سندھ حکومت کا بھی کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد کےلئے فوج طلب کرنے کا فیصلہ

کراچی (آئی این پی) سندھ حکومت نے بھی کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد کےلئے فوج طلب کرنے کا فیصلہ کر لیا، وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ نے وفاق سے انٹرنیشنل فلائٹ آپریشن بند کرنے ، این اے 249 کاالیکشن ملتوی کرنے کی استدعا کر دی، پیر کو کورونا ٹاسک فورس کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے مرادعلی شاہ نے کہا کہ ہم نے آج فیصلہ کیا ہے کہ فوج کے حوالے سے ریکوزیشن بھیج دیں، فوج ہمارے ساتھ پہلے ہی کام کررہی ہے، سول انتظامیہ کیساتھ جہاں ضرورت ہوئی فوج کام کرے گی، کوروناکی تیسری لہربہت خطرناک ہے ، ہم چاہتے ہیں کہ این اے249کا الیکشن ملتوی ہو ، ایسی صورتحال نہیں کہ کوئی بڑاایونٹ ہوسکے،ہمیں کوروناکے حوالے سے سب سے زیادہ تشویش ہے، این سی سی سے کہا کہ انٹر بس سروس بندکریں جونہیں کیاگیا، سندھ نے وبا کو قابو کرنے میں بہترسے بہتراقدامات کئے، ہم نے اسپتالوں میں کیپسٹی کوبڑھایا، ہمارے ریکورہونےوالے مریضوں کی تعداد94فیصدہے جبکہ پورے پاکستان کی ایوریج ریکور ہونے کی 86فیصد ہے ، انہوں نے کہا کہ جب سے کورونا کا پہلا کیس آیا آج 425دن ہوگئے ہیں، ابتک 35 لاکھ 66 ہزار سے زائد کورونا ٹیسٹ کرچکے ہیں، گزشتہ روز سندھ میں کورونا کے 952مثبت کیسز سامنے آئے اور مزید 6لوگ کورونا سے انتقال کرگئے، جس کے بعد سندھ میں تقریبا 4600کورونا سے اموات ہوچکی ہیں،وزیراعلی سندھ نے کہا کہ ہمارے آئیسولیشن تقریبا ختم ہیں، پاکستان میں کل سندھ سے 5.62فیصد مثبت کیسز سامنے آئے، دیکھا جائے تو پاکستان میں پوزیٹو کیسز میں سندھ سب سے کم ہے، پنجاب 11.26، کے پی 12.40، اسلام آباد میں 12.60فیصد شرح ہے، یہ نمبرز دیکھ کر لگتا ہے کہ ابھی بھی سندھ کی شرح باقی صوبوں سے آدھی ہے،مراد علی شاہ نے کہا کہ ہمیں کوروناکے حوالے سے سب سے زیادہ تشویش ہے، این سی سی سے کہا کہ انٹر بس سروس بندکریں جونہیں کیاگیا، سندھ نے وبا کو قابو کرنے میں بہترسے بہتراقدامات کئے، ہم نے اسپتالوں میں کیپسٹی کوبڑھایا، ہمارے ریکورہونےوالے مریضوں کی تعداد94فیصدہے جبکہ پورے پاکستان کی ایوریج ریکور ہونے کی 86فیصد ہے،اموات کی شرح سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ سندھ کی شرح اموات 1.6فیصد ، پنجاب اور کے پی 2.75فیصد، بلوچستان کی 1.07فیصد ہے، ہمارے پاس سہولتیں زیادہ ہیں باوجوداس کے ہم گھبرائے ہوئے ہیں، گزشتہ 7دن میں سندھ کے مثبت کیسز اور شرح اموات بڑھی ہے، این سی سی کے مطابق صوبے اضافی اقدامات کا اختیار رکھتے ہیں، ایک ہفتے میں کراچی ایسٹ میں مثبت کیسز کی شرح 21فیصد ، کراچی ساتھ 12 فیصد ، کراچی سینٹرل میں9فیصد اور حیدرآباد میں 16فیصد ہے ، سندھ میں کورونا مریضوں کیلئے مختص آکسیجن بیڈز 664موجود ہیں جبکہ 1872ایچ ڈی یو بیڈز میں سے 296میں آکسیجن کی سہولت ہے، آج کی تاریخ میں 47لوگ وینٹی لیٹرپرہیں جبکہ 453ہمارے پاس آئی سی یوبیڈز بھی موجودہیں،انھوں نے مزید کہا کہ اگر پورے ملک کو دیکھا ہمارے صورتحال بہترہے، مردان میں31فیصد کورونا پوزیٹو ہیں، پشاور میں کورونا مثبت کیسز کی شرح 24 فیصد کے قریب ہے، صوابی میں کورونا پوزیٹو 20 فیصد