احتیاط کرنا چھوڑ دی ،ملک میں کورونا شدت اختیار کر گیا ہے، اسد عمر

اسلام آباد (آئی این پی)وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ ملک میں کورونا وباءشدت اختیار کر گیا ہے، عوام نے احتیاط کرنا چھوڑ دی ہے، انتظامیہ بھی ایس او پیز پر عملدرآمد کرانے میں کامیاب نہیں ہو رہی ہے، عوام نے سنجیدگی کا مظاہرہ نہ کیات و مجبوراً مکمل لاک ڈاﺅن کرنا پڑے گا، ملک بھر کے بڑے ہسپتالوں میں روزانہ 600کورونا کے مریض آرہے ہیں، ہسپتالوں میں دباﺅ بڑھنے لگا ہے، صرف چند دنوں کی گنجائش باقی ہے۔ بدھ کو وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے این سی او سی اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں کورونا وباءکی صورتحال انتہائی سنگین ہے اور وباءکی روک تھام کےلئے سنجیدگی کی اشد ضرورت ہے اور سخت فیصلے لینا پڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کورونا کی پہلی لہر کے دوران قوم کے سنجیدہ روئیے سے کورونا پر قابو پانے میں خاطر خواہ مدد ملی تھی لیکن اب عوام کی جانب سے احتیاط ترک کر دینے سے کورونا میں تشویشناک حد تک مسلسل تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے، عوام کو ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے احتیاطی تدابیر پر عمل کرنا چاہیے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ ملک کے بڑے شہروں میں کورونا کیسز کی تعداد میں تشویشناک اضافہ ہوا ہے اور کورونا مثبت کیسز کے باعث ہسپتالوں پر دباﺅ بڑھ رہا ہے، آکسیجن کے اوپر مریضوں کی تعداد چار ہزار سے زائد ہو گئی ہے، روزانہ چھ سو مریض ہسپتالوں میں پہنچ رہے ہیں اور ہلاکتوں میں بھی رواں ہفتے اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد کرانے میں انتظامیہ بھی کامیاب نہیں ہو رہی ہے، اگر عوام نے سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کیا تو مجبوراً لاک ڈاﺅن کرنا پڑے گا جبکہ ابھی بڑے شہر بند نہیں کر رہے ہیں، ہسپتالوں میں چند دن کی گنجائش رہ گئی ہے، کچھ نئے فیصلے کئے ہیں اور نئی بندشوں کا آغاز کریں گے، تجاویز صوبوں کے ساتھ شیئر کرنے کے بعد امکان ہے کہ بندشوں میں اضافہ ہو گا اور صوبوں کی مدد کےلئے وفاق بروقت تیار ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ خطے کے اندر ہندوستان اور ایران میں بھی خطرناک حد تک کورونا کیسز میں اضافہ ہو رہا ہے، ڈبلیو ایچ او نے بھی کورونا وباءکی نئی لہر کے بارے میں متنبہ کیا ہے، ہندوستان میں کورونا کی شرح میں اضافے کے باعث سفر پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*