تازہ ترین

امریکا اپنی افواج کی سلامتی کےلئے معاہدہ کرے وگرنہ نتائج بہتر نہ ہونگے،طالبان

دوحہ(م ڈ)افغان طالبان کا کہنا ہے اگر امریکا چاہتا ہے کہ ان کے فوجیوں پر حملے نہ ہوں تو وہ ہم سے معاہدہ کر لے۔امریکا اور افغان طالبان کے درمیان 18 سالہ طویل جنگ کے خاتمے کے لیے گزشتہ برس اکتوبر میں مذاکرات شروع ہوئے تھے اور رواں ماہ تک دونوں فریقین کے درمیان مذاکرات کے 9 دور ہوئے۔تاہم چند روز قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کابل میں ایک امریکی فوجی کی ہلاکت کو وجہ بنا کر طالبان سے کئی ماہ سے چلنے والے مذاکرات ختم کر دیئے تھے۔ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ طالبان لوگوں کو قتل کر کے اپنے آپ کو معاہدے کی بہتر پوزیشن میں لانا چاہتے ہیں، جہاں تک میرا تعلق ہے تو طالبان کے ساتھ معاہدہ ختم ہو چکا ہے۔بین الاقوامی ذرائع ابلاغ کے مطابق طالبان نے امریکی صدر کے فیصلے پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ معاہدے کی منسوخی سے امریکا کو ہی زیادہ نقصان ہو گا۔دوحا میں طالبان دفتر کے ترجمان سہیل شاہین نے الجزیرہ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ یہ ہمارے لیے بہت حیران کن تھا ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*