تازہ ترین

راولپنڈی ٹیسٹ سنسنی خیز مرحلے میں داخل، جنوبی افریقہ کو243رنز ،پاکستان کو9وکٹیں درکار

راولپنڈی(سپورٹس ڈیسک)پاکستان اور جنوبی افریقہ کے مابین دوسرا ٹیسٹ سنسنی خیز مرحلے میں داخل ہو گیا ہے۔پاکستان کی جانب سے دئےے گئے371رنز ہدف کے تعاقب میں جنوبی افریقا نے ایک وکٹ کے نقصان پر 127رنز بنالیے ہیں۔ مارکرم 59اور ڈاسن 48رنز کے ساتھ وکٹ پر موجود ہیں۔ٹیسٹ میچ کے آخری روز جنوبی افریقہ کو جیت کیلئے مزید243رنز درکار ہیں اور اسکی9وکٹیں ابھی باقی ہیں۔قبل ازیں محمد رضوان اور نعمان علی کی شاندار بیٹنگ کو بدولت پاکستانی ٹیم دوسری اننگز میں 298رنز بنا کر آﺅٹ ہو گئی ۔ محمد رضوان نے اپنے انٹرنیشنل ٹیسٹ کیریئر کی پہلی سنچری سکور کی اورسب سے زیادہ 115رنز بنا کر ناقابل شکست رہے جبکہ نعمان علی نے45رنز بنائے۔اتوار کو راولپنڈی میں کھیلے جارہے دوسرے ٹیسٹ میچ کے چوتھے روز قومی ٹیم نے 129رنز 6کھلاڑی آﺅٹ پر اپنی اننگز کا آغاز کیا تو کریز پر موجود حسن علی زیادہ دیر تک دوسرے اینڈ پر موجود محمد رضوان کا ساتھ نہ دے سکے اور 143کے مجموعی اسکور پر 5رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔ان کے آﺅٹ ہونے کے بعد ٹیم کے اسکور کو محمد رضوان کے ساتھ آگے بڑھانے کے لیے یاسر شاہ آئے اور ان دونوں کھلاڑیوں نے مل کر 53رنز کی شراکت قائم کی تاہم 196کے مجموعی اسکور پر یاسر شاہ بھی آﺅٹ ہوگئے، انہوں نے 23رنز اسکور کیے۔196پر 8وکٹیں گنوا دینے کے بعد قومی ٹیم کے اگلے آنے والے کھلاڑی نعمان علی تھے جو کھانے کے وقفے تک محمد رضوان کے ہمراہ کیریز پر موجود تھے۔چوتھے دن جب میچ میں کھانے کا وقفہ ہوا تو قومی ٹیم نے 8وکٹوں کے نقصان پر 217رنز بنا لیے تھے۔وقفے کے بعد جب کھیل کا آغاز ہوا تو محمد رضوان نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا سلسلہ جاری رکھا اور محمد رضوان نے ٹیسٹ میچ میں اپنی پہلی سنچری اسکور کی۔یہی نہیں بلکہ محمد رضوان اور نعمان علی نے نویں وکٹ کے لیے 97رنز کی شراکت بھی قائم کی اور نعمان علی 293کے مجموعی اسکور پر 45رنز بنا کر آﺅٹ ہوگئے۔جس کے بعد اگلے آﺅٹ ہونے والے کھلاڑی شاہین شاہ آفریدی تھے جو صرف 4رنز بنا سکے، یوں قومی ٹیم نے دوسری اننگز میں 298رنز اسکور کیے۔قومی ٹیم کی جانب سے دوسری اننگ میں محمد رضوان نے سب سے زیادہ 115رنز بنائے اور وہ ناٹ آﺅٹ رہے، ان کے علاوہ نعمان علی45، اظہر علی33اور فہیم اشرف29رنز بنا کر نمایاں رہے۔دوسری اننگ میں جنوبی افریقی ٹیم کی جانب سے جیورج لنڈی نے 5کھلاڑیوں جبکہ کیشو ماہاراج نے 3 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*