علما و مشائخ کی عوام سے رجوع الی اللہ اور احتیاطی تدابیر پر عمل کرنے کی اپیل

coronavirus-threatening-the-whole-world

اسلام آباد(آئی این پی) ملک بھر کے علما و مشائخ کی عوام الناس سے رجوع الی اللہ اور احتیاطی تدابیر پر عمل کرنے کی اپیل کرتے ہوئے دعا کی ہے کہ اللہ کریم انسانیت کو کرونا کی وبا سے نجات دے دیں، کرونا کی وبا سے احتیاط کیلئے عوام الناس سے احتیاطی تدابیر پر مکمل عمل کریں ملک بھر کے علما و مشائخ نے عوام الناس سے کرونا سے بچاﺅ کیلئے رجوع الی اللہ اوراحتیاطی تدابیر پر عمل کی اپیل کی ہے ۔اللہ کریم انسانیت کو کرونا کی وبا سے نجات دے دیں، کرونا کی وبا سے احتیاط کیلئے عوام الناس سے احتیاطی تدابیر پر مکمل عمل کریں ، کرونا کی تیسری لہر سے انسانیت کو بہت خطرات لاحق ہو چکے ہیں ، رجوع الی اللہ اور احتیاطی تدابیر ہی حل ہیں۔ یہ بات چیئرمین پاکستان علما کونسل و نمائندہ خصوصی وزیر اعظم پاکستان برائے بین المذاہب ہم آہنگی و مشرق وسطی حافظ محمد طاہر محمود اشرفی، چیئرمین اسلامی نظریاتی کونسل ڈاکٹر قبلہ ایاز ، صاحبزادہ حسان حسیب الرحمن ، پیر نقیب الرحمن، علامہ سید ضیا اللہ شاہ بخاری ، پیر روح الامین ، علامہ عارف واحدی ، علامہ محمد حسین اکبر، مولانا محمد خان لغاری ، سید امین الحسنات ، مولانا عبد الوہاب روپڑی، قاضی عبد القدیر خاموش ، مفتی محمد زبیر ، قاری حنیف بھٹی ، مولانا حامد الحق حقانی ، مولانا قاسم قاسمی ، علامہ عبد الحق مجاہد ،مولانا اسد اللہ فاروق ، مولانا اسعد زکریا ،مولانا عبید اللہ گورمانی ، علامہ طاہر الحسن ، علامہ زبیر عابد، مولانا محمد شفیع قاسمی، ، پیر اسعدحبیب شاہ جمالی ، مولانا نعمان حاشر ، مولانا طاہر عقیل اعوان، مولانا ابو بکر صابری ،مولانا اسلم صدیقی ، مولانا احسان احمد حسینی ، مولانا محمد اشفاق پتافی ، مولانا عزیز اکبر قاسمی اور دیگر نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا کہ کرونا کی وبا سے انسانیت خطرے میں ہے ۔کرونا کی وبا مسلسل پھیل رہی ہے اور انسانیت کے تحفظ کیلئے رجوع الی اللہ اور احتیاطی تدابیر پر عمل کرنا وقت کی ضرورت ہے ۔جو لوگ کرونا ویکسین نہ لگوانے کا کہہ رہے ہیں دراصل وہ دین اور دنیاوی علوم سے نا واقف ہیں ، انہوں نے کہا کہ کرونا ویکسین روزہ میں بھی لگوائی جا سکتی ہے اور اس پر علما اسلام کا اتفاق ہے۔ وزیر اعظم پاکستان نے مساجد میں ہونے والی احتیاطی تدابیر پر عمل پر جو بیان دیا اس پر شکریہ ادا کرتے ہیں ۔ دریں اثنادارالافتا پاکستان نے ایک بار پھر کرونا ویکسین کے حوالہ سے فتوی جاری کرتے ہوئے کرونا ویکسین لگوانے کو جائز قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کرونا کی وبا سے بچنے کیلئے کرونا ویکسین وقت اور حالات کی ضرورت ہے ۔ شریعت اسلامیہ نے خود کو اور دوسروں کو تکلیف سے بچانے کا حکم دیا ہے اور کرونا ویکسین کے حوالہ سے افواہیں پھیلانا قطعی طو پر درست نہیں ہے ۔ دارالافتا مملکت سعودی عرب ،مجمع الفقہ الاسلامی جدہ ،دارالافتا مصر ،سمیت دنیا اسلام کے اہم ترین ممالک نے کرونا ویکسین کو لگوانا شرعی ذمہ داری قرار دیا ہے تا کہ خود بھی محفوظ ہوں اور دوسروں کو بھی محفوظ رکھیں۔ دارالافتا پاکستان علما اسلام و مفتیان عظام سے مشاورت کے بعد یہ فتوی صادر کر رہا ہے کہ کرونا ویکسین لگوانا ہر انسان کی ذمہ داری ہے اور شریعت اسلامیہ تکلیف سے خود بچنے اور دوسروں کو بچانے کا حکم دیتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مرض کے معاملہ میں طبی ماہرین کی رائے حتمی ہوتی ہے ۔ مجمع الفقہ الاسلامی جدہ جو کہ اسلامی تعاون تنظیم کے تحت کام کرتا ہے میں امام حرم کعبہ الشیخ صالح بن حمید کی سربراہی میں ہونے والے متعدد اجلاسوں کے بعد یہ فتوی صادر کیا گیا ہے اور دنیا اسلام کے اہم قائدین امام حرم کعبہ الشیخ عبد الرحمن السدیس ، مفتی اعظم سعودی عرب ، صدر فلسطین سمیت اہم مسلم رہنما ویکسین لگوا چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مخیرحضرات زکو ةسے ویکسین خرید کر مستحقین زکو کو ویکسین لگواسکتے ہیں اور اس سلسلہ میں مخیر حضرات کو آگے آنا چاہیے اور جو مستحقین ہیں ان کو ویکسین لگوانے کیلئےکردار ادا کرنا چاہیے ۔ دارالافتا پاکستان نے روزے کے دوران ویکسین لگوانے کے فتوی کی بھی مکمل تائید کرتا ہے اور شریعت اسلامیہ کی رو سے ویکسین لگوانے سے روزہ نہیں ٹوٹتا۔انہوں نے کہا کہ احتیاطی تدابیر پر مکمل عمل کرنے کی ضرورت ہے او رمساجد میں جو احتیاطی تدابیر بتائی گئی ہیں ان کو اختیار کرنا چاہیے ۔ نمازیوں کے درمیان طبی ماہرین نے جو فاصلہ بتایا ہے وہ مجبوری اور ضرورت احتیاط کے دائرے میں آتا ہے لہذا فاصلے سے بھی نماز ادا ہو جاتی ہے لہذا اس معاملہ میں کسی قسم کے شک اور وہم میں مبتلا نہیں ہونا چاہیے۔مساجد میںالحمدللہ احتیاطی تدابیر پر عمل ہو رہا ہے ، مزید عمل کی ضرورت ہے ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*