تازہ ترین

ایف پی سی سی آئی کی5ماہ کی بدترین کارکردگی پریو بی جی ممبران کا عدم اطمینان

کراچی (کامرس ڈیسک)وفاق ایوانہائے صنعت وتجارت(ایف پی سی سی آئی) 2021 کی ایگزیکٹو کمیٹی میں یو بی جی کے ممبران نے رواں سال کی گزشتہ پانچ ماہ میں ایف پی سی سی آئی کی بدترین کارکردگی اور سرگرمیوں پر عدم اطمینان اور برہمی کا اظہار کیا ہے۔یو بی جی اراکین نے فیڈریشن کی سرگرمیوں کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ ایف پی سی سی آئی جو پورے پاکستان میں تمام تجارتی اداروں کی نمائندگی کرنے والے نجی شعبے کا ایک اعلیٰ ادارہ ہے لیکن یہ ادارہ رواں سال کے ابتدائی ماہ جنوری سے اب تک فیڈریشن کی باقاعدہ اور سالانہ سرگرمیاں انجام دینے اور منظم کرنے میں ناکام رہا ہے۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ ایف پی سی سی آئی ایکسپورٹ ایوارڈز اور اچیومنٹ ایوارڈز کی تقاریب گذشتہ دو سالوں سے زیر التواءہیں جس سے برآمد کنندگان اور تاجر برادری میں بہت مایوسی پائی جاتی ہے حالانکہ بزنس کمیونٹی بالخصوص ایکسپورٹرز نے وبائی امراض کرونا کی موجودگی میں سخت جدوجہد کی تھی اورفیڈریشن کی جانب سے ان کی کوششوں کو تسلیم کرنے اور ان کی حوصلہ افزائی کرنے کی ضرورت ہے لیکن ایف پی سی سی آئی میں موجود افرادایکسپورٹرز کی جدوجہد کی حوصلہ افزائی میں ناکام رہے ہیں۔ یو بی جی ممبران نے ایف پی سی سی آئی میں خاص طور پر مختلف موضوعات پر اسپیشل اسٹینڈنگ کمیٹیوں کے کوآرڈینیٹرز کی تقرریوں میں اقرباءپروری اور حمایت پسندی کی ثقافت پر بھی کڑی تنقید کی اور کہا کہ ایف پی سی سی آئی میں غیر قانونی طور پر موجودعہدیداران نے مختلف ممالک کے ساتھ بزنس کونسلوں، علاقائی اور کنفیڈریشن چیمبروں کے ساتھ ایف پی سی سی کی وابستگی کو بھی تباہ کردیا ہے جبکہ ایف پی سی سی آئی نے آئی سی سی آئی اے ، سی اے سی سی آئی ، ایس بی سی وغیرہ میں عہدیداروں کی نشست حاصل کرنے کا موقع گنوا دیاگیا ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*