تازہ ترین

زیر زمین پانی کی سطح گرنا باعث تشو یش ہے

ایک خبر کے مطا بق صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ میں زیر زمین پانی کی سطح خطرنا ک حد تک گر رہی ہے اور اب یہ با رہ سو فٹ جا پہنچی ہے اس سطح تک گر نے کے باعث پانی کی شد ید قلت پید ا ہو رہی ہے کیونکہ جتنی سطح زیا دہ گر ے گی پانی کم ہونا شر وع ہو جائے گا اور اس طرح شہر میں پانی کی شد ید قلت پید ا ہو جا ئے گی زیر زمین پانی کی سطح گر نے کی کئی وجو ہا ت ہیں جن میں سب سے بڑی وجہ اس سا ل بر فبا ری اور با رشوں کا زیا دہ نہ ہونا بھی ہے اس کے سا تھ سا تھ پانی کی غیر منصفانہ تقسیم کا پانی کی شد یدقلت کا سبب بن رہی ہے اس وقت بھی شہر کے ایسے علاقے ہیں جہاں سرے سے سر کا ری پانی کے کوئی کنکشن ہی نہیں اگر کہیں ہیں توان میں پانی نہیں آتا لیکن اس کے بر عکس ایسے علا قے بھی ہیں جہاں بے حسا ب پانی نلکوں میں آتا ہے اس کے سا تھ سا تھ ٹینکر ما فیاکو بھی پانی بھا ری مقد ار میں مل رہا ہے اور وہ زو ر و شو ر سے پانی اپنے من ما نے نر خو ں پر فر و خت کر رہے ہیں اس سے یہ سوا لا ت جنم لیتے ہیں کہ ان کے پا س پانی کہاں سے آتا ہے متعلقہ ادا رو ں کو اس کی بڑے پیما نے پر تحقیقا ت کرنی چا ہیئے پانی کی قلت کی ایک او روجہ صو بے میں ڈیمز کا نہ ہونا بھی ہے کیونکہ زر اعت میں بھی پینے کا پانی استعمال ہو رہا ہے اگر ڈیمز ہوتے تو ان میں با رشو ں کا پانی جمع کر کے اس کو زر اعت کے لیے استعما ل کیا جا تا جس سے پینے کے پانی کی بچت ہوتی اس کے سا تھ سا تھ افسو سناک با ت یہ ہے کہ حکومت اور متعلقہ ادا رے اس اہم مسئلے کو سنجید ہ نہیں لے رہے جو کہ بہت ہی تشو یش کی با ت ہے صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ میں پانی کی قلت کے با رے میں اس سے قبل بھی ان ہی سطو ر میں با ر ہا مرتبہ ذکر کیا جا چکا ہے اور اس با رے تجا ویز بھی دی گئی ہیں مگر اس کے با وجو د حکومت اور متعلقہ ادا رے اس جا نب کوئی توجہ نہیں دے رہے ہم سمجھتے ہیں کہ اگر یہ اسی طرح ہو تا رہا تو پھر پانی کی شد ید قلت پید ا ہونے کا خدشہ ہے جوکہ بلا شبہ ٹھیک نہیں ہے اس سے بڑے مسائل پید ا ہو ں گے۔
اس لیے یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت اورمتعلقہ ادا رو ں کو اس مسئلے کو سنجیدہ لیتے ہوئے اس سلسلے میں صر ف بیانا ت یا دعو ے کرنے کی بجا ئے عملی طو ر پر اقد اما ت کرنے چا ہئیں جوکہ نہا یت ہی نا گز یر ہیں صو بے میں ڈیمز کی تعمیر کرنے کے سلسلے میں پیش رفت کرنی چا ہیئے اس کے سا تھ سا تھ پانی کی منصفانہ تقسیم کو یقینی بنا ناچا ہیئے کیونکہ ایسا کرنے سے شہر کے تما م علا قو ں میں پانی کی دستیا بی ممکن بنائی جا سکے گی یہاں پر پانی سپلا ئی کرنے والے محکمو ں کو احسن اقد اما ت کرنے چاہئیں کیونکہ غفلت اور لا پر واہی کا عنصر یا یا جاتا ہے جوکہ نہیں ہونا چا ہیئے ان کو اپنے فرائض احسن طر یقے سے ادا کرنے چاہئیں۔
امید ہے وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی قیا دت میں قائم مخلو ط حکومت جس طر ح صو بے کے باقی مسائل حل کرنے کے لیے کو شا ں ہیں یہ اہم مسئلہ بھی حل کر وانے کے لیے متعلقہ محکمو ں کو ہد ایا ت جا ری کر یں گے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*