ہے،وزیراعلی سندھ نے کہا کہ وفاق سے سندھ کو5لاکھ 62ہزارسائنو فارمز کے ڈوزز ملے، جس میں سے کوکین سائنو کے 11ہزار ڈوز اور 80ہزار سائنوویک کے ڈوزز ملے ہیں، ہم5لاکھ41ہزار809 ڈوز اپنے ڈسٹرکٹس کو ایشو کرچکے ہیں اور کین سینو کے 11ہزارڈوززمیں سے10ہزار 902لگ چکی ہیں،مراد علی شاہ نے بتایا کہ وفاق نے کہاہے آج 1لاکھ 70ہزار سائنو فارم کی ڈوزز سندھ کوملیں گی، چائنیز وفاقی حکومت کیساتھ ڈیل کرنے کی کوشش کرتے ہیں، ہم نے بڑی کوشش کی کہ ویکسین خودمنگوائی جائے،آکسیجن سپلائی کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت کے 3اسپتالوں میں آکسیجن جنریشن پلانٹ موجود ہیں، ٹراماسینٹر، گمبٹ اور اوجھا میں آکسیجن جنریٹ کرتے ہیں،کورونا ٹاسک فورس کے اجلاس میں ہونے والے فیصلوں سے متعلق وزیراعلی سندھ نے بتایا کہ سرکاری دفاترمیں 20فیصد سے زائد عملہ نہ بلایا جائے ، سرکاری دفاترکے اوقات صبح9 بجے سے 2 بجے تک کردیئے گئے ، ملازمین کی چھٹی نہیں ہے دفتری اوقات میں فون پر ساتھ رہناہے، ملازمین کو کام دےدیاجائےگا وہ گھروں سے کام کریں گے،مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سندھ میں اسکولز،کالجز،یونیورسٹیز مکمل طورپر بند کررہے ہیں ، ریسٹورنٹس میں آﺅٹ ڈور ڈائننگ پابندی کے باوجود جاری تھی تاہم اب ریسٹورنٹس میں ٹیک اوے اور ہوم ڈیلیوری کھلی رہے گی اور ریسٹورنٹس میں آﺅٹ ڈورڈائننگ پرپابندی رہے گی، پرائیوٹ دفاتر میں 50فیصد اسٹاف پر عملدرآمد نہیں کیاجارہا، پرائیوٹ دفاتر میں 50فیصد سےزائداسٹاف پر دفتر سیل کر دیا جائے گا جبکہ ہر دکان میں 50فیصد سے زائد کسٹمرز کی اجازت نہیں ہے، کسی بھی دکان میں شہریوں کو بغیرماسک داخلے کی اجازت نہیں،وزیراعلی سندھ کا کہنا تھا کہ دکان مالک دکان کے حساب سے گاہک کواندرداخل ہونے دے،اگرکہیں کوئی خلاف ورزی کرے گا تو مجبورا دکان سیل کرنا پڑے گی، جوایس اوپیزفالوکرےگااسے اجازت ہے وہ اپناکاروبارکرے،مراد علی شاہ نے سب کو تلقین کی کہ عیدپرخاص طورپرایس اوپیزکاخیال رکھیں، گزشتہ سال بھی لوگوں سے گزارش کی تھی عیدپرجہاں ہیں وہی رہیں، اس سال بھی سب سے گزارش کرونگاکہ اس عیدپرسب جوجہاں ہیں وہی پرہی رہیں،انھوں نے کہا کہ کراچی ایئررپورٹ پر سندھ حکومت نے اپنی ڈیسک قائم کررکھی ہے، وفاق سے درخواست کروں گا وہ بھی انٹرسٹی ٹرانسپورٹ بند کرے ، پوری دنیانے اپنے بارڈرزکنٹرول کیے ہیں، ہمارے ملک کی انٹری کئی ممالک میں بندہوگئی ہے، وفاق سے گزارش کروں گا کہ انٹرنیشنل فلائٹس بند کریں ، ہم لوگوں کو مرتے دیکھ نہیں سکتے، بہت دن انتظارکیاکہ کوئی قدم اٹھائے جائیں، جب سے کورونا آیا اپریل کامہینہ دنیا کیلئے براثابت ہوا،وزیراعلی سندھ کا کہنا تھا کہ این سی سی میں تجویزآئی تھی سول ایڈمنسٹریریشن کیساتھ فوج بلائی جائے، آج میں نے میٹنگ کی جس میں کابینہ کے وزراشامل تھے، ہم نے آج فیصلہ کیا ہے کہ فوج کے حوالے سے ریکوزیشن بھیج دیں، فوج ہمارے ساتھ پہلے ہی کام کررہی ہے، سول انتظامیہ کیساتھ جہاں ضرورت ہوئی فوج کام کرے گی،این اے249الیکشن سے متعلق مراد علی شاہ نے مزید کہا کہ کوروناکی تیسری لہربہت خطرناک ہے ، ہم چاہتے ہیں کہ این اے249 کا الیکشن ملتوی ہو ، ایسی صورتحال نہیں کہ کوئی بڑاایونٹ ہوسکے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*