تازہ ترین

بلوچستان سمیت پورے ملک میں ہیپا ٹا ئٹس کی سنگین صو ر تحال

گذشتہ رو ز سنٹر ل جیل کوئٹہ میں پا رلیما نی سیکر ٹر ی صحت ڈاکٹر ربا بہ خا ن بلید ی نے صو بے کے تما م جیلو ں کے افسران سٹا ف اور قید یو ں کو ہیپا ٹا ئٹس سے بچا ؤ کی ویکسین کا آغاز کر دیا اس مو قع پر تقر یب سے خطا ب کر تے ہوئے انہوں نے انکشا ف کیا کہ بلوچستان سمیت پو رے ملک میں ہیپا ٹا ئٹس سنگین صو ر ت اختیا ر کر چکا ہے وزیراعلیٰ بلوچستان ہیپا ٹا ئٹس کنٹر ول پر و گر ام صو بے میں انسد اد یر قا ن کے لیے فعا ل کر دا ر ادا کر رہا ہے اور دستیا ب وسائل میں رہتے ہو ئے اس پر وگرام کو بتد ریج وسعت دی جا رہی ہے پاکستان کا شما ر ہیپا ٹا ئٹس سے متا ثر ہ مما لک کی فہر ست میں پہلے نمبر پر ہے جو ایک تشو یشنا ک با ت ہے۔
بلوچستان سمیت پورے ملک میں ہیپا ٹا ئٹس کی سنگین صورتحال اور پاکستان کا شما ر ہیپا ٹا ئٹس سے متاثر ہ ممالک کی سہر ست میں پہلے نمبر پر آنا بلا شبہ قا بل تشو یش با ت ہے کیونکہ ہیپا ٹا ئٹس ایک خطرنا ک بیما ری ہے جو انسان کو اندر اند ر سے دیمک کی طر ح چا ٹ کر ختم کر دیتی ہے بلکہ اس کو خا مو ش قا تل کانام بھی دیا جا تا ہے اس خطرنا ک بیماری کی ایک وجہ گند ے پانی کا استعمال ہے جو آہستہ آہستہ جگر کو ختم کر دیتی ہے اور جس کے نتیجے میں انسا ن کی مو ت وا قع ہو جا تی ہے صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ سمیت بلوچستان کے اکثر علا قو ں میں یہ بیما ری زیا دہ پھیلی ہو ئی ہے افسو س نا ک با ت یہ ہے کہ صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ میں اکثر سبز ی گند ے پانی سے اگائی جاتی ہے اس سلسلے میں بلوچستان ہائی کو ر ٹ کا وا ضح حکم بھی مو جو د ہے جس میں اس پر پا بند ی لگائی گئی ہے لیکن حکومت اور انتظامیہ اس کا شت کو مکمل طو ر پر روک نہیں سکیں جن کے استعما ل سے ہیپاٹائٹس جیسی خطر نا ک بیما ری پید ا ہو تی ہے اس کے سا تھ سا تھ صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ میں اس بیما ری کے علا ج کے لیے صر ف بی ایم سی ہسپتا ل میں وا ر ڈ قا ئم ہے جبکہ سول ہسپتا ل میں اس کا وا ر ڈ نہیں ہے جس کی وجہ سے عو ام کو اس کے علا ج معا لجے میں بھی مشکلا ت کا سا منا کرنا پڑ تا ہے اس بیما ری کا علا ج مہنگا بھی ہے خا ص طو ر پر جب یہ بیما ری انتہا کوپہنچتی ہے تو پھر مر یض کو اس کا آخر ی حل لیو رکی تبدیلی بتایا جا تاہے جو کہ ایک عا م آدمی کے لیے نا ممکن ہے کیونکہ یہ بہت ہی مہنگا ہے اس طرح وہ مر یض سسک سسک کر مر جا تا ہے اس میں کوئی شک نہیں کہ صو بائی حکومت نے ان جیسی بیما ریوں کے علا ج کے لیے ایک فنڈ کا اجر اء کیا ہو ا ہے جس سے کچھ لو گ فا ئد ہ حا صل کر تے ہیں جبکہ بہت سے اس سے محر وم رہ جا تے ہیں۔
اس لیے یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ اس خطر نا ک مرض کی رو ک تھام کے لیے حکومت کومز ید اقد ا ما ت کرنے چاہئیں جیسا کہ پا ر لیما نی سیکر ٹر ی صحت ڈاکٹر ربابہ خان بلید ی نے اپنے مذکو رہ بیان میں وزیر اعلیٰ بلوچستان ہیپا ٹا ئٹس کنٹر ول پر و گر ام کو وسعت دینے کی بات کی تو اس اہم معا ملے میں تا خیر نہیں کرنی چا ہیئے بلکہ اس میں تیز یلا تے ہوئے اس خطر نا ک مر ض سے چھٹکا را حاصل کر نا چاہیئے جہاں تک لیو ر کی تبدیلی کا تعلق ہے تو اس سلسلے میں بھی حکومت کو ایسے اقد اما ت کرنے چاہئیں جس سے ایک عا م آدمی بھی فا ئد ہ اٹھا سکے۔
امید ہے کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان جا م کما ل خان کی صد ار ت میں قائم صوبائی حکومت اس اہم مسئلے کے حل کے لیے احسن اقد اما ت کر یں گے کیونکہ صو بے کی عو ام اس سلسلے میں ان سے آس لگا ئے بیٹھے ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*