تازہ ترین

تعلیم یا فتہ نو جو انوں کو روز گا ر کی فر اہمی اولین تر جیح

وزیر اعلیٰ بلوچستان جا م کمال خان کا گذشتہ رو ز ملا قا ت کر نے والے ایک وفد سے گفتگو کر تے ہوئے کہناتھا کہ تعلیم یا فتہ نو جوانوں کو رو ز گا ر کی فر اہمی اولین تر جیح ہے اس طر ح مشتہر شد ہ تما م محکمہ جا ت کی خالی آسامیوں پر ٹیسٹ وا نٹر و یو کا عمل مکمل کر کے ان پر تعیناتی عمل میں لائی جا ئے گی اور اس حوالے سے نوجوانوں کے تحفظا ت دو ر کئے جائیں گے انہوں نے خضدا ر سمیت بلوچستان کے بڑ ے شہر وں کو میٹر و پولیٹن کا درجہ دینے بھی با ت کی کیونکہ ایسا کرنے سے یقینا مسائل میں کمی اور شہر ی تر قی میں مد دملے گی اور بہت سے مسائل مقا می سطح پر حل کئے جائیں گے۔
یہ با ت حقیقت پر مبنی ہے کہ اس وقت بلوچستان میں نوجو انوں کی ایک تعد اد بیر و ز گا ر ہے جو اپنے ہاتھوں میں ڈگر یاںاٹھا ئے در در کی ٹھو کر یں کھا رہے ہیںان میں سے اکثر اوور ایج بھی ہوچکے ہیں لیکن ان کو نوکریاں نہیں مل رہیں وزیر اعلیٰ بلوچستان جا م کما ل خان کا مذکو رہ بیان میں تعلیم یا فتہ نو جو انوں کو رو ز گا ر کی فر اہمی کو اولین تر جیح قر ار دینا بلا شبہ قا بل تعر یف با ت ہے لیکن ان کے اس بیان کے تنا ظر میں اس با ت کا ذکر کرنا از حد ضروری ہے کہ صو بے میں ایک جا نب بے روز گا ری عر وج پر ہے جبکہ دوسر ے جا نب مختلف محکموں میں بھر تیو ں کے اشتہا ر شا ئع ہو تے ہیں اور جب امید وا ر وہاں در خو استیں دیتے ہیں جن میں اکثر پر پو سٹل ٹکٹ بھی لگا نے پڑ تے ہیں پھر ان پو سٹو ں پر ہونے والے انٹر و یو ز کو نا معلو م وجو ہا ت کی بنا ءپر ملتو ی کر دیا جا تا ہے اس سے جہاں امید وا رو ں کو بڑ ی مایوسی کا سا منا کرنا پڑ تا ہے جبکہ دوسری جا نب پو سٹل ٹکٹ کی مد میں ان کا مالی نقصان بھی ہو تا ہے جوکہ ان کے لیے تشو یش اور پر یشا نی کاسبب ہے۔
وزیر اعلیٰ بلوچستان جا م کما ل خان نے خضدار سمیت بلوچستان کے بڑ ے شہر وں کو میٹر وپو لیٹن کا درجہ دینے کی جو با ت کی ہے یہ تو بلا شبہ ان کا ایک اچھا اقد ام ہے کیونکہ بلد یا تی ادا رو ں کی تر قی وقت کی اہم ضرور ت ہے اس کو ہونا چا ہیئے یہ عو ام کے بنیا دی حقو ق میں آتا ہے عو ام کو یہ حقو ق حکومت کو دینے چاہئیں اس لیے حکومت کو چا ہیئے کہ وہ صو بے میں جلد از جلد بلد یا تی انتخابا ت کر وانے کے لیے اقد اما ت کر ے جوکہ کا فی عرصے سے التو اءکا شکا ر ہیں اس کے نہ ہونے سے عوام کو شد ید مشکلا ت کا سا منا کرنا پڑ رہا ہے کیونکہ علاقے کا کونسلر اپنے پو رے علا قے کے مسائل اور عوام سے وا قف ہو تا ہے جبکہ اس کے مقا بلے میں ایک ایم پی اے اور ایم این اے کو اپنے علا قے کے بہت بڑ ا ہو نے کی وجہ سے عو ام کے مسائل حل کر نے سے قا صر ہو تے ہیں اس کے سا تھ سا تھ ان سے ایک عا م آدمی کاملنا بھی بڑ ا مشکل ہو تا ہے اس لیے صو بے میں بلدیاتی انتخا با ت کا جلد از جلد ہونا بہت ضروری ہے تاکہ عو ام کو ان کا بنیا دی حق مل سکے جب تک ایسا نہیں کیا جا تا میٹر و پو لیٹن کا درجہ دینے سے کوئی فائد ہ نہیں ہو گا جب تک ان میں عوامی نما ئند ے نہ ہو نگے یہ صر ف ایک عما ر ت ہی ہو گی۔
امید ہے کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان جا م کما ل خان جہاں صوبے کے دیگر معا ملا ت کو درست کرنے کے لیے اقداما ت کر رہے ہیں وہاں وہ بلد یا تی انتخا با ت کروانے کے لیے اقد اما ت کر یں گے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*