تازہ ترین

عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنےکی ہر ممکن کوشش کی جائے ،عمران خان کی ہدایت

اسلام آباد(نیوز ایجنسیاں)وزیراعظم عمران خان نے ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری کے خلاف بھرپور کارروائی،اوراس ضمن میں ٹیکنالوجی کے موثر استعمال کو بروئے کار لانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاہے کہ عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کی جائے اور ایسا مربوط نظام وضع کیا جائے جس کی بدولت غریب عوام پر کسی قسم کا اضافی بوجھ نہ آئے، ہول سیل منڈیوں میں روزانہ کی بنیاد پر ضروری اشیا خورد ونوش کی قیمتوں کی کڑی نگرانی کے حوالے سے ایک موثر نظام پر عمل درآمد کو یقینی بنا یا جائے، ذمہ داران اور انتظامیہ کی جانب سے قیمتوں کے حوالے سے عوام الناس کو مسلسل باخبر رکھا جائے،وزیراعظم نے منڈیوں میں نیلامی کے عمل کو شفاف بنانے کے حوالے سے ایک مربوط حکمت عملی اپنانے کی ضرورت پر زورد یا تاکہ کاشت کاروں کا استحصال نہ ہوسکے اور ان کو محنت کا جائزہ منافع مل سکے۔ مارکیٹ کمیٹیز کی تشکیل اور انکی کارکردگی کو موثر بنانے کے حوالے سے اقدامات کی بھی ضرورت ہے تاکہ ذخیرہ اندوزوں اور منافع خوروں کے خلاف فوری کارروائی ہوسکے ، غریب آدمی کو روٹی کی دستیابی یقینی بنانا ریاست کی بنیادی ذ مہ داری ہے اور اس ضمن میں ریاست کی جانب سے کوئی کسر روا نہیں رکھی جائے گی۔ احساس پروگرام کے تحت مستحقین کو راشن کی فراہمی کی تجویز بھی زیر غور ہے، حکومت عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہے اور اس ضمن میں ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ بدھ کو وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت شیڈول پرائس کنٹرول کے حوالے سے اقدامات پر وزیراعظم آفس میں اعلی سطحی اجلاس ہوا ۔اجلاس میں وزیراعلیٰ پنجاب سر دار عثمان بزدار، وزیراعلی خیبر پختونخوا محمود خان، معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان ، سیکرٹری داخلہ، چیف سیکرٹری پنجاب، چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا، چیف کمشنر اسلام آباد اور دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔چیف سیکرٹری پنجاب نے اجلاس کے دوران اشیا خورد ونوش کی قیمتوں کے تعین اور ذخیرہ اندوزی پر قابو پانے کے حوالے سے قانونی فریم ورک پر شرکا کو تفصیلی بریفنگ دی۔ اشیا خورد ونوش کی قیمتوں میں غیر معمولی اضافے پر قابو پانے کے حوالے سے قائم شدہ ٹاسک فورس میں تاجروں اور مینو فیکچرز کے نمائندگان کو بھی شامل کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ سات ضروری اشیا خورد ونوش جن میں آٹا، گھی، ٹماٹر اور دالیں وغیرہ شامل ہیں کی قیمتوں کا مسلسل جائزہ لیا جارہا ہے۔ شرکا کو آگاہ کیا گیا کہ قیمتوں میں غیر معمولی اضافے پر قابو پانے کے لیے ایک ویب پورٹل کا اجرا بھی کیا گیا ہے جس کے تحت پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کی کارکردگی کا مسلسل جائزہ لیا جارہا ہے۔ اس کے علاوہ اشیا خورد ونوش کی قیمتوں کے تعین میں پیدا واری لاگت اور موسمیاتی اثرات کے جائزے کے حوالے سے اصولی ضابطہ کار بھی وضع کیا جارہا ہے۔روٹی کی قیمت کو برقرار رکھنے کے حوالے سے نان بائی ایسوسی ایشن کے چند تحفظات سے اجلاس کو آگاہ کیا گیا۔چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا نے صوبہ خیبر پختونخوا میں ذخیرہ اندوزوں اور منافع خوروں کے خلاف کریک ڈان پر اجلاس کو بریف کیا۔ وزیرِ اعظم کو بتایا گیا کہ قیمتوں پر کنٹرول اور عوام الناس کی سہولت کی غرض سے صوبہ پنجاب میں سستے بازاربھی باقاعدگی سے لگائے جا رہے ہیں۔ وزیرِ اعظم کو بتایا گیا کہ وفاقی دارالحکومت میں ہفتے میں تین روز کے لئے سستے بازار لگائے جاتے ہیں۔وزیراعظم عمران خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کی جائے اور ایسا مربوط نظام وضع کیا جائے جس کی بدولت غریب عوام پر کسی قسم کا اضافی بوجھ نہ آئے۔ وزیراعظم نے ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری کے خلاف بھرپور کارروائی،اوراس ضمن میں ٹیکنالوجی کے موثر استعمال کو بروئے کار لانے کی ہدایت کی۔وزیراعظم نے کہا کہ ہول سیل منڈیوں میں روزانہ کی بنیاد پر ضروری اشیا خورد ونوش کی قیمتوں کی کڑی نگرانی کے حوالے سے ایک موثر نظام پر عمل درآمد کو یقینی بنا یا جائے،۔ ذمہ داران اور انتظامیہ کی جانب سے قیمتوں کے حوالے سے عوام الناس کو مسلسل باخبر رکھا جائے،وزیراعظم نے منڈیوں میں نیلامی کے عمل کو شفاف بنانے کے حوالے سے ایک مربوط حکمت عملی اپنانے کی ضرورت پر زورد یا تاکہ کاشت کاروں کا استحصال نہ ہوسکے اور ان کو محنت کا جائزہ منافع مل سکے۔ مارکیٹ کمیٹیز کی تشکیل اور انکی کارکردگی کو موثر بنانے کے حوالے سے اقدامات کی بھی ضرورت ہے تاکہ ذخیرہ اندوزوں اور منافع خوروں کے خلاف فوری کارروائی ہوسکے۔ وزیرِ ا عظم نے کہا کہ غریب آدمی کو روٹی کی دستیابی یقینی بنانا ریاست کی بنیادی ذ مہ داری ہے اور اس ضمن میں ریاست کی جانب سے کوئی کسر روا نہیں رکھی جائے گی۔ احساسپروگرام کے تحت مستحقین کو راشن کی فراہمی کی تجویز بھی زیر غور ہے، حکومت عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہے اور اس ضمن میں ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*