تازہ ترین

ترقیاتی منصوبے بروقت مکمل ہونے سے صوبہ ترقی و خوشحالی کی جانب گامزن ہو گا، جام کمال

کوئٹہ(خ ن)وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی زیر صدارت رواں مالی سال 22-2021 کے نئے اور جاری ترقیاتی منصوبوں پر پیش رفت سے متعلق اعلی سطحی اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں صوبائی وزراءمیر عارف جان محمد حسنی، میر عمر خان جمالی، سردار عبدالرحمن کھیتران، انجنئیر زمرک خان اچکزئی، چیف سیکرٹری بلوچستان مطہر نیاز رانا، ایڈیشنل چیف سیکریٹری منصوبہ بندی و ترقیات حافظ عبدالباسط، وزیراعلی کے پرنسپل سیکرٹری اسفندیار خان، سیکرٹری خزانہ عبدالرحمن بزدار، سیکریٹری مواصلات زاہد سلیم، سیکرٹری بلڈنگ غلام علی بلوچ، ڈائریکٹر جنرل تعلقات عامہ شہزادہ فرحت احمد زئی اور چیف انجینئر محکمہ مواصلات ڈاکٹر سجاد بلوچ سمیت دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس کو ایڈیشنل چیف سیکرٹری محکمہ منصوبہ بندی و ترقیات نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ رواں مالی سال کے ترقیاتی پروگرام میں پی ڈی ڈبلیو پی کی 155 اور ڈی ایس سی کی 2131 ترقیاتی اسکیمات شامل ہیں جبکہ 1731 ترقیاتی اسکیمات کی متعلقہ فورمز سے منظوری لی گئی ہے۔انہوں نے اجلاس کو رواں مالی سال کی 184 ترجیحی ترقیاتی اسکیمات کے حوالے سے بھی بریف کیا۔سیکریٹری مواصلات زاہد سلیم نے اجلاس کو سیکٹر وائز بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ روڈ ڈیپارٹمنٹ کے 23 ترقیاتی منصوبے پی ڈی ڈبلیو پی اور ڈی ایس سی کے 513 منصوبوں سمیت کل 859 ترقیاتی اسکیمات ہیں جن میں 158 جاری اور 235 نئے ترقیاتی منصوبے شامل ہیں۔ انہوں نے منصوبوں کی اتھارائزیشن، ٹینڈرز کے اجراءاور رواں مالی سال میں مکمل ہونے والے ترقیاتی منصوبوں سے متعلق بھی اجلاس کو بریف کیا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلی نے ہدایت کی کہ منصوبوں کی منظوری کے لیے پی ڈبلیو ڈی پی اور ڈی ایس سی کے پراسیس کو تیز کیا جائے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ ترقیاتی منصوبوں پر کام کرنے والے ٹھیکیداروں کی کارکردگی کو جانچنے کے لئے محکمہ بلڈنگ اور روڈ پرفارمنس ایویلویشن کے تحت ایک مربوط حکمت عملی کو اپنائیں۔ انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبے بروقت مکمل ہونگے تو صوبہ ترقی و خوشحالی کی جانب گامزن ہوگا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*