تازہ ترین

حکومت کا کالعدم ٹی ایل پی سے عسکریت پسند تنظیم کے طور پرنمٹنے کا اعلان

اسلام آباد(آئی این پی)وفاقی حکومت نے کالعدم ٹی ایل پی کے مطالبات کو ماننے سے انکار کرتے ہوئے مظاہرین کو جہلم ہی میں روکنے کا فیصلہ کیا ہے،جہاں رینجرز تعینات کر دی گئی ہے ۔ وزیراعظم نے شہریوں کا راستہ روکنے والوں سے سختی سے نمٹنے کی ہدایت کردی اور کہا ہے کہ ایسے مطالبات تسلیم نہیں کئے جا سکتے جو پاکستان کے مفاد میں نہ ہوں، پولیس والوں کو مارنا سیاسی کارکنان کاکام نہیں اور کسی کو بھی قانون کو ہاتھ میں لینے نہیں دیا جائے گا،حکومت چاہتی ہے مذاکرات سے معاملات حل ہوں، راستے بند کرنے والوں کے خلاف سختی سے نمٹا جائےگا۔بدھ کووزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا، جس میں 16نکاتی ایجنڈے پر غور کیا ، وزیراعظم عمران خان نے دورہ سعودی عرب پر کابینہ کو اعتماد میں لیا، سعودی عرب کی جانب سے مالی معاونت پر اجلاس کو بریفنگ دی گئی۔کابینہ کو وزیر داخلہ کی سربراہی میں وزرا کی کمیٹی کالعدم ٹی ایل پی سے مذاکرات کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔ شیخ رشید نے کابینہ کو کالعدم تنظیم کے ساتھ موجودہ ڈیڈ لاک سے آگاہ کیا، کابینہ کو معاملہ سے متعلق قانونی امور سے بھی آگاہ کیا گیا۔ کابینہ اراکین نے کہا کہ جانی و ملکی املاک کو نقصان پہنچانے والے عناصر کو رعایت نہیں دینی چاہیے۔ اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ مظاہرین کو جہلم سے آگے کسی صورت نہیں آنے دیا جائے گا، مظاہرین کوروکنے کےلئے رینجرز کو بھی استعمال کیاجائے گا، مظاہرین کو روکنے کےلئے پشاور جی ٹی روڈ بھی بند کی جائے گی۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے کالعدم تنظیم کے غیرقانونی مطالبات نہ ماننے کا فیصلہ کیا جبکہ وفاقی کابینہ نے ریاست کی رٹ قائم رکھنے کا بھی فیصلہ کیا۔ذرائع کے مطابق حکومت نے کالعدم تنظیم کے مظاہرین کو جی ٹی روڈ پر روکنے کا فیصلہ کیا ہے اور وزیراعظم نے شہریوں کا راستہ روکنے والوں سے سختی سے نمٹنے کی ہدایت کردی ہے۔اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ پولیس والوں کو مارنا سیاسی کارکنان کاکام نہیں اور کسی کو بھی قانون کو ہاتھ میں لینے نہیں دیا جائے گا، سیاسی مقاصد کیلئے تشدد کا راستہ اختیار نہیں کرنے دیں گے۔انہوں نے کہا کہ احتجاج کی آڑ میں پولیس والوں کو مارنا ظلم ہے، حکومت چاہتی ہے مذاکرات سے معاملات حل ہوں، راستے بند کرنے والوں کے خلاف سختی سے نمٹا جائےگا، ایسے مطالبات تسلیم نہیں کئے جا سکتے جو پاکستان کے مفاد میں نہ ہوں۔دریں اثناءوفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کالعدم تنظیم ٹی ایل پی کو عسکریت پسند گروپ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسے بھارت کی مالی معاونت حاصل ہے،کالعد م تنظیم کو بھارت سے سوشل میڈیا کے ذریعے مدد فراہم کی جا رہی ہے، پاکستان نے بڑی بڑی شدت پسند تنظیموں کو شکست دی، اس تنظیم کی کوئی حیثیت نہیں ، تحریک لبیک پاکستان کو ایک عسکریت پسند تنظیم کے طور پر لیا جائے گا،ٹی ایل پی بہانے بہانے سے دھرنا دینے کی عادی بن چکی ، ریاست کے صبر کی حدہوتی ہے، ریاست کی رٹ کی چیلنج کرنا کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا، کوئی ریاست پاکستان کو کمزور نہ سمجھے، ٹی ایل پی کی قیادت چاہتی ہے کہ لوگوں کا خون سڑکوں پر نظر آئے،سادھو کی میں 27کلاشنکوف بردار کے دھرنے میں شامل ہونے کی اطلاعات ملی ہیں، اس لیے کوئی غیر قانونی احتجاج برداشت نہیں کریں گے،کا، فیک نیوز پھیلانے والے ہوش کے ناخن لیں، الیکشن کمیشن سے درخواست ہے کہ لاہور کا ضمنی الیکشن ای وی ایم کے ذریعے کرایا جائے۔