صنعتی شعبے کا فروغ حکومت کی اولین ترجیح ہے ، عمران خان

PM Imran Khan

اسلام آباد(آئی این پی ) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ غریب افراد کو بینکوں سے قرضوں کے حصول کے دوران ہر قسم کی آسانی فراہم کی جائے ، ان کے عزت نفس کا خیال رکھا جائے، تمام صوبے آن لائن پورٹل کا بھر پور استعمال کریں تاکہ منظوری کے عمل کو مکمل طور پر شفاف اور جلد ممکن بنایا جائے۔ جمعرات کو وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت قومی رابطہ کمیٹی برائے ہاوسنگ، تعمیرات و ڈیویلپمنٹ کا ہفتہ وار اجلاس ہوا جس میں گورنر اسٹیٹ بینک نے غریب اور متوسط طبقے کے لیے آسان اقساط پر قرضوں کی فراہمی کے حوالے سے بریفنگ دی۔ نیشنل بینک، الائیڈ بینک، میزان بینک، بینک الحبیب، حبیب بینک اور بینک آف پنجاب کے سربراہان نے وزیر اعظم کو نیا پاکستان ہاو¿سنگ پروگرام کے تحت قرضوں کی فراہمی کے بارے آگاہ کیا۔ اجلاس کو بتایا گیا کے قرضوں کی حصولی کے عمل کو آسان ترین بنایا گیا ہے اور اس ضمن میں برانچز میں الگ ڈیسک بنائے گئے ہیں۔ پرایوئٹ بینک اسلامی اور روایتی بینکاری دونوں کے تحت قرضے فراہم کریں گے۔ بینکوں کے سربراہان نے حکومت کو تعمیرات سیکٹر کے فروغ اور غریب طبقے کو اپنا گھر بنانے کی سہولت مہیا کرنے پر مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے وزیر اعظم اور حکومتی معاشی ٹیم کو کرونا وبا کے پیش نظر کاروباری طبقے بشمول بینکوں کے لیے کیے گئے اقدامات پر خراج تحسین پیش کیا۔ اجلاس کو آگاہ کیا گیا کے قرضوں کی فراہمی کے عمل کو کم مدت بنانے کے لیے ٹیکنالوجی کا استعمال کیا جا رہا ہے تاکہ قرضہ لینے والے افراد کے کوائف کی تصدیق جلد ہو سکے۔ وزیر اعظم کو آگاہ کیا گیا کہ مزید پرائیویٹ بینک بھی قرضوں کی فراہمی شروع کر دیں گے۔ وزیراعظم نے تاکید کی کے غریب افراد کو بینکوں سے قرضوں کے حصول کے دوران ہر قسم کی آسانی فراہم کی جائے اور خاص طور پر ان کے عزت نفس کا خیال رکھا جائے۔ چیف سیکریٹری پنجاب نے اجلاس کو بتایا کے تعمیرات اور بلڈرز کے لیے آن لائن پورٹل کا اجرا کیا جاچکا ہے جس پر آب تک 6994 درخواستیں موصول ہوئی ہیں اور ان میں 54فیصد کی منظوری دی جا چکی ہے۔ اجلاس کو آگاہ کیا گیا متعلقہ اداروں کو بھی آن لائن پورٹل کے ذریعے منسلک کیا گیا ہے تاکہ منظوری کے عمل میں تاخیر نہ ہو۔ ہر منظوری کے عمل کو وقت کا پابند بنایا گیا ہے اور درخواست دہندہ اپنے کیس کے بارے میں موبائل ایپ کے ذریعے آگاہ رہتا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ تمام صوبے آن لائن پورٹل کا بھر پور استعمال کریں تاکہ منظوری کے عمل کو مکمل طور پر شفاف اور جلد ممکن بنایا جائے۔دریں اثناء وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ صنعتی شعبے کا فروغ حکومت کی اولین ترجیح ہے جس کی بدولت نہ صرف ملک میں معاشی عمل تیز ہوگا، نوکریوں کے مواقع پیدا ہوں گے بلکہ اس سے دولت کی پیداوار ممکن ہوگی جس سے ملکی معیشت مستحکم ہوگی۔ وزیرِ اعظم نے برآمدکنندگان اور صنعت کاروں کو یقین دلایا کہ ان کی جانب سے پیش کی جانے والی ہر قابل عمل تجویز پر غور کیا جائے گا تاکہ کاروباری برادری کے لئے زیادہ سے زیادہ آسانیاں اور سہولیات فراہم کی جا سکیں۔ جمعرات کو وزیر اعظم عمران خان سے پاکستان کے معروف برآمد کنندگان نے ملاقات کی جس میں وفاقی وزرا محمد حماد اظہر، سید علی زیدی، فیصل واوڈا، مشیران عبدالرزاق داد، ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، ڈاکٹر عشرت حسین، معاون خصوصی سید ذوالفقار عباس بخاری، گورنر سندھ عمران اسمعٰیل، گورنر سٹیٹ بینک رضا باقر، چیئرمین ایف بی ار، چیئرمین ای او بی آئی اور سینئر افسران نے شرکت کی ۔ وفد میں اووسیز انویسٹرز چیمبر آف کامرس، پاکستان بزنس کونسل، آٹو موبیلز سیکٹر، ٹینرز ایسوسی ایشن، ہوزری، فشریز، گارمنٹس، فارماسوٹیکل انڈسٹری، اسٹیل، ٹیکسٹائل و دیگر صنعتوں سے وابستہ ممتاز کاروباری شخصیات شریک تھیں۔وفد نے برآمدات میں اضافے کے حوالے سے حکومتی پالیسی اور اقدامات پر وزیر اعظم اور ان کی معاشی ٹیم کو خراج تحسین پیش کیا۔ وفد نے وزیرِ اعظم کو بتایا کہ حکومتی پالیسیوں کے نتیجے میں کاروباری برادری کا اعتماد بحال ہوا ہے جس کے نتیجے میں معاشی عمل میں تیزی آئی ہے۔ اس حوالے سے وفد نے برآمدات میں خاطر خواہ اضافے، ایکسپورٹ آرڈرز، اندرونی طور پر سیمنٹ، اسٹیل ، آٹو موبیلز کی فروخت میں خاطر خواہ اضافے کا ذکر کیا۔ وفد ممبران نے ایکسپورٹ میں اضافے اور ملکی استعداد کو برے کار لانے کے حوالے سے مختلف تجاویز وزیرِ اعظم کو پیش کیں۔ وزیرِ اعظم عمران خان نے ایکسپورٹرز کے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ صنعتی شعبے کا فروغ حکومت کی اولین ترجیح ہے جس کی بدولت نہ صرف ملک میں معاشی عمل تیز ہوگا، نوکریوں کے مواقع پیدا ہوں گے بلکہ اس سے دولت کی پیداوار ممکن ہوگی جس سے ملکی معیشت مستحکم ہوگی۔ وزیرِ اعظم نے برآمدکندگان اور صنعت کاروں کو یقین دلایا کہ ان کی جانب سے پیش کی جانے والی ہر قابل عمل تجویز پر غور کیا جائے گا تاکہ کاروباری برادری کے لئے زیادہ سے زیادہ آسانیاں اور سہولیات فراہم کی جا سکیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*