تازہ ترین

افو اج پاکستان اور سیکیو رٹی ادا رو ں پر فخر

صد ر مملکت ڈا کٹر عار ف علو ی کا گذشتہ رو ز پا رلیمنٹ کے مشتر کہ اجلا س سے خطا ب کے دوران کہناتھا کہ گذشتہ دہائیوں سے جا ری دہشت گر دی کیخلا ف جنگ میںپاکستانی قو م نے 150 ار ب ڈالر اور 80 ہزار سے زائد جا نوں کا بھاری نقصان بر دا شت کیا مگر اپنے عزم سے متنز ل نہیں ہوئی افو اج پاکستان اور سیکیو رٹی ادا روں پر فخر ہے ہندوستان اور ملک دشمن عنا صر سی پیک سی کو سبو تا ژ کر نے کے درپے ہیں کر پشن اور ما ضی کی غلط تر جیحا ت کی وجہ سے ہم تر قی سے محروم رہے کورونا وائر س کے مثبت اثرات کے سبب دنیا کی معیشت سکڑ ی البتہ پاکستا ن کی معا شی کا ر کر د گی بہت بہتر رہی ملک صنعتی انقلا ب سے گز ر رہا ہے جسے شو ر شر ابے سے نہیں روکا جا سکتا زرعی شعبے میں مزید بہتر ی کی ضرورت ہے بہت جلد پو ری آبا دی کو صحت سہو لت پر و گر ام میں شامل کر لیا جائے گا۔
اس میں کوئی شک نہیں کہ پاکستان نے دہشت گر دی کیخلاف جنگ میں بہت زیا دہ جانی و ما لی نقصا نا ت اٹھا ئے ہیں پاکستان دہشت گر دی کے خلا ف فرنٹ لائن پر رہا لیکن افسو س کی با ت ہے کہ اتحا دی مما لک نے اس کی ان قر با نیوں کو فر امو ش کر دیا اور اس پر ہی متعد د با ر ڈرو ن حملے کر تا رہا اب وزیر اعظم عمر ان خان نے ایک جر ات مندانہ فیصلہ کر تے ہوئے امریکہ کو اڈ ے دینے سے انکا ر کر تے ہوئے وا ضح کیا کہ اب پاکستان پہلے کی طر ح دہشت گر دی کا شکا ر ہونے کا متحمل نہیں ہوسکتا جہاں تک افو اج پاکستان اور سیکیو رٹی ادارو ں پر فخر ہونے کی با ت ہے تو یہ حقیقت ہے کہ افو اج پاکستان اور سیکیو رٹی ادا رو ں نے ملک سے دہشت گر دی کے خا تمے کے لیے اپنی جانوں کی قر با نیوں دے کر دہشت گر دو ں پر یہ وا ضح کر دیا ہے کہ وہ اپنے ان مذمو م مقا صد میں کبھی کا میا ب نہیں ہوں گے اور ان کا جلد مکمل صفا یا ہو جا ئے گا اور ملک میں ایک با ر پھر امن قائم ہو گا ملک دشمن عنا صر کو سی پیک کا منصوبہ ہضم نہیں ہو رہا اس لیے وہ تخر یبی کا رو ائیاں کر رہا ہے مگر وہ اس میں بر ی طر ح ناکام ہو گا کیونکہ پاکستان کی سیکیو رٹی فو رسز اور عو ام دہشت گر دی کیخلا ف جنگ میں ایک پیج پر ہیں۔
اگر ما ضی کی غلط تر جیحا ت کی وجہ سے ہم تر قی سے محر وم رہے ہیں تو اب مو جو دہ حکومت کو ا س کا مداوا کرنے کے اقد اما ت کرنے چاہئیں اس سلسلے میں صر ف بیا نا ت دینے سے معاملہ حل نہیں ہو گا اگر ما ضی کی حکومت نے غلط ترجیحات کیں تو مو جو دہ حکومت کو اس سلسلے میں عملی طو ر پر اقد امات کر نے چاہئیں اگر وہ ایسا نہیں کرسکتی تو پھر اس میں اور سا بقہ حکومتو ں میں کیا فر ق رہ جا ئے گا اس لیے مو جو دہ حکومت کو بیانا ت کی حد سے نکل کر عملی طو ر پر کام کرنا چاہیئے کو روناوائرس کے مثبت اثر ات کے سبب دنیا کی معیشت سکڑ نے اور اس کے مقا بلے میں پاکستان کی معاشی کا رکر د گی کا بہتر ہونا بلا شبہ حکومت کی جانب سے اس سلسلے میں اقد اما ت اور عو ام کامکمل تعا ون رہا اور اس طرح ملک میں کو رونا کیسز کی تعد اد اور امو ات دنیا کے دیگر ممالک کے مقا بلے کم رہیں حکومت کا یہ اقد ام قا بل تعریف ہے زرعی شعبے کی مز ید بہتر ی ہونا نا گز یر ہے کیونکہ ملک کے 80 فیصد عو ام کا ذر یعہ معا ش زر اعت سے منسلک ہے اس لیے حکومت کو زمیند ارو ں کے مسائل حل کر نے کے لیے اقد اما ت کرنے چاہئیں اور اس کےساتھ ساتھ عو ام کو صحت کی سہولتو ں کی فر اہمی کو یقینی بنانا چا ہیئے کیونکہ عو ام کو علا ج ومعالجے کی سہو لتیں فراہم کرنا ریا ست کی ذمہ دا ری ہو تی ہے جو اسے ہر صو ر ت میں نبھا نی چا ہیئے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*