بدھ کو وفاقی کابینہ اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کے حوالے سے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے بتایا کہ آج ہونے والے کابینہ اجلاس میں بھی حتمی فیصلہ لیا گیا کہ کسی بھی صورت میں ریاست کی رٹ کو چیلنج کرنے والے عناصر کو برداشت نہیں کیا جائے گا،کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ کالعدم ٹی ایل پی کو عسکریت پسند گروہ کے طور پر ٹریٹ کیا جائے گا،کالعدم ٹی ایل پی بہانے بہانے سے دھرنا دینے کی عادی بن چکی ہے، ریاست کے صبر کی حدہوتی ہے، ریاست کی رٹ کی چیلنج کرنا کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا،کابینہ میں فیصلہ ہوا کہ کسی کو طاقت کے زور پر اپنا ایجنڈا مسلط کرنے کی اجازت نہیں دیں گے،نظریہ رکھنا ہر کسی کا حق ہے مگر یہ اختیار کسی کو نہیں کہ مخالف پر بندوق تان لے۔انہوں نے الزام لگایا کہ کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی)کو بھارت کی مالی معاونت حاصل ہے اورکوئی ریاست پاکستان کو کمزور نہ سمجھے،پاکستان نے القاعدہ جیسی دہشت گرد تنظیم کو شکست دی ہے، پہلے بھی ریاست کو کمزور سمجھنے کی غلطی کی انہیں بعد میں احساس ہوا۔فواد چوہدری نے ٹی ایل پی کا حوالہ دے کر کہا کہ اس تنظیم کی کوئی حیثیت نہیں ہے، ان کے پاس دہشت گرد تنظیموں کی طرح ہتھیار نہیں ہیں اس لیے کسی مائی کے لال میں جرات نہیں کہ وہ ریاست کو بلیک میل کرے۔وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ پہلے 6مرتبہ تماشہ لگ چکا ہے اور ہم نے بڑے صبر کا مظاہرہ کیا جس کی وجہ صاف ظاہر ہے کہ لوگوں کو نقصان نہ پہنچے، ٹی ایل پی کی قیادت چاہتی ہے کہ لوگوں کا خون سڑکوں پر نظر آئے۔فواد چوہدری نے کہا کہ ٹی ایل پی نے گزشتہ احتجاج کے دوران 6پولیس اہلکاروں کو شہیدکیا،اس احتجاج میں بھی ٹی ایل پی کے ساتھ جھڑپ میں 3پولیس اہلکار شہید اور 49سے زائد زخمی ہوچکے ہیں،ابھی بھی سادھو کی میں 27کلاشنکوف بردار کے دھرنے میں شامل ہونے کی اطلاعات ملی ہیں، اس لیے کوئی غیر قانونی احتجاج برداشت نہیں کریں گے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ایک اہم اجلاس ہوا جس میں فیصلہ کیا گیا کہ ٹی ایل پی کو ایک عسکریت پسند تنظیم کے طور پر لیا جائے گا، ہم انہیں سیاسی جماعت نہیں سمجھیں گے۔وفاقی وزیر اطلاعات نے خبردار کیا کہ یو ٹیوب سمیت سوشل میڈیا پر جھوٹی خبریں پھیلانے والے اپنے رویے پر نظر ثانی کریں، ان میں کچھ لوگوں کا تعلق میڈیا سے ہے، ریاست جعلی خبریں پھیلانے والوں کو بالکل برداشت نہیں کرے گی،کالعد م ٹی ایل پی کو بھارت سے سوشل میڈیا کے ذریعے مدد فراہم کی جا رہی ہے،ٹی ایل پی کا سوشل میڈیا ونگ فیک نیوز پھیلا رہا ہے،فیک نیوز پھیلانے والے ہوش کے ناخن لیں ،اس سلسلہ میں پی ٹی اے کو واضح ہدایت کردی گئی ہے۔ وزیر اطلاعات نے مزید کہا کہ الیکشن کمیشن سے درخواست ہے کہ لاہور کا ضمنی الیکشن ای وی ایم کے ذریعے کرایا جائے،وفاقی کابینہ کو اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کاتقابلی جائزہ پیش کیا گیا،سندھ میں اشیائے ضروریہ کی قیمتیں دیگر صوبوں سے زیادہ ہیں ، سندھ حکومت اس حوالے سے معاملے کا جائزہ لے ،اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کے حوالے سے ہفتہ وار آگاہی دیتے رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ چھوٹے کاشتکاروں کو جدید فارمنگ کی طرف لایا جارہا ہے،حکومت چھوٹے کاشتکاروں کو مراعات فراہم کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ کابینہ اجلاس میں ہوابازی سے متعلقہ امور کا بھی جائزہ لیا گیا،سی ایس ایس امتحان میں حصہ لینے کیلئے سکریننگ ٹیسٹ رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، سکریننگ ٹیسٹ سے امتحانات کے حوالے سے ایف پی ایس سی کو آسانی ہوگی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*