تازہ ترین

ترش و شیریں آلو بخارا

گلاب کی فیملی سے تعلق رکھنے والا یہ پھل گرمیوں میں آتا ہے جو یقینا اس موسم کی شدت کو زائل کرتا ہے اور وٹامن C سے بھر پور بھی ہے، ابتداءمیں سرخی مائل پھل آتا ہے جو ترش ہوتا ہے مگر گلے میں ورم نہیں کرتا۔یہ بھی تقویت کا باعث ہوتا ہے تاہم جب پختہ ہو کر سیاہی مائل ہو جائے تو بے حد شیریں ہو جاتاہے۔
آلو بخارے کے پودے کشمیر،ہمالیہ،پاکستان،افغانستان اور ایران ہیں جو پھل دیتے ہیں جبکہ اس کا اصل مسکن دمشق ہے۔
طبیعت میں نرمی اور سکون پیدا کرنے والا یہ پھل آنکھوں کی بینائی کے لئے بھی اچھا ہے۔عام طور پر کھٹے پھلوں کے لئے کہا جاتا ہے کہ نزلے زکام میں مضر ہوتے ہیں۔ماہرین غذائیت اس خیال کو رد کرتے ہیں،ان کے خیال میں تمام پھل اینٹی آکسیڈنٹ،اینٹی وائرل اور وٹامنز کے ساتھ ساتھ معدنیات پر مشتمل ہوتے ہیں لہٰذا نزلے،زکام میں نقصان کے بجائے مفید ہوتے ہیں اور فائدہ پہنچاتے ہیں۔
فولک ایسڈ اور کیلشیئم۔نئی ماو¿ں اور رضاعت کے درد میں خواتین کو اس کے اجزاءپر مشتمل غذاو¿ں کا استعمال کرنا چاہئے۔یہ ہڈیوں اور قوت مدافعت کے لئے بہترین پھل ہے۔
جلد کی شگفتگی کے لئے۔رنگت میں نکھار کے لئے اسے کھائیں بھی اور چھلکے کے اطراف موجود گودے سے چہرے پر لیپ بھی کرلیں۔سن برنSunburn (دھوپ سے جھلسنے) میں جلد کو اصلی حالت میں واپس لاتا ہے۔
داغ دھبوں میں نجات ملتی ہے۔
بالوں کے مسائل کے لئے۔بالوں کا رنگ خراب ہونے لگے۔گرنے لگیں یا پتلے ہو جائیں تو آلو بخارا روزانہ غذا کا حصہ بنا لیں،بالوں کے لئے یہ مجرب نسخہ ہے جو پورے سیزن میں آزمایا جا سکتا ہے۔مہمانوں کی تواضع کے لئے گھر میں آلو بخارے کا شربت بنایا جا سکتا ہے جو تازہ اور مقوی ہوتا ہے اور ظاہر ہے کہ اس میں کیمیائی اجزاءبھی نہیں ہوتے۔
آپ چاہیں تو اسے دو چار سے زائد دنوں کے لئے آئس کیوبز کی ٹرے میں محفوظ بھی کر سکتی ہیں۔بے شک آلو بخاروں کی افادیت اور بریانی کے ذائقے کو در آتشتہ کرتے تو آپ نے دیکھا ہی ہو گا کچھ متعدد بار بریانی کے اجزاء میں کھڑے مصالحوں کا انتخاب کیا ہو گا وہیں آپ آلو بخارے لینابھی نہیں بھولتی ہوں گی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*